ہوم » نیوز » مغربی ہندوستان

مہاراشٹر: فڑنویس کےاستعفیٰ پرنواب ملک کا طنز- شرد پوارآئی آئی سی صدررہے، کردیا نہ کلین بولڈ

دیویندرفڑنویس کے تین دن کے بعد استعفیٰ دینے پراپوزیشن پارٹیوں نےٹوئٹ کرکےان پرنشانہ سادھا ہے۔ کانگریس ترجمان رندیپ سرجے والا، این سی پی ترجمان نواب ملک اوراترپردیش کےسابق وزیراعلیٰ اکھلیش یادونےٹوئٹ کرکے بی جے پی پرتنقید کی ہے۔

  • Share this:
مہاراشٹر: فڑنویس کےاستعفیٰ پرنواب ملک کا طنز- شرد پوارآئی آئی سی صدررہے، کردیا نہ کلین بولڈ
دیویندر فڑنویس کےاستعفیٰ کے بعد اپوزیشن نے ان پر نشانہ سادھا۔

ممبئی: نیشنلسٹ کانگریس پارٹی (این سی پی) لیڈراجیت پوارکےاستعفیٰ دینےکے بعد وزیر اعلیٰ دیویندرفڑنویس نے بھی منگل کواستعفیٰ دینےکا اعلان کردیا۔ ساتھ ہی انہوں نےگورنر بی ایس کوشیاری کواپنا استعفیٰ بھی سونپ دیا ہے۔ انہوں نے پریس کانفرنس کےدوران اعلان کیا کہ اکثریت نہ ہونے کے سبب وہ استعفیٰ دینے جارہے ہیں۔ حالانکہ اس دوران انہوں نے شیوسینا پرکئی الزامات عائد کئے۔ ساتھ ہی انہوں نےکہا کہ شیوسینا، این سی پی اورکانگریس کی حکومت بہت زیادہ دنوں تک نہیں چلے گی۔


این سی پی کے سینئرلیڈراورترجمان نواب ملک نے ٹوئٹ کرکےکہا کہ 'بی جے پی لیڈرنتن گڈکری جی کہہ رہے تھے کہ کرکٹ اورسیاست میں کبھی بھی اورکچھ بھی ہوسکتا ہے، شاید وہ بھول گئےتھے شرد پوار آئی سی سی کے صدررہ چکے ہیں، کردیا نہ کلین بولڈ'۔


دیویندرفڑنویس کے تین دن کے بعد استعفیٰ دینے پراپوزیشن پارٹیوں نے ٹوئٹ کرکے ان پر نشانہ سادھا ہے۔ کانگریس ترجمان رندیپ سرجے والا نے فڑنویس سے معافی مانگنے کا مطالبہ کیا ہے۔





فڑنویس کے استعفیٰ کے بعد کانگریس نے اپنے آفیشیل ٹوئٹرہینڈل سے یہ ٹوئٹ کیا۔

اترپردیش کے سابق وزیراعلیٰ اورسماجوادی پارٹی کے قومی صدراکھلیش یادو نے ٹوئٹ کیا ہےکہ آج یوم دستورپرآئین کوماننے والوں کی جیت ہوئی ہےاورانکارکرنے والوں کی شکست۔ خصوصی آئینی طاقت کا غلط استعمال کرنے کے لئے اخلاقی ذمہ داری لیتے ہوئے کسی اور کوبھی استعفیٰ دے دینا چاہئے، جن کی 'بھورکی بھول' نےآج ملک کو ساری دنیا کے سامنے شرمندہ کیا ہے۔  





واضح رہےکہ ہفتہ کی علی الصبح وزیراعلیٰ عہدے کا حلف لینے والے دیویندرفڑنویس  اور نائب وزیراعلیٰ اجیت پوارنےآج ڈرامائی اندازمیں استعفیٰ دے دیا۔ اس سے قبل مہاراشٹرمیں سیاسی گھمسان جاری تھا اورسبھی پارٹیاں اپنے اراکین اسمبلی کو متحد رکھنے اورانہیں ٹوٹنے کےلئے تمام حربےاپنا رہی تھیں۔ این سی پی، کانگریس اورشیوسینا نےگزشتہ روز پیر کی شام ہوٹل گرانڈ حیات میں اپنے 162 اراکین اسمبلی کی پریڈ کرائی تھی اورانہیں میڈیا کے سامنے پیش کرکے حلف دلایا گیا تھا۔ حالانکہ اس وقت بی جے پی نے تینوں پارٹیوں کے دعووں کومسترد کرتے ہوئے کہا تھا کہ ہم اسمبلی میں اکثریت ثابت کریں گے۔
First published: Nov 26, 2019 06:11 PM IST