ہوم » نیوز » مغربی ہندوستان

اکولہ : آکوٹ میں 400 سالہ قدیم مزاروں کو منتقل کر کے مسلمانوں نے پیش کی نئی مثال

اکولہ میں مسلمانوں نے شہرکے درمیان قائم پیرکروڑی اورغیبی شاہ بابا کی مزاروں کو دوسرے مقام پر منتقل کر پورے ملک کے لیے مثال پیش کی ہے۔

  • ETV
  • Last Updated: Mar 07, 2018 10:24 PM IST
  • Share this:
  • author image
    NEWS18-Urdu
اکولہ : آکوٹ میں 400 سالہ قدیم مزاروں کو منتقل کر کے مسلمانوں نے پیش کی نئی مثال
اکولہ میں مسلمانوں نے شہرکے درمیان قائم پیرکروڑی اورغیبی شاہ بابا کی مزاروں کو دوسرے مقام پر منتقل کر پورے ملک کے لیے مثال پیش کی ہے۔

اکولہ : اکولہ میں مسلمانوں نے شہرکے درمیان قائم پیرکروڑی اورغیبی شاہ بابا کی مزاروں کو دوسرے مقام پر منتقل کر پورے ملک کے لیے مثال پیش کی ہے۔ ان دونوں مزاروں سے لاکھوں عقیدت مند جڑے ہیں، جن میں ہندو مسلمان سبھی شامل ہیں۔ شہر میں کشیدگی کو ختم کرنے کیلئے مسلمانوں کی اس کوشش کی ہر کوئی تعریف کر رہا ہے۔ مسلمانوں کی اس پہل کو اب دیگر مذاہب کے لوگوں بھی اپنانے کیلئے تیار ہیں ۔

سپریم کورٹ نےغیر قانونی جگہ پر تعمیر شدہ اور ترقی کی راہ میں روڑہ بننے والے مذہبی مقامات کو ہٹانے کا حکم دیا ہوا ہے، جس کولےکر کئی مرتبہ تنازعات بھی پیدا ہوتے رہے ہیں۔ لیکن اکولہ کے آکوٹ میں مسلمانوں نے 400 سال سے زیادہ قدیم مزاروں کو دوسری جگہ منتقل کرکے ایک نئی مثال قائم کی ہے۔

شیواجی چوک میں واقع پیر کروڑی اورغیبی شاہ بابا کی مزاروں کی وجہ سے ترقیاتی کام میں رخنہ پڑ رہا تھا ، جسے دیکھتے ہوئے مزاروں سے وابستہ لوگوں نے مسلمانوں کے ساتھ مل کر اسے دوسری جگہ منتقل کردیا ۔ مسلمانوں کی اس حکمت عملی کی چوطرفہ ستائش کی جارہی ہے۔

First published: Mar 07, 2018 10:24 PM IST