ہوم » نیوز » مغربی ہندوستان

کھلے عام دو خواتین کر رہی تھیں یہ بھیانک کام، تبھی پولیس کی نظر پڑی اور پھر۔۔۔

عالمی ادارہ صحت (WHO) نے بھی ڈپریشن کو ایک مینٹل ڈس آرڈر مانا ہے۔ ڈبلیو ایچ او کے اعداد و شمار بتاتے ہیں کہ دنیا بھر میں 26 کروڑ سے زیادہ لوگ ڈپریشن سے جوجھ رہے ہیں۔ وہیں مردوں کے مقابلے خواتین ڈپریشن سے زیادہ متاثرہ ہوتی ہیں۔

  • Share this:
کھلے عام دو خواتین کر رہی تھیں یہ بھیانک کام، تبھی پولیس کی نظر پڑی اور پھر۔۔۔
۔ ڈبلیو ایچ او (WHO) یہ بھی دعوی کرتا ہے کہ ڈپریشن آپ کو خودکشی کی طرف لے جاسکتا ہے۔

مہاراشٹر (Mahrashtra) میں پولیس نے دو مقامات پر خودکشی  (Suicide) کرنے کی کوشش کر رہی دو خواتین کو بچایا۔ افسروں نے بدھ کو بتایا کہ دونوں واقعات منگل کے ہیں اور دونوں خواتین گھریلو تنازعہ یا کسی دیگر وجوہات سے ڈپریشن (Depression)  میں تھیں۔ ٹیٹوالا  پولیس اسٹیشن کے ایک  اسسٹنٹ پولیس انسپکٹر نے بتایا کہ وہ رائتا برج سے گزر رہے تھے تبھی انہوں نے ایک خاتون کو وہاں دیکھا۔


پولیس افسر نے بتایا کی جیسے ہی خاتون ندی میں کودی، اس کی ساڑھی پل کے ایک کھمبے کی چھڑ میں اٹک گئی۔ وہ اپنی ساڑی کھینچنے کی کوشش کرنے لگی تبھی پولیس نے وہاں پہنچ کر اسے بچا لیا۔ انہوں نے بتایا کہ خاتون نے بعد میں پولیس کو بتایا کہ وہ زندگی سے پریشان ہو گئی ہے اوراس لئے خودکشی کرنا چاہتی ہے۔


اس درمیان، میرا بھیندر وسئی ورر (ایم بی وی وی ) پولیس کانسٹیبل نے ایک پریس کانفرنس میں بتایا کہ 45  سالہ خاتون منگل کی دوپہر پل میں ورسرووا کھاڑی میں کود گئی تھی۔ ایم بی وی وی کے ایک کانسٹیبل نے دیکھا اور کھاڑی میں کود کر اسے پانی سے محفوظ باہر نکال لیا۔ پولیس نے بتایا کہ خاتون نے گھریلو تنازعہ سے عاجز ہوکر یہ قدم اٹھایا۔




عالمی ادارہ صحت (WHO) نے بھی ڈپریشن کو ایک مینٹل ڈس آرڈر مانا ہے۔ ڈبلیو ایچ او کے اعداد و شمار بتاتے ہیں کہ دنیا بھر میں 26  کروڑ سے زیادہ لوگ ڈپریشن سے جوجھ رہے ہیں۔ وہیں مردوں کے مقابلے خواتین ڈپریشن سے زیادہ متاثرہ ہوتی ہیں۔ ڈبلیو ایچ او (WHO) یہ بھی دعوی کرتا ہے کہ ڈپریشن آپ کو خودکشی کی طرف لے جاسکتا ہے۔ حالانکہ اس کا علاج موجود ہے۔ خاص بات یہ ہے کہ گزشتہ سال سشانت سنگھ راجپوت (Sushant Singh Rajput)، آصف بسرا سمیت کئی بڑی ہستیوں نے ڈپریشن کے چلتے خودکشی کر لی تھی۔

 

 
Published by: Sana Naeem
First published: Jan 20, 2021 06:21 PM IST