ہوم » نیوز » مغربی ہندوستان

مہاراشٹر: ایڈوکیٹ مجید میمن نےکہا- اندھیرے میں بنی فڑنویس حکومت دن کےاجالےمیں ہوجائےگی فوت

مجید میمن نےکہا کہ اکھلیش یادو نے جوبیان دیا کہ جمہوری ملک میں اب یہ رواج ہوگیا ہےکہ جس کا گورنراس کی سرکار، خواہ اکثریت ہویا نہ ہو۔ مہاراشٹرکی موجودہ صورتحال میں با لکل فٹ بیان ہے۔

  • UNI
  • Last Updated: Nov 23, 2019 11:57 PM IST
  • Share this:
  • author image
    NEWS18-Urdu
مہاراشٹر: ایڈوکیٹ مجید میمن نےکہا- اندھیرے میں بنی فڑنویس حکومت دن کےاجالےمیں ہوجائےگی فوت
ممبرپارلیمنٹ مجید میمن: فائل فوٹو

ممبئی: مہاراشٹرمیں حکومت سازی میں جلد بازی وڈرامائی اندازمیں اندھیرے میں سرکار بنانے کےعمل کی مذمت کرتے ہوئے معروف قانون داں اورراشٹر وادی کانگریس کے جنرل سکریٹری و راجیہ سبھا رکن ایڈوکیٹ مجید میمن نےکہا کہ مہاراشٹرکےگورنرنے جس انداز میں صدرراج کوصبح پانچ بج کر 47 منٹ پر واپس لیا وہ غیرضروری اورغیرآئینی ہے ۔

اس پرریاست کی عوام یہ جاننا چاہیں گےکہ ایسی کون سی ایمرجنسی تھی کہ ایسے وقت میں اوراندھیرے میں سرکاربنائی گئی اس کی ضرورت کیوں پیش آئی۔


ایڈوکیٹ مجید میمن نےکہا کہ گورنرکی آئینی ذمہ داری ہےکہ وہ جس شخص کو سرکار بنانے کےلئے مدعوکررہا ہے، اس سے پہلے یہ تصدیق کرلےکہ اس کے پاس سرکاربنانے کےلئے درکار 145 ایم ایل اے کی تعداد ہے یا نہیں؟ اس کے بعد ہی حلف برداری کی تقریب منعقد کرنا تھا، لیکن گورنرنے کسی بھی قانونی عملیات پرعمل نہیں کیااور دیویندرفڑنویس کوحلف دلا دیا جوغیرآئینی عمل ہے۔

مجید میمن نے مزید کہا کہ اتر پردیش کے سابق وزیر اعلیٰ اکھلیش یادو نے جوبیان دیا کہ جمہوری ملک میں اب یہ رواج ہوگیا ہےکہ جس کا گورنراس کی سرکار، خواہ اکثریت ہویا نہ ہو۔ مہاراشٹرکی موجودہ صورتحال میں با لکل فٹ بیان ہے۔ انہوں نےکہا کہ اجیت پوارکا پارٹی کے ساتھ غداری کرنا اورنائب  وزیر اعلیٰ کا حلف لینا نہایت ہی غلط اورغیر ذمہ دارانہ قدم ہے، ا س پروہ جلد ہی پچھتائیں گے۔


انہوں نے مزید کہا کہ فڑنویس کا یہ بیان کی انکی سرکار 5 سال چلے گی، یہ ان کی خو ش فہمی ہےکیونکہ اندھیرے میں بنی سرکاردن کے اجالے میں فوت ہوجائے گی۔ گورنرنےانہیں اکثریت ثابت کرنےکےلئے ایک ہفتہ کا وقت دیا ہے۔ 30  نومبرکو اسمبلی اجلاس میں انہیں اکثریت ثابت کرنی ہے، جو ممکن نہیں ہے، لیکن اس امکانات سے بھی انکار نہیں کیا جا سکتا کہ ایم ایل اے کی خرید و فروخت ہو سکتی ہے۔ اس لئےشیوسینا ،این سی پی او رکانگریس کے لیڈران کوبہت چوکنا رہنا پڑے گا۔ کیونکہ 30 نومبر کو فڑنویس سرکارکوگرانا اہم ہے۔
First published: Nov 23, 2019 11:52 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading