உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    گجرات: 14 ماہ کی بچی سےعصمت دری کے بعد کئی اضلاع میں بہار- یوپی کےلوگوں پرحملہ

    علامتی تصویر۔

    علامتی تصویر۔

    پولیس ڈائریکٹرجنرل شیوانند جھا نے بتایا کہ گجرات میں غیرگجراتیوں پرحملوں سے منسلک 150 لوگوں کو گرفتارکیا گیا ہے۔

    • Share this:
      سابرکانٹھا ضلع میں گزشتہ ہفتہ 14 ماہ کی بچی کے ساتھ مبینہ طورپرعصمت دری کے الزام میں بہار کے ایک شخص کی گرفتاری کے بعد ریاست کے کئی حصوں میں غیرگجراتیوں کو نشانہ بنایا جارہا ہے۔ پولیس نے جمعہ کو بتایا کہ ان غیرگجراتیوں میں خاص طور پر بہار اوراترپردیش کے لوگ شامل ہیں۔

      پولیس ڈائریکٹر جنرل شیوانند جھا نے بتایا کہ اس طرح کے حملے گزشتہ ایک ہفتے میں گاندھی نگر، مہسانا، سابرکانٹھا، پاٹن اوراحمدآباد اضلاع میں ہوئے ہیں اوران واقعات سے منسلک 150 لوگوں کو گرفتارکیا گیا ہے۔ انہوں نے بتایا کہ سوشل میڈیا پرغیرگجراتیوں خاص طورپراترپردیش اوربہار کے لوگوں کے خلاف نفرت آمیزپیغام وائرل ہونے کے بعد یہ حملے ہوئے۔

      پولیس نے بتایا کہ 28 ستمبرکو سابرکانٹھا ضلع کے ہمت نگرقصبے کے پاس ایک گاوں میں 14 ماہ کی معصوم بچی سے مبینہ طورپرعصمت دری ہوئی تھی۔ انہوں نے بتایا کہ بہار کے رہنے والے رویند رساہو نام کے مزدورکو حادثہ والے دن ہی گرفتارکرلیا گیا تھا۔ جھا نے نامہ نگاروں کو بتایا کہ غیرگجراتیوں پرحملے کے بعد سے ریاست کے مختلف اضلاع میں اب تک 18 ایف آئی آر درج کی گئی ہیں۔

      یہ بھی پڑھیں:      گنگا میں نہا رہی خاتون سے اجتماعی عصمت دری کے ملزم پر ہو سکتا ہے بڑا حملہ

      یہ بھی پڑھیں:    بوائے فرینڈ نے اپنے دوستوں کے ساتھ مل کر کیا معشوقہ کا ریپ ، متاثرہ کی حالت نازک

      یہ بھی پڑھیں:             بریلی: آبروریزی میں ناکام ہونے پردیورنے بیوہ بھابھی کا قتل کردیا

      یہ بھی پڑھیں:        نہانے گئی نو سالہ بچی کی عصمت دری کے بعد قتل، ایک شخص گرفتار
      First published: