ہوم » نیوز » مغربی ہندوستان

چلتی ٹرین میں لڑکی سے چھیڑچھاڑ،سخت قانون کے بعد بھی خواتین نہیں محفوظ، ٹویٹ کرکےکی شکایت

سخت قانون اور پولیس کی مستعدی کے بعد بھی خواتین غیرمحفوظ ہیں۔خواتین کے ساتھ چھیڑ چھاڑ کے معاملے میں کوئی کمی نہیں نظرآ رہی ہے۔ممبئی سے متصل تھانے میں چلتی ٹرین میں چھیڑ چھاڑ کا معاملہ سامنے آیا ہے۔اس کے بعد ٹرینوں کے اندر خواتین کے تحفظ کو لیکر پھر سے سوال اٹھ رہے ہیں۔متاثرہ لڑکی نے سوشل میڈیا پلیٹ فارم ٹویٹر کے ذریعے چھیڑ چھاڑ کی شکایت کی۔

  • Share this:
  • author image
    NEWS18-Urdu
چلتی ٹرین میں لڑکی سے چھیڑچھاڑ،سخت قانون  کے بعد بھی خواتین نہیں محفوظ، ٹویٹ کرکےکی شکایت
علامتی تصویر

ممبئی۔سخت قانون اور پولیس کی مستعدی کے بعد بھی خواتین محفوظ نہیں ہیں۔خواتین کے ساتھ چھیڑ چھاڑ کے معاملے میں کوئی کمی نہیں نظر آ رہی ہے۔ممبئی سے متصل تھانے میں چلتی ٹرین میں چھیڑ چھاڑ کا معاملہ سامنے آیا ہے۔اس کے بعد ٹرینوں کے اندر خواتین کے تحفظ کو لیکر پھر سے سوال اٹھ رہے ہیں۔متاثرہ لڑکی نے سوشل میڈیا پلیٹ فارم ٹویٹر کے ذریعے چھیڑ چھاڑ کی شکایت کی۔


جانکاری کے مطابق 19سالہ لڑکی 28جنوری کو اپنے چھوٹی بہن کے ساتھ بھونیشور سے ممبئی آ رہی تھی۔اسے دادر اسٹیشن پر اترنا تھا۔کونارک ایکسپریس کے رات تین بجے تھانے ریلوے اسٹیشن پہنچنے پر  لڑکی ہاتھ۔منھ دھونے دھونے چلی گئی ۔تبھی ایک نوجوان لڑکی کو غلط طریقے سے چھونے لگا۔متاثرہ نے اس کو منع کیا ۔ملزم لڑکے نے متاثرہ کو ٹرین سے باہر کھینچنے کی بھی کوشش کی،لیکن لڑکی کے شور مچانے پر ٹرین میں موجود لوگ واش روم کے پاس پہنچ گئے۔بھیڑ دیکھنے کے بعد ملزم نو جوان ٹرین سے کود کر فرار ہو گیا۔


رات کا وقت زیادہ ہونےکے سبب متاثرہ اپنی بہن کے ساتھ سیدھے اپنے گھر چلی گئی۔یہاں اس نے پورا معاملہ اپنے اہل خانہ سے بیان کیا۔پھر بعد میں ٹویٹ کے ذریعے متاثرہ نے شکایت کی۔ممبئی پولیس نے کارروائی کرتے ہوئے معاملے کو ریلوے پولیس کو ٹرانسفر کر دیا ہے۔معاملے کو سنجیدگی سے دیکھتے ہوئے فوراریلوے پولیس کی ٹیم ایک ٹیم نے متاثرہ کے گھر پہنچ کر بیان درج کیا۔تھانے جی آرپی نے دفعہ 354کے تحت معاملہ درج کرکے جانچ شروع کر دی ہے۔


اس معاملے میں جی آر پی ٹھانے ریلوے اسٹیشن پر لگے 40سے زائد سی سی ٹی وی کیمروں کی جانچ کر رہی ہے۔ریلوے پولیس کا دعوی ہیکہ معاملے کو جلد از جلد سلجھا لیا جائے گا۔
First published: Jan 29, 2018 08:04 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading