ہوم » نیوز » مغربی ہندوستان

کابینہ توسیع پر پنکجا کے ٹویٹ سے بی جے پی میں کھلبلی ، فڑنویس کو دینی پڑی صفائی

ممبئی : مہاراشٹر کابینہ میں توسیع میں ردوبدل کے بعد ہنگامہ شروع ہو گیا ہے ۔ ریاست کے دو سب سے طاقتور وزرا پنکجا منڈے اور ونود تاوڑے سے ان کے ایک ایک وزارت چھین لی گئی ہیں ۔

  • Pradesh18
  • Last Updated: Jul 10, 2016 10:14 AM IST
  • Share this:
  • author image
    NEWS18-Urdu
کابینہ توسیع پر پنکجا کے ٹویٹ سے بی جے پی میں کھلبلی ، فڑنویس کو دینی پڑی صفائی
ممبئی : مہاراشٹر کابینہ میں توسیع میں ردوبدل کے بعد ہنگامہ شروع ہو گیا ہے ۔ ریاست کے دو سب سے طاقتور وزرا پنکجا منڈے اور ونود تاوڑے سے ان کے ایک ایک وزارت چھین لی گئی ہیں ۔

ممبئی : مہاراشٹر کابینہ میں توسیع میں ردوبدل کے بعد ہنگامہ شروع ہو گیا ہے ۔ ریاست کے دو سب سے طاقتور وزرا  پنکجا منڈے اور ونود تاوڑے سے ان کے ایک ایک وزارت چھین لی گئی ہیں ۔  فرضی ڈگری تنازع  میں گھرے ونود تاوڈے سے صحت اور تعلیم کی وزارت تو چكی گھوٹالہ میں پھنسی پنکجا منڈے سے آبی وسائل کی وزارت لے لی گئی ہے ۔  جیسے ہی اس ردوبدل کی خبر آئی ، سب سے پہلے ناراضگی کا اظہار پنکجا منڈے نے کیا ۔


پنکجا منڈے نے ٹویٹ کیا کہ سنگاپور میں ہو رہی ورلڈ واٹر لیڈر سمٹ میں مجھے حصہ لینا تھا ، لیکن چونکہ مجھ سے وزارت چھین لی گئی ہے ، اس لئے اب میں اس سمٹ میں حصہ نہیں لے رہی ہوں ۔


سوشل میڈیا پر پنکجا منڈے طرف سے اس طرح ناراضگی کا اظہار کئے جانے  سے بی جے پی میں کھلبلی مچ گئی ۔ آنا فانا میں خود وزیر اعلی فڑنویس کو دفاع اترنا پڑا اور انہیں صفائی دینی پڑی ۔


وزیر اعلی فڑنویس نے پنکجا کے ٹویٹ پر جواب دیتے ہوئے لکھا کہ سینئر رہنما ہونے کے ناطے مہاراشٹر حکومت کے نمائندے کے طور پر آپ کو ورلڈ واٹر لیڈر سمٹ میں حصہ لینا چاہئے ۔ فڑنویس کے ٹویٹ  پر پنکجا کا اب تک کسی طرح کا جواب نہیں آیا ہے اور نہ ہی اب تک یہ صاف ہو پایا ہے کہ پنکجا سمٹ میں حصہ لے رہی ہے یا نہیں ۔  پنکجا کے ٹویٹ کے بعد یہ قیاس آرائی کی جا رہی ہے  کہ شاید کابینہ ردوبدل کے وقت متعلقہ وزراء کو اس کی اطلاع نہیں دی گئی تھی ۔
First published: Jul 10, 2016 10:14 AM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading