ہوم » نیوز » مغربی ہندوستان

راجستھان سیاسی بحران: وسندھرا راجے کے قریبی لیڈر کیلاش میگھوال بولے۔ منتخب حکومت کو گرانے کی سازش کرنا ٹھیک نہیں

اپنی پارٹی کو نصیحت دیتے ہوئے میگھوال نے کہا کہ حکومت گرانے کی سازش نہ کرے، یہ اخلاقیات کے خلاف ہے۔

  • Share this:
راجستھان سیاسی بحران: وسندھرا راجے کے قریبی لیڈر کیلاش میگھوال بولے۔ منتخب حکومت کو گرانے کی سازش کرنا ٹھیک نہیں
اشوک گہلوت، وسندھرا راجے

جئے پور۔ نئی دہلی۔ راجستھان میں کانگریس کی اندرونی کشمکش کے بعد مچے سیاسی گھمسان  (Rajasthan Political Crisis) کے درمیان بھارتیہ جنتا پارٹی کے لیڈر اور ریاست کی سابق وزیر اعلیٰ وسندھرا راجے کے قریبی مانے جانے والے کیلاش میگھوال نے اپنی پارٹی کو ہی اخلاقیات کی صلاح دی ہے۔ نیوز 18 انڈیا سے بات چیت میں میگھوال نے کہا کہ منتخب حکومت کو گرانے کی سازش کرنا ٹھیک نہیں ہے۔ اپنی پارٹی کو نصیحت دیتے ہوئے میگھوال نے کہا کہ حکومت گرانے کی سازش نہ کرے، یہ اخلاقیات کے خلاف ہے۔ میگھوال نے بی جے پی سے کہا کہ کسی بھی فیصلے میں وسندھرا راجے کی رائے لینی چاہئے۔ انہوں نے کہا کہ راجستھان میں وسندھرا راجے کو نظر انداز نہیں کیا جا سکتا۔


بی جے پی رکن اسمبلی میگھوال نے کہا کہ ’’ راجستھان کی سیاست آج پٹری سے اتری ہوئی ہے اور اس کی وجہ سے عوام کو بہت پریشان ہونا پڑ رہا ہے۔ جن سنگھ سے لے کر بی جے پی تک کے سفر میں رہنماوں نے یہی آئیڈیل رکھا کہ اخلاقی اقدار کی سیاست ہونی چاہئے اور آج کی سیاست جیسی ہو رہی ہے وہ غیر اخلاقی ہے‘‘۔


میگھوال نے کہا کہ ’ آج جو کچھ ہو رہا ہے وہ غیر اخلاقی اقدار کی سیاست ہو رہی ہے۔ منتخب ہوئی کسی بھی حکومت کو غیر ضروری طور پر اور غیر جمہوری طریقے سے ہٹانا غلط اور غیر اخلاقی ہے‘۔ سابق اسمبلی اسپیکر کیلاش میگھوال نے کہا کہ ’ ہم پارٹی ود ڈیفرینس ہیں۔ سرکار گرانے کی سازش اس سے پہلے ایسے کبھی نہیں ہوئی۔ سرکار گرانے کی سازش غیر اخلاقی ہے۔

Published by: Nadeem Ahmad
First published: Jul 18, 2020 01:42 PM IST