உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

     ممبئی پولیس نے بیمہ دھوکہ دہی کا پردہ فاش کیا

     بلا سودی قرض کے نام پر دھوکہ کا معاملہ سامنے آیاخود ساختہ بیمہ کمپنی ملازمین قرض دلانےکے لئے فرضی دستاویزات کااستعمال کرتے تھے یوپی کاریکیٹ بے نقب

     بلا سودی قرض کے نام پر دھوکہ کا معاملہ سامنے آیاخود ساختہ بیمہ کمپنی ملازمین قرض دلانےکے لئے فرضی دستاویزات کااستعمال کرتے تھے یوپی کاریکیٹ بے نقب

     بلا سودی قرض کے نام پر دھوکہ کا معاملہ سامنے آیاخود ساختہ بیمہ کمپنی ملازمین قرض دلانےکے لئے فرضی دستاویزات کااستعمال کرتے تھے یوپی کاریکیٹ بے نقب

    • Share this:
    ممبئی سائبر سیل نے بیمہ کمپنی نام پر قرض کی فراہمی کےلئے فرضی کاغذات تیارکر قرض لینے والے خود ساختہ بیما کمپنی ملازمین کوانشونس دھوکہ دہی کے الزام میں گرفتار کرلیا ہے ۔ملزمین فرضی بیماپالیسی فرضی کاغذات کی بنیاد پر تیار کرتے تھے کل چھ ملزمین کو گرفتار کر کے موبائل فون اور سم باکس سمیت متعدد ساز وسامان ضبط کر لیا ہے یہ ملزمین یہ ریکیٹ اترپردیش یوپی سے چلایاکرتے تھے اور اس میں یوپی سے پانچ اور دلی سے ایک ملزم کو گرفتار کیا گیا ہے شکایت کنندہ گان نے بتایاکہ اسے جون 2020 ء میں بنی سنگھ, وجئے مہتا بھارتی ایکسا ویما کمپنی دیپک دوبے خاتون اسہنا اور پوجا پی این بی میٹالائک بیما کمپنی نام سے ای میل موصول ہوا ۔

    اسی میل کی معرفت ملزمین فرضی بیما پالیسی کے کاغذات فراہم کر تے تھے اس سلسلے میں شکایت کنندہ سمیت ملزمین نے کئی لوگوں کو بے وقوف بنایا اور ان کاغذات پر قرض اور انشورنس کی فراہمی کا لالچ دے کر دھوکہ دہی کی اس سلسلے میں پولیس نے معاملہ درج کر کے تفتیش شروع کی شکایت کنندہ کی دھوکہ دہی کر نے والے بھاسکر رائے انڈیا حیدر آباد کی کمپنی کے نام سے سم کارڈ اتر پردیش سے خریدا گیا تھا۔

    ملزمین سے تفتیش کی گئی تو تمام ملزمین اتر پردیش سے تعلق رکھتے تھے اس میں سے دو ملزمین جو موبائل کمپنی میں کام کرتے تھے لوگوں کے دستاویزات جمع کر تے تھے اور تین افراد کو اسے فراہم کرتے تھے اور اسی کاغذات سے بیما کمپنی اور شہریوں کے ساتھ دھوکہ دہی کیا جاتا تھا ۔ اس لئے ممبئی سائبر سیل نےاپیل کی ہےکہ اگر کوئی نامور بیما کمپنی کے نام سے قرض یا دیگر سہولت فراہمی کا وعدہ کرتے ہیں تو اس سے محتاط رہے اتر پردیش اور دلی کے تمام چھ ملزمین کو گرفتار کیا گیا ہے۔

    اس معاملے میں مزید تفتیش جاری ہے۔ ملزمین کے بینک اکاؤنٹ کو بھی منجمد کیا گیا ہے کوٹیک مہندرا بینک اور آئی سی آئی سی آئی بینک کے اکاؤنٹ میں کچھ پیسے بھی ملے ہیں ۔
    Published by:Sana Naeem
    First published: