ہوم » نیوز » مغربی ہندوستان

احسان جعفری کی بیٹی نشرین نے فیس بک پرشتروگھن سنہا کے نام لکھا خط ، موب لنچنگ کے خلاف آواز اٹھانے کا مطالبہ

سابق ممبر پارلیمنٹ احسان جعفری کی صاحبزادی نشرین نے بی جے پی کے سینئر لیڈر شتروگھن سنہا کے نام فیس بک پر خط لکھ کر ان سے ہجومی تشدد کے خلاف آواز اٹھانے کی مانگ کی ہے۔

  • Share this:
احسان جعفری کی بیٹی نشرین نے فیس بک پرشتروگھن سنہا کے نام لکھا خط ، موب لنچنگ کے خلاف آواز اٹھانے کا مطالبہ
فوٹو شیرین کے فیس بک پیج سے لی گئی ہے ۔

احمد آباد : سابق ممبر پارلیمنٹ احسان جعفری کی صاحبزادی نشرین نے بی جے پی کے سینئر لیڈر شتروگھن سنہا کے نام فیس بک پر خط لکھ کر ان سے ہجومی تشدد کے خلاف آواز اٹھانے کی مانگ کی ہے۔ فیس بک پر انہوں نے لکھا کہ جب میرے والد کو دن کے اجالے میں بے دردی سے مار دیا گیا تھا ، تب میں نے سوچا کہ میرا ملک کبھی بھی کسی کے ساتھ ایسا نہیں ہونے دے گا۔ میرے لئے یہ سب سے مشکل بات تھی اور اس سے ابھرنے کیلئے میں نے کافی جدوجہد کی کیونکہ مجھے آگے بڑھناتھا ۔میرے دماغ میں سوتے جاگتے کام کرتے ہوہی لنچنگ کا واقعہ گھومتا رہتا تھا، کس طرح ان کو لنچ کیا گیا ۔ وہ واقعہ آج بھی میرے دماغ میں چلتا رہتا ہے۔

احسان جعفری کی بیٹی نے اپنے فیس بک پیج پر سنہا کے نام خط میں مزید لکھا کہ میں نے اپنے والد کو مرتے ہوئے نہیں دیکھا تھا ، لیکن مجھے ان کی کہانیاں لوگوں نے بتائی کہ یہ سب کیسے ہوا تھا ۔لوگوں نے بتایا کہ کس طرح ہجوم نے انہیں گھر سے نکالا اور بے رحمی سے میرے گھر والوں کے سامنے ہی ان کے ٹکڑے ٹکڑے کر دئے ۔

نشرین نے آگے لکھا کہ آئے دن خونی بھیڑ کے ویڈیو سامنے آرہے ہیں ، جس میں ہندوستان کا ایک طبقہ ، بے بس لوگوں کو جس میں بوڑھے اور نوجوان سب شامل ہیں ، انہیں وحشیانہ طور پر دن کے اجالے میں مار رہا ہے اور اس سے بھی خوفناک یہ ہے کہ کچھ معروف لوگ اس بھیڑ کی لوگوں کے قتل کے لئے حوصلہ افزائی کر رہے ہیں ۔ان کے سامنے یا تو پولیس بے بس ہے یا پھر کچھ کرنا نہیں چاہتی۔

انہوں نے خط میں لکھا کہ سنہا صاحب مجھے لگتا ہے کہ ایک باپ ہونے کے ناطے آپ اس طرح میرے والد کو کھونے کے میرے جذبات کو سمجھیں گے اور ایک انسان ہونے کے ناطے ان بے بس لوگوں کے جذبات کو سمجھیں گے جو اس طرح سے اپنے خاندان کے رکن کو کھو رہے ہیں اور ایسے معاملہ کو پورا ملک خاموشی سے دیکھ رہا ہے۔ اسی لئے کہا جا سکتا ہے کہ ملک میں ان دنوں قانون وانتظام خستہ حال نظر آرہا ہے۔

احسان جعفری کی صاحبزادی نے شتروگھن سنہا سے ایسے واقعہ کی سرکاری طور پر مذمت کرنے اور اس سلسلہ میں ایک کمیٹی بھی بنانے کی درخواست کی ہے اور کہا ہے کہ اس طرح کے واقعات کو روکنے کیلئے ملک کی اعلیٰ قیادت کو متحد کریں۔

First published: Jul 24, 2018 08:39 PM IST