உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    ناندیڑ اسلحہ ضبطی کیس : ملزمین کے خلاف فرد جرم عائد ، یو اے پی اے اور آرمس ایکٹ کے تحت چلے گا مقدمہ

    فائل فوٹو

    فائل فوٹو

    مہاراشٹر کے ناندیڑ ضلع سے 2012کے وسط میں دہشت گردی کے الزامات کے تحت گرفتار کئے گئے پانچ مسلم نوجوانوں کے خلاف آج چارجیز فریم کردیئے گئے ، جس کے مطابق اب ان کے خلاف یو اے پی اے اور آرمس ایکٹ کی مختلف دفعات کے تحت مقدمہ چلائے جائے گا ۔

    • UNI
    • Last Updated :
    • Share this:
      ممبئی : مہاراشٹر کے ناندیڑ ضلع سے 2012کے وسط میں دہشت گردی کے الزامات کے تحت گرفتار کئے گئے پانچ مسلم نوجوانوں کے خلاف آج فرد جرم یعنی چارجیز فریم کردیئے گئے ، جس کے مطابق اب ان کے خلاف یو اے پی اے اور آرمس ایکٹ کی مختلف دفعات کے تحت مقدمہ چلائے جائے گا ۔ ممبئی سیشن عدالت کے جج مورے نے آج ملزمین محمد مزمل عبدالغنی، محمد صادق محمد فاروق، محمد الیاس محمد اکبر، محمد عرفان محمد غوث اور محمد اکرم محمد اکبر کو ان کے خلاف عائد الزامات سے آگا ہ کیا اور قومی تفتیشی ایجنسی این آئی اے کو حکم دیا کہ وہ معاملے کی اگلی سماعت کے روز یعنی کے 29 اگست کو عدالت میں گواہ کو حاضرکرے تاکہ اس کے بیان کا اندراج عمل میں آسکے ۔
      خصوصی عدالت میں آج ملزمین کو قانونی امداد فراہم کرنے والی تنظیم جمعیۃ علماء مہاراشٹر(ارشد مدنی) کی جانب سے ایڈوکیٹ شریف شیخ ،ایڈوکیٹ متین شیخ ، ایڈوکیٹ انصار تنبولی ، ایڈوکیٹ شاہد ندیم انصاری اور ایڈوکیٹ محمد ارشد موجود تھے جنہوں نے عدالت میں ایک مشترکہ عرضداشت داخل کرکے خصوصی جج سے گذارش کی کہ وہ مقدمہ کی باقاعدہ سماعت کا آغاز کرکے تا کہ دفاعی وکلاء ملزمین پرعائد الزامات کا دفاع کرسکیں ۔
      واضح رہے کہ ریاستی انسداد دہشت گرد دستہ نے ملزمین کو ناندیڑ شہر و اطراف سے گرفتار کیا تھا اور ان پر الزام لگایا تھا کہ وہ بیرون ممالک میں مقیم لشکر طیبہ اور حرکت المجاہدین نامی تنظیموں سے بذریعہ ای میل اور ٹیلی فون ربط میں تھے اور ان کے پاس سے پولس نے دو ریوالور بھی ضبط کی تھی نیز ان کے نشانے پر ایم پی ،ایم ایل اے اور صحافی حضرات تھے۔
      ملزمین پر فرد جرم عائد کیئے جانے کے بعد دفاعی وکیل شریف شیخ نے خصوصی عدالت میں دو علیحدہ عرضداشتیں داخل کرتے ہوئے عدالت سے مطالبہ کیا کہ وہ تحقیقاتی دستہ کو حکم دے کہ سرکاری گواہوں کی گواہی شروع ہونے سے قبل ’’کیس ڈائری‘‘ اور ناندیڑ، اکولہ اور اورنگ آباد اے ٹی ایس یونٹس کی لاگ بک عدالت میں جمع کرائے تا کہ گواہوں کی گواہی کا آغاز ہونے کے بعد تحقیقاتی دستہ اس کے ساتھ چھیڑ چھاڑ نہ کرسکے ۔
      عدالت نے دفاعی وکیل کی عرضداشت کو سماعت کے لیئے قبول کرتے ہوئے وکیل استغاثہ سکھدیو کو حکم دیا کہ وہ اس تعلق سے 29 اگست کو تک اپنے موقف کا اظہار کرے اور معاملے کی سماعت ملتوی کردی ۔ آج سخت حفاظتی بندوبست میں ملز اکرم کو بنگلور سے کرناٹک کی پولس نے ممبئی کی خصوصی میں پیش کیا جہاں ملزم نے عدالت سے کہا کہ اس کے خلاف لگائے گئے الزامات اسے منظور نہیں ہے اور مقدمہ کا سامنا کرنے کو تیار ہے ، اسی طرح دیگر ملزمین نے بھی ان کے خلاف عائد الزامات سے انکار کیااور عدالت سے درخواست کی ان کے مقدمہ کی روز بہ روز سماعت کی جائے ۔
      First published: