ہوم » نیوز » مغربی ہندوستان

مہاراشٹر میں سیاسی الٹ پھیر: شرد پوار بولے، حکومت ہم بنائیں گے اس میں کوئی دو رائے نہیں ہے

شرد پوار نے کہا کہ نہ ہی این سی پی کے ارکان اسمبلی اور نہ ہی کارکنان بی جے پی میں شامل ہوں گے۔

  • Share this:
مہاراشٹر میں سیاسی الٹ پھیر: شرد پوار بولے، حکومت ہم بنائیں گے اس میں کوئی دو رائے نہیں ہے
ادھو ٹھاکرے جنھوں نے 28 نومبر کو مہاراشٹر کے وزیر اعلیٰ کی حیثیت سے حلف لیا تھا۔ وہ مہا وکاس اگھاڑی کے لیڈر ہیں۔

نئی دہلی۔ مہاراشٹر میں سیاسی الٹ پھیر کے بعد این سی پی سربراہ شرد پوار اور شیوسینا صدر ادھو ٹھاکرے نے ایک پریس کانفرنس سے خطاب کیا۔ شرد پوار نے کہا کہ نہ ہی این سی پی کے ارکان اسمبلی اور نہ ہی  کارکنان بی جے پی میں شامل ہوں گے۔ ہم بی جے پی کے خلاف ہیں۔ انہوں نے کہا کہ مہاراشٹر میں حکومت ہم ہی بنائیں گے اس میں کوئی دو رائے نہیں ہے۔ ہمارے پاس تعداد ہے۔ اس کے ساتھ ہی انہوں نے سپریا سولے پر کہا کہ ان کی دلچسپی مرکز کی سیاست میں نہیں ہے۔


شرد پوار نے کہا کہ اجیت کے ساتھ راج بھون گئے ارکان اسمبلی میرے ساتھ ہیں۔ یہ حکومت اسمبلی میں اکثریت ثابت نہیں کر پائے گی۔ انہوں نے کہا کہ مجھے اجیت پوار کے اس قدم کے بارے میں صبح جانکاری ملی۔ ہمیں جو کارروائی کرنی ہو گی، کریں گے۔ ارکان اسمبلی کو دل۔ بدل قانون کے بارے میں جانکاری ہونی چاہئے۔


شرد پوار نے واضح لفظوں میں کہا کہ اجیت پوار کے فیصلے کے ساتھ این سی پی نہیں ہے۔ اجیت پوار کچھ ارکان اسمبلی کو لے کر راج بھون گئے۔ ہم بی جے پی کے خلاف ہیں اور یہ اجیت پوار کا نجی فیصلہ ہے۔ میری اطلاع کے مطابق، 10-11 ارکان اسمبلی راج بھون پہنچے تھے۔


پوار نے شیوسینا سربراہ ادھو ٹھاکرے کے ساتھ مشترکہ پریس کانفرنس میں کہا کہ کانگریس، شیوسینا اور این سی پی نے مل بیٹھ کر مہاراشٹر میں حکومت بنانے کا فیصلہ کیا تھا لیکن جو صورتحال سامنے آئی ہے اس میں پورے طور پر اجیت پوار کا ہاتھ ہے۔ انہوں نے خبردار کیا کہ پارٹی کے جو رکن اسمبلی اجیت پوار کے ساتھ جائیں گے ان کے خلاف کارروائی کی جائے گی۔ انہوں نے کہا کہ ’’میرے ساتھ پہلے بھی ایسا ہوتا رہا ہے، مجھے فکر نہیں ہے۔ میرے پاس نمبر ہیں، مستقل حکومت ہم ہی بنائیں گے‘‘۔ پوار نے کہا کہ تینوں جماعتوں کے ارکان اسمبلی کے ساتھ ہی کچھ آزاد امیدواروں کے تعاون سے شیو سینا کی قیادت میں مخلوط حکومت بن رہی تھی اور اس میں 169 سے 170 تک ممبران اسمبلی کی تعداد ہو رہی تھی۔ تینوں جماعتوں نے شیوسینا کی قیادت میں حکومت بنانے کا فیصلہ کیا تھا۔  فڑنویس کے پاس اکثریت نہیں ہے اور وہ ایوان میں اکثریت ثابت نہیں کر پائیں گے۔
انہوں نے کہا کہ ’’یہ فیصلہ اجیت کا ہے۔ مجھے یقین ہے کہ این سی پی کا کوئی بھی رکن اسمبلی اجیت کے ساتھ نہیں جائے گا۔ اگر جو ممبر اسمبلی ان کے ساتھ جانے کی سوچ رہے ہیں، انہیں پارٹی مخالف قوانین کا علم ہونا چاہئے۔ جو این سی پی سے باہر جانے کا فیصلہ کریں گے ان كو مہاراشٹر کے لوگ سبق سکھائیں گے‘‘۔
وہیں، شیوسینا سربراہ ادھو ٹھاکرے نے میڈیا سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ جمہوریت کے نام پر جو کھیل چل رہا ہے اسے پورا ملک دیکھ رہا ہے۔ مینڈیٹ کا ہم نے احترام کیا ہے۔ بی جے پی پر نشانہ سادھتے ہوئے انہوں نے کہا کہ ہم جوڑنے کا کام کرتے ہیں جبکہ بی جے پی توڑنے کا کام کر رہی ہے۔ یہ حکومت اسمبلی میں اکثریت ثابت نہیں کر پائے گی۔ ادھو ٹھاکرے نے کہا کہ ہم جو بھی کرتے ہیں دن کے اجالے میں کرتے ہیں۔ بی جے پی نے چوری چھپے سرکار بنائی۔ ایسا ہی انہوں نے بہار اور ہریانہ میں بھی کیا۔
First published: Nov 23, 2019 01:18 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading