ہوم » نیوز » مغربی ہندوستان

پونے پولیس نے 5 ملزمین کو گرفتار کیاملٹری انٹلیجنس اور پونے پولیس کی مشترکہ کارروائی

ملٹری انٹیلیجنس اور پونے پولیس نے مشترکہ کارروائی میں ایک ایسے گروہ کو بے نقاب کیا جو فوج کے امتحانات کے پرچے لیک کرتا تھا۔ 28 فروری کو آرمی میں بھرتی کے لئے کامن انٹریس امتحان ہونے والے تھے لیکن اس کے پیپر لیک ہونے کی وجہ سے یہ امتحان منسوخ کرنا پڑا۔

  • Share this:
پونے پولیس نے 5 ملزمین کو گرفتار کیاملٹری انٹلیجنس اور پونے پولیس کی مشترکہ کارروائی
ملٹری انٹیلیجنس اور پونے پولیس نے مشترکہ کارروائی میں ایک ایسے گروہ کو بے نقاب کیا جو فوج کے امتحانات کے پرچے لیک کرتا تھا۔ 28 فروری کو آرمی میں بھرتی کے لئے کامن انٹریس امتحان ہونے والے تھے لیکن اس کے پیپر لیک ہونے کی وجہ سے یہ امتحان منسوخ کرنا پڑا۔

ملٹری انٹیلیجنس اور پونے پولیس نے مشترکہ کارروائی میں ایک ایسے گروہ کو بے نقاب کیا جو فوج کے امتحانات کے پرچے لیک کرتا تھا۔ 28 فروری کو آرمی میں بھرتی کے لئے کامن انٹریس امتحان ہونے والے تھے لیکن اس کے پیپر لیک ہونے کی وجہ سے یہ امتحان منسوخ کرنا پڑا۔ اس معاملے میں پونے پولیس نے ریاست میں الگ الگ جگہوں سے 5 لوگوں کوگرفتار کیا ہے جس میں ایک فوج میں ملازمت بھی کرچکا ہے۔ پونے پولیس نے پیپر لیک معاملے میں ایف آئی آر درج کرلی ہے۔ پونے پولیس کا ماننا ہے کہ اس معاملے میں ہر لیک ہونے والے کاغذ کو 1 سے 3 لاکھ روپے میں فروخت کیا گیا تھا جس کی اطلاع فوج کے ملٹری انٹلیجنس اور پونے پولیس کو ملی جس کے بعد دونوں ایجنسیوں نے مشترکہ آپریشن کرتے ہوئے مہاراشٹر کے مختلف شہروں میں چھاپے مارے اور پانچ افراد کو گرفتار کرلیا۔

پونے کے ایڈیشنل کمشنر ، ڈاکٹر رویندر شسوے نے بتایا کہ 28 فروری کو پورے ملک میں آرمی مشترکہ داخلہ امتحان منعقد ہونے والا تھا جس میں 40 مراکز تھے اور 30 ​​ہزار سے زیادہ طلباء امتحان دینے والے تھے اور پونے پولیس کو اطلاع ملی کہ کچھ لوگ طلباءکو پیرلینے کے لئے منا رہے ہیں۔ پولیس کو معلوم ہوا اور 2 ٹیموں نے تفتیش شروع کردی اور ہمیں پتہ چلا کہ یہ کاغذات امتحان سے پہلے ہی سامنے آچکے ہیں۔


جانچ پڑتال کے بعد معلوم ہوا کہ یہ مکمل طور پر اصل پیپر سے مل رہا ہے ، فوج نے فوری طور پر یہ امتحان منسوخ کردیا اور کچھ افراد جن کو ہم نے حراست میں لیا ہے وہ بھی ریٹائرڈ آرمی سے ہیں اور کچھ آرمی ریکروٹمنٹ سینٹر بھی چلا رہے ہیں۔ یہ جافی سنگین معاملہ ہے ۔ اس میں مزید تفتیش شروع کی گئی ہے کہ کون شامل ہے اور کتنے افراد کےپاس پورے کاغذ پہنچے ہیں۔


رپورٹ: وسیم انصاری
Published by: Sana Naeem
First published: Mar 03, 2021 01:02 AM IST