ہوم » نیوز » مغربی ہندوستان

ممبئی ہائی کورٹ میں وکیل نے ماسک ہٹایا توجج نے سماعت سے انکارکیا

مہاراشٹر میں بامبے ہائی کورٹ اور دیگر نچلی عدالتوں میں پیش ہوکر کام کا ج کو حال ہی بحال کیا گیا ہے۔ اس بیچ بامبے ہائی کورٹ میں جاری کیس کی سماعت سے قبل عدالت میں موجود درخواست گزار کے وکیل نے اپنے چہرے سے ماسک ہٹا دیا۔

  • Share this:
ممبئی ہائی کورٹ میں وکیل نے ماسک ہٹایا توجج نے سماعت سے انکارکیا
ممبئی ہائی کورٹ میں وکیل نے ماسک ہٹایا توجج نے سماعت سے انکارکیا

وسیم انصاری

مہاراشٹر میں بامبے ہائی کورٹ اور دیگر نچلی عدالتوں میں پیش ہوکر کام کا ج کو حال ہی بحال کیا گیا ہے۔ اس بیچ بامبے ہائی کورٹ میں جاری کیس کی سماعت سے قبل عدالت میں موجود درخواست گزار کے وکیل نے اپنے چہرے سے ماسک ہٹا دیا۔ ناراض ہوکر عدالت نے نہ صرف وکیل کو لتاڑا بلکہ اس دن اس کی کیس کی کارروائی بھی ملتوی کردی۔

در اصل ، کورونا کے بارے میں عدالت کی طرف سے جاری کردہ معیاری آپریٹنگ طریقہ کار (ایس او پی) کے مطابق، عدالت میں موجود تمام لوگوں کو ماسک پہنالازمی قراردیا ہے۔ مہاراشٹرا میں ایک بار پھر کورونا کیسز بڑھ رہے ہیں۔ پچھلے تین دن میں ، یہاں کورونا کے 8000 سے زائد نئے کیس سامنے آئے ہیں۔


معاملہ 22 فروری کا ہے

دراصل، یہ معاملہ 22 فروری کا ہے۔ اس معاملے کی سماعت بامبے ہائی کورٹ میں جسٹس پرتھوی چوان کے سنگل بنچ میں ہونی تھی۔ اسی دوران عدالت میں موجود درخواست گزار کے وکیل نے کورونا کے گائڈ لائن کی خلاف ورزی کرتے ہوئے اپنےچہرے سے ماسک ہٹا دیا۔ اس کے بعد، جسٹس پرتھو راج چوان نے معیاری آپریٹنگ طریقہ کار کا حوالہ دیتے ہوئے کیس کی سماعت سے انکار کردیا اور کہا کہ اس کیس کی سماعت بعد میں ہوگی۔ جسٹس چوہان نے کہا ، "عدالت کی جانب سے کورونا کے بارے میں جاری کردہ ہدایات کو نظر انداز کرکے درخواست گزار کے وکیل نے خلاف ورزی کی ہے۔ ہم اس کیس کو بورڈ سے ہٹانے کا حکم دیتے ہیں۔"

مہاراشٹرا میں کووڈ کا پھیلاؤ تشویشناک
ملک کے بہت سے حصوں میں ، ایک بار پھر کورونا کیسز تیزی سے بڑھ رہے ہیں۔ ان میں مہاراشٹرا سب سے آگے ہے ، جہاں کو وڈ کی صورتحال سنگین ہوتی جارہی ہے۔ گذشتہ تین دنوں میں ، مہاراشٹرا میں 8000 سے زیادہ کورونا کیسز سامنے آئےہیں۔ کرونا کے پھیلاؤ کو روکنے کے لئے ، یہاں ریاستی حکومت کی طرف سے ایک بار پھر بہت ساری قسم کی پابندیاں عائد کی جارہی ہیں۔
Published by: Nisar Ahmad
First published: Feb 28, 2021 07:11 PM IST