ہوم » نیوز » مغربی ہندوستان

ادھو ٹھاکرے نے واضح کیا- مہاراشٹر میں نافذ نہیں ہوگا شہریت قانون، بتائی اپوزیشن کی میٹنگ میں نہ جانےکی وجہ

مہاراشٹر حکومت (Maharashtra Government) میں وزیر اور کانگریس کے ریاستی صدر بالا صاحب تھوراٹ (Balasaheb Thorat) نے سی اے اے کو لےکرکہا ہےکہ ہمارا نظریہ واضح ہے، ہم سی اے اے کو مہاراشٹر میں نافذ نہیں کریں گے۔

  • Share this:
ادھو ٹھاکرے نے واضح کیا- مہاراشٹر میں نافذ نہیں ہوگا شہریت قانون، بتائی اپوزیشن کی میٹنگ میں نہ جانےکی وجہ
مہاراشٹر میں مہا وکاس اگھاڑی کی حکومت نے کہا ہے کہ وہ ریاست میں سی اے اے کو نافذ نہیں ہونے دے گی۔

نئی دہلی: شہریت ترمیمی قانون 10 جنوری سے پورے ملک میں نافذ ہوچکا ہے۔ اس قانون کو لےکر ابھی بھی پورے ملک میں احتجاجی مظاہرہ جاری ہے۔ ملک میں کئی غیر بی جے پی ریاست پہلے ہی کہہ چکے ہیں کہ وہ اپنی ریاست میں شہریت ترمیمی قانون (سی اے اے) کو نافذ نہیں ہونے دیں گے۔ اب مہاراشٹر میں مہا وکاس اگھاڑی کی حکومت نےکہا ہے کہ وہ ریاست میں سی اے اے کو نافذ نہیں ہونے دے گی۔ وہیں مہاراشٹر حکومت میں وزیر اور ریاست میں کانگریس کے صدر بالا صاحب تھوراٹ نے سی اے اے کو لےکرکہا ہےکہ ہمارا کردار واضح ہے، ہم سی اے اے کو مہاراشٹر میں نافذ نہیں کریں گے۔ انہوں نےکہا کہ اپوزیشن جماعتوں کا مشترکہ بیان جاری ہوگا۔ بالا صاحب تھوراٹ نے کہا کہ عدالت کا فیصلہ آنے تک ہم انتظار کریں گے۔


'قانون نافذ کرنے کا ذمہ حکومت کے پاس'


وہیں مہاراشٹر کے وزیر داخلہ انل دیشمکھ نے اتوار کو کہا کہ مرکزی حکومت قانون ضرور بنا سکتی ہے، لیکن اسے نافذ کرنے کا ذمہ داری پوری طرح ریاستی حکومت کے پاس ہوتی ہے۔ ناگپور میں 'وی دی سٹیزنس آف انڈیا' کے ذریعہ منعقدہ احتجاجی ریلی میں دیشمکھ نے کہا 'مہاراشٹر میں ہماری حکومت ہے۔ مرکزی حکومت قانون ضرور بنا سکتی ہے، لیکن اسے نافذ کرنا یا نہیں کرنا ریاستی حکومت کے ہاتھ یں ہوتا ہے۔


کانگریس کے ریاستی صدر بالا صاحب تھوراٹ سونیا گاندھی اور راہل گاندھی کے قریبی سمجھے جاتے ہیں۔


'مہاراشٹر میں نافذ نہیں ہوگا سی اے اے'

کانگریس کے لیڈر اور مہاراشٹر کے وزیر توانائی نتن راؤت نے بھی ریلی میں شرکت کی۔ انہوں نے کہا کہ مہاراشٹر سی اے اے کو نافذ نہیں کرے گا۔ راؤت نے کہا 'حالانکہ وہ (مرکز) بھلے کوشش کرلیں، مہاراشٹر حکومت اس قانون (سی اے اے) کو ریاست میں نافذ نہیں ہونے دے گی۔  مہاراشٹر وکاس اگھاڑی حکومت میں شیو سینا، این سی پی اور کانگریس (تینوں جماعتیں) شامل ہیں۔ وزیرداخلہ دیشمکھ نے کہا کہ این سی پی سربراہ شرد پوار اور کانگریس صدر سونیا گاندھی جیسے لیڈروں نے سی اے اے، این آر سی اور این پی آر جیسے تقسیم کرنے والے اقدامات کی پارلیمنٹ میں مخالفت کی تھی۔ انہوں نے الزام لگایا کہ مرکز ملک میں ہندوؤں اور مسلمانوں کے درمیان نفرت پیدا کرنے کے لئے ایسے قانون لا رہی ہے۔  واضح رہے کہ سی اے اے، این آر سی اور ملک کے حالات کو لے کر اپوزیشن نے پیر کو ایک میٹنگ کی۔ حالانکہ اس میٹنگ سے شیو سینا نے دوری بنائی۔ شیو سینا نے کہا کہ انہیں کانگریس نے میٹنگ کے بارے میں کچھ نہیں بتایا۔ وہیں این سی پی کے لیڈران اس میٹنگ میں شریک ہوئے۔
First published: Jan 13, 2020 07:55 PM IST