உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    لون کے نام پر لاکھوں روپے کا دھوکہ دینے والے گینگ کا پردہ فاش، پولیس نے کیا گرفتار

    پولیس کے مطابق ملزم کے ساتھ اور بھی بہت سے نوجوان ہیں ، جنہوں نے ڈیبٹ کارڈ اور بینک کی تفصیلات بتانے پر اس کو ہر ٹرانسفیکشن کے لئے 1200 روپے کی رقم دینے کا اعتراف کیا ہے۔

    پولیس کے مطابق ملزم کے ساتھ اور بھی بہت سے نوجوان ہیں ، جنہوں نے ڈیبٹ کارڈ اور بینک کی تفصیلات بتانے پر اس کو ہر ٹرانسفیکشن کے لئے 1200 روپے کی رقم دینے کا اعتراف کیا ہے۔

    پولیس کے مطابق ملزم کے ساتھ اور بھی بہت سے نوجوان ہیں ، جنہوں نے ڈیبٹ کارڈ اور بینک کی تفصیلات بتانے پر اس کو ہر ٹرانسفیکشن کے لئے 1200 روپے کی رقم دینے کا اعتراف کیا ہے۔

    • Share this:
    ممبئی کی ملاڈپولیس کے سائبر سیل نے دہلی سے ایک شاطر مجرم کو گرفتار کیا ہے جودہلی میں بیٹھ کر ممبئی میں رقم کی ہفتہ وصولی کر تا تھا۔ کال سینٹر سےقرض لینے کے نام پر پروسیسنگ فیس کا مطالبہ کرتا تھا اور پیسے متاثرہ شخص کے اکاؤنٹ میں رقم بھیج دیتا تھا اورفون بند کرکےغائب ہوجاتا تھا۔ ملاڈکے سائبر سیل نے ملزم کو موبائل ہینڈسیٹ کے ساتھ گرفتار کیا ہے۔ملاڈ پولیس اسٹیشن کی حدود میں رہنے والے سمت بنسالی اکثر اپنی رقم لائف انشورنس پالیسی میں لگا رکھا تھا جس کی شری رام انشورنس اور انڈیا فرسٹ انشورنس میں پالیسی ہے۔ ایک دن سمت کو دہلی سے محکمہ لون کا فون آیا کہ کیا آپ کو قرض کی ضرورت ہے؟ در اصل سمیت اس وقت قرض کی تلاش میں تھا۔

    سنیل نے بتایا کہ اس کو 12 لاکھ روپے کی اشد ضرورت ہے اگر لون ہوجائے گاتو مدد ملے گی۔ جس کے بعد منیش اکھلیش شرما نامی نوجوان کا فون آیا کہ آپ کو 12 لاکھ کا قرض ملے گا ، لیکن اس کے لئے آپ کو کچھ پروسیزر کو مکمل کرنا پڑے گا۔ منیش نے سمت کو سنڈیکیٹ بینک کا اکاؤنٹ نمبر دیا اور بتایا کہ آپ کو ٹی ڈی ایس اور پروسیسنگ فیس پر 2 لاکھ 80 ہزار 5 سو روپے ادا کرنا ہوں گے۔ جیسے ہی سمت نے یہ رقم بینک اکاؤنٹ میں بھیجی تو اس کے سامنے والے شخص کی کال کی ڈٹیل سب بند ہو گیا۔

    شکایت کنندہ کے ساتھ پائے گئے موبائل نمبر پر کال کی تفصیلات اور دہلی کا پتہ ملا۔ تفتیش کے دوران یہ پتہ چلا کہ قرض پر کارروائی کے لئے اکاؤنٹ کی تفصیلات دی گئی ہیں۔ وہ منیش اکھلیش شرما (22) نامی ایک شخص کاتھا جو دہلی جا رینے والا ہے۔پولیس کو ملزم منیش کے اکاؤنٹ کی تفصیلات اور اس کے پاس سے ایک موبائل ہینڈ سیٹ بھی ملا ہے۔ منیش کال سنٹر چلاتا ہے۔ جہاں سے رقم وصولی کے فون لگایا جاتا ہے۔ جس میں 6 تعلیم یافتہ لڑکوں کو رقم کی وصولی کے لئے رکھا گیا تھا۔

    پولیس کے مطابق ملزم کے ساتھ اور بھی بہت سے نوجوان ہیں ، جنہوں نے ڈیبٹ کارڈ اور بینک کی تفصیلات بتانے پر اس کو ہر ٹرانسفیکشن کے لئے 1200 روپے کی رقم دینے کا اعتراف کیا ہے۔ فی الحال اس واردات میں 23 مارچ کو ایک ملزم کو دہلی سے گرفتار کیا گیا ہے۔ اس کے پاس سے کرائم میں استعمال ہونے والے موبائل ہینڈ سیٹ برآمد ہوئے ہیں اور دیگر ساتھیوں کی تلاش جاری ہے۔
    Published by:Sana Naeem
    First published: