உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    ناسک میں مسلم 'صوفی بابا' کو گولی مار کر قتل، پولیس نے ایک شخص کوکیا گرفتار، 3کو حراست میں لیا

    Youtube Video

    میڈیا رپورٹس کے مطابق افغان شہری صوفی خواجہ سید غریب چشتی کو گولی مار کر قتل کر دیا گیا۔ ان کی عمر تقریباً 35 سال تھی۔ پولیس قاتلوں کی تلاش میں ہے۔ اس معاملے میں تین افراد کو حراست میں لے لیا گیا ہے۔

    • Share this:
      مہاراشٹر کے ناسک ضلع میں مسلم کمیونٹی کے ایک 'صوفی بابا' کے قتل کے معاملے میں پولیس نے ایک شخص کو گرفتار کیا ہے اور تین لوگوں کو حراست میں لیا گیا ہے۔ معلومات کے مطابق 35 سالہ صوفی سنت کو گولی مار کر ہلاک کر دیا گیا۔ بتایا جا رہا ہے کہ یہ سوفی بابا افغانستان کے رہنے والے تھے۔ پولیس کے مطابق اس واقعے کو 4 افراد نے انجام دیا ہے۔ قتل کا یہ واقعہ ییولا تعلقہ کے چیچونڈی ایم آئی ڈی سی علاقہ میں پیش آیا۔

      میڈیا رپورٹس کے مطابق افغان شہری صوفی خواجہ سید غریب چشتی کو گولی مار کر قتل کر دیا گیا۔ ان کی عمر تقریباً 35 سال تھی۔ پولیس قاتلوں کی تلاش میں ہے۔ اس معاملے میں تین افراد کو حراست میں لے لیا گیا ہے۔





      ناسک میں صوفی بابا کو کیوں قتل کیا گیا؟
      افغانستان کے ایک صوفی سنت کو مہاراشٹر کے ناسک ضلع میں گولی مار کر قتل کر دیا گیا۔ یہ واقعہ ییولا تعلقہ کے چیچونڈی ایم آئی ڈی سی علاقے میں پیش آیا ہے۔ تاہم قتل کی وجہ تاحال سامنے نہیں آئی۔ مقتول کا نام صوفی خواجہ سید غریب چشتی بتایا جا رہا ہے۔ اس واردات کو 4 افراد نے انجام دیا ہے۔ قتل کے بعد چار نامعلوم افراد فور وہیلر گاڑی میں فرار ہو گئے۔ مقامی ایس پی سچن پاٹل کے مطابق، صوفی بزرگ کل شہر میں دو یا تین مقامات پر گئے تھے اور کھانا کھایا تھا۔ پولیس نے قتل کے الزام میں ایک شخص کو گرفتار کر لیا ہے۔ اس معاملے میں 3 افراد کو حراست میں لیا گیا ہے۔ جائیداد کے تنازعہ میں قتل کا امکان ہے۔
      Published by:Sana Naeem
      First published: