உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    این آئی اے نے ڈاکٹر ذاکر نائک کے تقریروں کی شروع کی جانچ ، دفتر پہنچی پولیس

    نئی دہلی۔ ڈھاکہ دہشت گردانہ حملے کو انجام دینے والوں کے معروف اسلامی اسکالر ذاکر نائیک سے متاثر ہونے کی رپورٹیں سامنے آنے کے بعد ممبئی پولیس اور این آئی اے نے ممبئی کے ڈاکٹر نائیک کی تقریروں کی جانچ شروع کر دی ہے۔

    نئی دہلی۔ ڈھاکہ دہشت گردانہ حملے کو انجام دینے والوں کے معروف اسلامی اسکالر ذاکر نائیک سے متاثر ہونے کی رپورٹیں سامنے آنے کے بعد ممبئی پولیس اور این آئی اے نے ممبئی کے ڈاکٹر نائیک کی تقریروں کی جانچ شروع کر دی ہے۔

    نئی دہلی۔ ڈھاکہ دہشت گردانہ حملے کو انجام دینے والوں کے معروف اسلامی اسکالر ذاکر نائیک سے متاثر ہونے کی رپورٹیں سامنے آنے کے بعد ممبئی پولیس اور این آئی اے نے ممبئی کے ڈاکٹر نائیک کی تقریروں کی جانچ شروع کر دی ہے۔

    • Share this:
      نئی دہلی۔ ڈھاکہ دہشت گردانہ حملے کو انجام دینے والوں کے معروف اسلامی اسکالر ذاکر نائیک سے متاثر ہونے کی رپورٹیں سامنے آنے کے بعد ممبئی پولیس اور این آئی اے نے ممبئی کے ڈاکٹر نائیک کی تقریروں کی جانچ شروع کر دی ہے۔ اب ایجنسیاں ذاکر نائیک کے ویڈیو کی صحیح طریقے سے جانچ کر رہی ہیں اور 11 جولائی کو ان کے ہندوستان لوٹنے پر ان سے رابطہ کیا جائے گا۔ ایجنسیاں خاص طور سے اس ویڈیو کو اس نقطہ نظر سے بھی جانچ رہی ہیں کہ کہیں نائیک نے خلیفہ پر کوئی بات کی تھی؟ یا پھر انہوں نے کسی دہشت گرد تنظیم کی تعریف کی تھی؟

      اے ٹی ایس اور این آئی اے نے بتایا کہ ابھی ان کے پاس ذاکر نائیک کو لے کر کسی طرح کا ٹھوس ثبوت نہیں ہے اور ابھی نائیک کی تقاریر کی جانچ کی جا رہی ہے۔ اس درمیان ذاکر نائیک کے اسلامک ریسرچ فاؤنڈیشن کے ایڈمنسٹریشن منیجر منظور شیخ نے بتایا کہ مجھے اوپر سے حکم ملا ہے کہ ابھی کسی طرح کی پریس کانفرنس نہیں کرنی ہے۔ بنگلہ دیش کے حملہ آوروں کے سوال پر شیخ نے کہا کہ قرآن میں لکھا ہے کہ کسی بے گناہ کو مار نہیں سکتے۔

      وزیر داخلہ کرن رجيجو نے کہا کہ ذاکر نائیک کی تقریر ہمارے لئے باعث تشویش ہے۔ ہماری ایجنسیاں اس پر کام کر رہی ہیں۔ آئی بی کی اس پر نظر ہے لیکن ایک وزیر کے طور پر میں اس بات پر کوئی رد عمل نہیں دوں گا کہ کیا کارروائی کی جا رہی ہے۔
      First published: