ہوم » نیوز » مغربی ہندوستان

ممبئی پولیس کی سب انسپکٹر ریحانہ شیخ نے پیش کی انسانیت کی عمدہ مثال ، کیا یہ بڑا کام ، ہر طرف کی جارہی تعریف

40 سالہ ریحانہ شیخ نے 50 غریب بچوں کی تعلیم کے اخراجات کے علاوہ اس کووڈ کی وبا میں 54 افراد کو پلازما ، آکسیجن ، خون اور اسپتال کی مدد بھی فراہم کرائی ہے ۔ انسانیت اور فرض کے تئیں دیانتداری کی مثال قائم کرنے والی ریحانہ شیخ کو ممبئی پولیس کمشنر ہیمنت نگرالے نے مبارکباد دی ۔

  • Share this:
ممبئی پولیس کی سب انسپکٹر ریحانہ شیخ نے پیش کی انسانیت کی عمدہ مثال ، کیا یہ بڑا کام ، ہر طرف کی جارہی تعریف
ممبئی پولیس کی سب انسپکٹر ریحانہ شیخ نے پیش کی انسانیت کی عمدہ مثال ، کیا یہ بڑا کام ، ہر طرف کی جارہی تعریف

ممبئی : بہت سے ایسے پولیس اہلکار ہوتے ہیں جو اپنی ڈیوٹی کی حد سے باہر نکل کرلوگوں کی مدد کرتے ہیں ۔ ممبئی پولیس میں ایسی ہی ایک سب انسپکٹر ہیں ، جنہوں نے انسانیت کی ایک عمدہ مثال قائم کی ہے ۔ 40 سالہ ریحانہ شیخ نے 50 غریب بچوں کی تعلیم کے اخراجات کے علاوہ اس کووڈ کی وبا میں 54 افراد کو پلازما ، آکسیجن ، خون اور اسپتال کی مدد بھی فراہم کرائی ہے ۔ انسانیت اور فرض کے تئیں دیانتداری کی مثال قائم کرنے والی ریحانہ شیخ کو ممبئی پولیس کمشنر ہیمنت نگرالے نے مبارکباد دی ۔ پولیس کی ڈیوٹی کے ساتھ ساتھ سماجی ذمہ داری نبھانے کے لئے کمشنر نے ریحانہ کو اپنے دفتر بلایا اور ایک سند دی ۔


ریحانہ نے رائے گڑھ کے بچوں کے لئے دسویں جماعت تک تعلیم کے اخراجات برداشت کرنے کا وعدہ کیا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ گزشتہ سال مجھے رائے گڑھ میں ایک اسکول کے بارے میں معلوم ہوا ، پرنسپل سے بات کرنے کے بعد وہاں پہنچنے پر دیکھا کہ زیادہ تر بچے غریب خاندانوں سے تعلق رکھتے ہیں ، جن کے پاس پہننے کے لئے چپل بھی نہیں تھیں ۔ میں نے اپنی بیٹی کی سالگرہ اور عید شاپنگ کے لئے کچھ پیسے جمع کئے تھے ، جس کو ان بچوں میں خرچ کر دیا ۔


میں نے اپنی بیٹی کی سالگرہ اور عید شاپنگ کے لئے کچھ پیسے جمع کئے تھے ، جس کو ان بچوں میں خرچ کر دیا ۔
میں نے اپنی بیٹی کی سالگرہ اور عید شاپنگ کے لئے کچھ پیسے جمع کئے تھے ، جس کو ان بچوں میں خرچ کر دیا ۔


سال 2000 میں کانسٹیبل کی حیثیت سے پولیس فورس میں شامل ہونے والی ریحانہ نے بتایا کہ گزشتہ سال اس نے کانسٹیبل کی والدہ کے انجیکشن کے لئے کوشش کی تھی ۔ اس کے بعد مجھے حوصلہ ملا اور زیادہ سے زیادہ لوگوں کی مدد کی ۔ پولیس محکمہ سے بہت سارے لوگوں نے اسپتالوں میں خون ، پلازما اور بستر کیلئے درخواست کی ۔ ہم نے وہاٹس ایپ سے دوسرے گروپس کی مدد سے کوششیں کی ۔ ریحانہ کے والد عبد النبی باغبان ممبئی پولیس سے سب انسپکٹر کی حیثیت سے ریٹائر ہوئے ہیں ۔ والد بھی بیٹی کے اس کام سے بہت خوش ہیں اور انہیں اپنی بیٹی پر فخر ہے۔

ریحانہ کے شوہر بھی پولیس میں ہیں اور وہ اسی شوق کی وجہ سے ریحانہ کو 'مدر ٹریسا' کہتے ہیں ۔ ریحانہ شیخ ایتھلیٹ اور والی بال کی کھلاڑی رہی ہیں ۔ 2017 میں سری لنکا میں اپنی ٹیم کی نمائندگی کرتے ہوئے انہوں نے دو سونے اور ایک چاندی کا تمغہ جیتا تھا ۔ ریحانہ کے کام کی تعریف پر خاندان والے بہت خوش اور فخر محسوس کررہے ہیں ۔

ریحانہ نے ملک کے لوگوں سے گزارش کی ہے کہ اگر آپ اپنے آس پاس کے غریب یا محتاج لوگوں کی مدد کرسکتے ہیں ، تو ضرور کریں ،  اس سے ہر کام آسان ہوجائے گا ۔
Published by: Imtiyaz Saqibe
First published: Jun 14, 2021 09:30 PM IST