உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    اب Ajmer کی Dargah کے نیچے شیولنگ ہونے کا دعویٰ، گیانواپی کی طرح کی سروے کرانے کا مطالبہ

     راجستھان کے اجمیر میں درگاہ کے نیچے ایک شیولنگ کا دعویٰ کیا گیا ہے۔

    راجستھان کے اجمیر میں درگاہ کے نیچے ایک شیولنگ کا دعویٰ کیا گیا ہے۔

    مہارانا پرتاپ سینا نامی فیس بک پیج پر راج وردھن سنگھ پرمار کی ایک پوسٹ نے سوشل میڈیا پر ایک نئی سنسنی پیدا کردی ہے۔ پرمار نے فیس بک پیج پر اجمیر درگاہ کے نیچے شیولنگ ہونے کا دعویٰ کرتے ہوئے تحقیقات کے لیے وزیر اعلیٰ اور مرکزی حکومت کو خط لکھا ہے۔

    • Share this:
      Shivling under Ajmer Dargah: اتر پردیش میں کاشی کے گیانواپی کا مسئلہ ابھی پوری طرح سے حل نہیں ہوا ہے۔ دریں اثنا، راجستھان کے اجمیر میں درگاہ کے نیچے ایک شیولنگ کا دعویٰ کیا گیا ہے۔ اتنا ہی نہیں گیانواپی کی طرح یہاں بھی سروے کرانے کا مطالبہ کیا جا رہا ہے۔ مہارانا پرتاپ سینا نامی فیس بک پیج پر راج وردھن سنگھ پرمار کی ایک پوسٹ نے سوشل میڈیا پر ایک نئی سنسنی پیدا کردی ہے۔ پرمار نے فیس بک پیج پر اجمیر درگاہ کے نیچے شیولنگ ہونے کا دعویٰ کرتے ہوئے تحقیقات کے لیے وزیر اعلیٰ اور مرکزی حکومت کو خط لکھا ہے۔

      پرتاپ سینا کے فیس بک پیج پر لکھی گئی اس پوسٹ میں ایک تصویر شیئر کی گئی ہے جس میں سواستیکا کا نشان نظر آرہا ہے۔ حالانکہ ذرائع کے مطابق اس پورے معاملے میں سی آئی ڈی کی جانب سے کی گئی تحقیقات کے بعد حکومت کو جو رپورٹ پیش کی گئی ہے اس میں اس تصویر کو درگاہ کا نہ بتاکر کچھ ہی دور واقع اڑھائی دن کے چھوپڑے ککا بتایا گیا ہے۔

      دریں اثنا، جمعرات کو اے ڈی ایم سٹی بھاونا گرگ، اے ایس پی ویبھو شرما درگاہ پہنچے۔ حالانکہ میڈیا سے بات چیت میں اے ڈی ایم سٹی نے درگاہ کے دورے کو اس موضوع سے نہیں جوڑتے ہوئے معمول کے انتظامات کا جائزہ اور سیکورٹی کا جائزہ لینا بتایا۔ اجمیر میں واقع صوفی بزرگ خواجہ معین الدین حسن چشتی کی درگاہ کے مقام پر پہلا شیولنگ ہونے کا دعویٰ کرنے والے مہارانا پرتاپ سینا کے قومی صدر راج وردھن سنگھ پرمار کے دعوے درگاہ کی انجمن کمیٹی نے خارج کر دیا ہے۔



      اب دہلی میں مندر کے پاس نہیں بیچا جا سکے گا Non Veg کھانا، NDMC اٹھانے جارہی ہے یہ بڑا قدم

      خادموں کی ایک تنظیم انجمن کمیٹی کے صدر اور سیکرٹری نے میڈیا کے سامنے ایک بیان میں اس دعوے کو جھوٹا قرار دیتے ہوئے کہا کہ اس جگہ ایسا کچھ نہیں رہ۔ انجمن کے صدر معین سرکار نے کہا کہ غریب نواز کی درگاہ مذہب اور ذات کے طوق سے بالاتر ہو کر عالمگیر ہم آہنگی کی علامت ہے۔ یہاں مسلمانوں سے زیادہ ہندو اپنی مرادیں لیکر زیارت کے لیے آتے ہیں اور ایسے بیانات جاری کر کے آستھا کو ٹھیس پہنچائی جا رہی ہے۔ انجمن کے سیکرٹری واحد حسین انگارہ نے کہا کہ گنگا جمنی ثقافت کو خراب کرنے اور اس طرح کے جھوٹے دعوے کر کے فساد پھیلانے والوں کے خلاف سخت کارروائی کی جائے۔
      Published by:Sana Naeem
      First published: