உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    Maharashtra Political Crisis: آدتیہ ٹھاکرے کا دعوی، ادھو ٹھاکرے نے ایکناتھ سے پوچھا تھا کہ کیا وہ وزیر اعلی بننا چاہتے ہیں

    Maharashtra Political Crisis: آدتیہ ٹھاکرے کا دعوی، ادھو ٹھاکرے نے ایکناتھ سے پوچھا کہ کیا وہ وزیر اعلی بننا چاہتے ہیں

    Maharashtra Political Crisis: آدتیہ ٹھاکرے کا دعوی، ادھو ٹھاکرے نے ایکناتھ سے پوچھا کہ کیا وہ وزیر اعلی بننا چاہتے ہیں

    Maharashtra Political Crisis : مہاراشٹر سرکار میں شیوسینا کے وزیر آدتیہ ٹھاکرے نے اتوار کے روز دعویٰ کیا کہ وزیر اعلیٰ ادھو ٹھاکرے نے گزشتہ ماہ پارٹی لیڈر ایکناتھ شندے سے پوچھا تھا کہ کیا وہ وزیر اعلیٰ بننا چاہتے ہیں۔ حالانکہ شندے نے اس وقت اس معاملہ کو ٹال دیا تھا۔

    • Share this:
      ممبئی : مہاراشٹر سرکار میں شیوسینا کے وزیر آدتیہ ٹھاکرے نے اتوار کے روز دعویٰ کیا کہ وزیر اعلیٰ ادھو ٹھاکرے نے گزشتہ ماہ پارٹی لیڈر ایکناتھ شندے سے پوچھا تھا کہ کیا وہ وزیر اعلیٰ بننا چاہتے ہیں۔ حالانکہ شندے نے اس وقت اس معاملہ کو ٹال دیا تھا۔ پارٹی سربراہ اور وزیر اعلیٰ ادھو ٹھاکرے کے بیٹے آدتیہ نے شیوسینا کارکنوں سے خطاب کرتے ہوئے یہ بات کہی ۔ شندے نے گزشتہ ہفتہ پارٹی کے خلاف بغاوت کر دی تھی۔ شیوسینا کے زیادہ تر ایم ایل ایز ان کے ساتھ ہیں اور سبھی آسام کے گوہاٹی میں ایک ہوٹل میں ٹھہرے ہوئے ہیں۔

       

      یہ بھی پڑھئے: سپریم کورٹ پہنچا Shiv Sena کا تنازع، ایکناتھ شندے نے ڈپٹی اسپیکر کے اس فیصلہ کو کیا چیلنج


      ایکناتھ شندے کے اس اقدام سے مہاراشٹر میں شیوسینا کی قیادت والی مہا وکاس اگھاڑی حکومت پر بحران کے بادل منڈلا رہے ہیں۔ ایم وی اے میں کانگریس اور نیشنلسٹ کانگریس پارٹی بھی شامل ہیں۔ آدتیہ نے شندے کی بغاوت کا حوالہ دیتے ہوئے کہا کہ 20 مئی کو وزیر اعلی ادھو ٹھاکرے نے ایکناتھ شندے کو 'ورشا' بلایا تھا اور پوچھا تھا کہ کیا وہ وزیر اعلی بننا چاہتے ہیں۔ حالانکہ پھر انہوں نے اس معاملہ کو ٹال دیا تھا۔ لیکن ایک ماہ بعد 20 جون کو جو ہونا تھا وہ ہو گیا۔

       

      یہ بھی پڑھئے: کیا باغی ممبران اسمبلی کی ختم ہوگی رکنیت؟ شیوسینا کے وکیل نے دی یہ وارننگ


      ورلی کے ایم ایل اے نے کہا کہ انہیں سورت اور گوہاٹی بھاگنے کی بجائے سامنے سے عہدے کا مطالبہ کرنا چاہئے تھا۔ دریں اثنا اتوار کو شیو سینا کے ترجمان 'سامنا' میں شائع ہونے والے اپنے ہفتہ وار کالم میں پارٹی کے ممبر پارلیمنٹ سنجے راوت نے کہا کہ اگر شندے شیو سینا میں رہتے تو ان کے پاس ریاست کا وزیر اعلیٰ بننے کا اچھا موقع تھا۔

      راوت نے کہا کہ اگر بی جے پی وزیر اعلیٰ کے عہدہ کے اپنے وعدے سے پیچھے نہیں ہٹتی تو شندے وزیر اعلیٰ ہوتے۔ حیرت کی بات یہ ہے کہ شنڈے بی جے پی میں جانا چاہتے ہیں۔
      Published by:Imtiyaz Saqibe
      First published: