ہوم » نیوز » مغربی ہندوستان

ریزرویشن سے متعلق موہن بھاگوت کے بیان پر پھر پھنسی بی جے پی ، اپوزیشن کا تیکھا حملہ جاری

ناگپور : ریزرویشن سے متعلق آر ایس ایس سربراہ موہن بھاگوت کے دئے گئے بیان پر ایک مرتبہ پھر بی جے پی تنازع میں پھنس گئی ہے۔ بہار اسمبلی انتخابات میں بھاگوت کے بیان کی وجہ سے بڑا نقصان اٹھا چکی بی جےپی اور مودی سرکار پر ایک مرتبہ پھر کانگریس سمیت تمام اپوزیشن پارٹیوں نے سوالات اٹھانےشروع کردئے ہیں۔خیال رہے کہ کہ موہن بھاگوت نے کہا تھا کہ ریزرویشن کا جائزہ لینے کے لئے غیر سیاسی کمیٹی تشکیل دی جائے۔

  • Pradesh18
  • Last Updated: Feb 23, 2016 06:54 PM IST
  • Share this:
  • author image
    NEWS18-Urdu
ریزرویشن سے متعلق موہن بھاگوت کے بیان پر پھر پھنسی بی جے پی ، اپوزیشن کا تیکھا حملہ جاری
ناگپور : ریزرویشن سے متعلق آر ایس ایس سربراہ موہن بھاگوت کے دئے گئے بیان پر ایک مرتبہ پھر بی جے پی تنازع میں پھنس گئی ہے۔ بہار اسمبلی انتخابات میں بھاگوت کے بیان کی وجہ سے بڑا نقصان اٹھا چکی بی جےپی اور مودی سرکار پر ایک مرتبہ پھر کانگریس سمیت تمام اپوزیشن پارٹیوں نے سوالات اٹھانےشروع کردئے ہیں۔خیال رہے کہ کہ موہن بھاگوت نے کہا تھا کہ ریزرویشن کا جائزہ لینے کے لئے غیر سیاسی کمیٹی تشکیل دی جائے۔

ناگپور : ریزرویشن سے متعلق آر ایس ایس سربراہ موہن بھاگوت کے دئے گئے بیان پر ایک مرتبہ پھر بی جے پی تنازع میں پھنس گئی ہے۔ بہار اسمبلی انتخابات میں بھاگوت کے بیان کی وجہ سے بڑا نقصان اٹھا چکی بی جےپی اور مودی سرکار پر ایک مرتبہ پھر کانگریس سمیت تمام اپوزیشن پارٹیوں نے سوالات اٹھانےشروع کردئے ہیں۔خیال رہے کہ کہ موہن بھاگوت نے کہا تھا کہ ریزرویشن کا جائزہ لینے کے لئے غیر سیاسی کمیٹی تشکیل دی جائے۔


بی ایس پی سپریمو مایاوتی نے کہا کہ آر ایس ایس اور بی جے پی شروع سے ہی یہ سوچ رہی ہے کہ کس طرح ریزرویشن کو ختم کیا جائے۔ ان کی سوچ ریزرویشن کے معاملے میں بالکل صحیح نہیں ہے۔ وہیں بہار کے وزیر اعلی نتیش کمار نے کہا کہ ریزرویشن کے معاملے پر بی جے پی اور آر ایس ایس کی سوچ ایک ہے۔ جاٹ برادری کی جو تحریک ہے، اس کے لئے بی جے پی ذمہ دار ہے۔ وہ دلتوں کو ملے ریزرویشن سے ناخوش ہیں ۔


کانگریسی لیڈروں نے بھی حکومت اور بھاگوت پر تیکھا حملہ بولا ہے۔ آنند شرما نے کہا کہ موہن بھاگوت نے جو کہا ہے ، وزیر اعظم سے ہمارا مطالبہ ہے کہ وہ اس پر بھی اپنے من کی بات کریں۔ کانگریس کے ایک اور لیڈر اشون کمار نے کہا کہ موہن بھاگوت جی جمہوری ڈھانچے میں اتنی تنگ نظری کی ضرورت نہیں ہے۔ کانگریسی لیڈر پی ایل پنیا نے بھی اس پر سوال اٹھاتے ہوئے کہا کہ موہن بھاگوت کا کون سا بیان درست ہے کون سا غلط، خود فیصلہ کریں۔ اس مسئلے پر نریندر مودی اپنی خاموشی توڑیں اور موقف واضح کریں۔


وہیں جے ڈی یو لیڈر کے سی تیاگی نے کہا کہ غیر سرکاری کمیٹی کی طرف سے ریزرویشن پر کمیٹی بنانا ایک خطرناک قدم ہے۔ بھاگوت کا بیان ملک کی یکجہتی اور سالمیت کے لئے خطرناک ہے ۔ جے ڈی یو کے ایک اور لیڈر پون ورما نے کہا کہ ریزرویشن آئینی بندوبست ہے، اسے ان کی کسی کمیٹی کو سونپا نہیں جائے گا۔ وہ کوشش کر رہے ہیں کہ بی جے پی کی حکومت میں ایسا کچھ کر لیں تاکہ ریزرویشن کی آئینی حیثیت کو ختم کیا جا سکے۔


ادھر مرکزی وزیر وینکیا نائیڈو نے کہا کہ موہن بھاگوت کے بیان کی میں وضاحت کرنا چاہتا ہوں، تجویز ہر طرف سے آ رہی ہیں، اچھی تجویز پر غور کیا جائے گا۔


آر ایس ایس وچارک ایم جی وید نے کہا کہ ریزرویشن پسماندہ لوگوں کے لئے ہونا چاہئے۔ پسماندہ کون ہے اس کو طے کون کرے گا، سیاستدان کبھی نہیں کریں گے ، کیونکہ وہ ان کا ووٹ بینک ہے، تو غیر سیاسی آدمی ہی کرے گا۔ موہن بھاگوت کی بات کا صحیح معنی تو وہی بتائیں گے، لیکن میں سمجھتا ہوں کہ جن کا ریزرویشن میں مفاد ہے ، ان سے ہٹ کر لوگ اس کے لئے کام کریں۔

First published: Feb 23, 2016 06:54 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading