ہوم » نیوز » مغربی ہندوستان

Covid-19 : مہاراشٹر میں بے قابو ہوا کورونا وائرس ، آکسیجن بیڈ کی قلت سے بڑھا بحران

Maharashtra Coronavirus: مارچ سے ہی مہاراشٹر میں آکسیجن کی ڈیمانڈی تیزی سے بڑھی ہے ۔ فروری میں جہاں ریاست میں آکسیجن کی ڈیمانڈ 150 سے 200 میٹرک ٹن تھی تو وہیں موجودہ وقت میں یہ ڈیمانڈ روزانہ 700 سے 750 میٹرک ٹن ہوگئی ہے ۔

  • Share this:
Covid-19 : مہاراشٹر میں بے قابو ہوا کورونا وائرس ، آکسیجن بیڈ کی قلت سے بڑھا بحران
Covid-19 : مہاراشٹر میں بے قابو ہوا کورونا وائرس ، آکسیجن بیڈ کی قلت سے بڑھا بحران ۔ (PIC- AP)

ممبئی : ملک میں کورونا وائرس کے معاملات میں مسلسل اضافہ دیکھنے کو مل رہا ہے ۔ گزشتہ سال کی طرح ملک میں دن بہ دن کورونا کے معاملات بڑھ رہے ہیں ۔ مہاراشٹر کی حالت سب سے زیادہ تشویشناک ہے ۔ ریاست میں کورونا وائرس تیزی سے پھیل رہا ہے ۔ اس درمیان ریاست کے اسپتالوں میں آکسیجن کی کمی ہورہی ہے ۔ ساتھ ہی آکسیجن سلینڈر کے دام بھی بڑھ رہے ہیں ۔


انڈین ایکسپریس کی ایک رپورٹ کے مطابق مہاراشٹر میں سب سے زیادہ حالات اورنگ آباد میں خراب ہیں ۔ ضلع کے اسپتالوں میں آکسیجن والے سبھی بیڈس بھرے ہوئے ہیں ۔ ایسے میں مریضوں کو گھروں میں علاج کرانا پڑ رہا ہے ۔ ضلع میں مارچ کے آخری ایام میں کورونا وائرس کی پازیٹیویٹی شرح 43.8 تھی ۔ جمعہ اور ہفتہ کو ضلع کے اسپتالوں میں کل 2214 آکسیجن والے بیڈ بھر گئے ۔ شہر میں کل 15 ہزار 484 کوورونا کے معاملات سامنے آئے ہیں ، ان میں سے 4600 مریض ہوم آئیسولیشن میں ہیں ۔


مارچ سے ہی مہاراشٹر میں آکسیجن کی ڈیمانڈی تیزی سے بڑھی ہے ۔ فروری میں جہاں ریاست میں آکسیجن کی ڈیمانڈ 150 سے 200 میٹرک ٹن تھی تو وہیں موجودہ وقت میں یہ ڈیمانڈ روزانہ 700 سے 750 میٹرک ٹن ہوگئی ہے ۔ اورنگ آباد میں ہی آکسیجن کی یومیہ ڈیمانڈ 49.5  میٹرک ٹن ہے ۔ یہ فروری کے آخر میں 15 سے 17 میٹرک ٹن تھی ۔


کہا جارہا ہے کہ اسپتالوں میں آکسیجن کی کمی نہیں ہے ، لیکن وہاں دستیاب آکسیجن والے بیڈ کی کمی دیکھنے کو مل رہی ہے ۔ جس بھی مریض کو ہوم آئیسولیشن کیلئے کہا جارہا ہے ، اس کو آکسیجن سلینڈر حاصل کرنے میں مشکلات کا سامنا کرنا پڑرہا ہے ۔

اس قلت کے پیش نظر ریاست کے محکمہ صحت نے منگل کو آکسیجن پروڈیوسرس کو ہدایت جاری کی کہ وہ کل پروڈکشن کا 80 فیصد حصہ میڈیکل استعمال کیلئے بھیجیں جبکہ 20 فیصدی حصہ صنعتی استعمال کیلئے رکھیں ۔ ایسا 30 جون تک کرنے کیلئے کہا گیا ہے ۔
Published by: Imtiyaz Saqibe
First published: Apr 04, 2021 08:55 AM IST