ہوم » نیوز » مغربی ہندوستان

راجستھان بحران : ایک فون کال سے گہلوت نے چلایا جاود ، سچن پائلٹ کے خیمہ میں ڈال دی پھوٹ

Rajasthan Political Crisis : اشوک گہلوت کے انتہائی قریبی اور تین مرتبہ ممبر اسمبلی رہ چکے پردیومن سنگھ کا ان سب کے پیچھے اہم رول ہے ۔ سچن پائلٹ خیمہ میں گئے چار باغی ممبران اسمبلیوں کو سمجھا بجھا کر واپس لانے کیلئے وہ جمعہ سے ہی دہلی میں تھے ۔

  • Share this:
راجستھان بحران : ایک فون کال سے گہلوت نے چلایا جاود ، سچن پائلٹ کے خیمہ میں ڈال دی پھوٹ
اب سچن پائلٹ کے اگلے قدم پر سب کی نظریں مرکوز ہیں

راجستھان میں گزشتہ چار دنوں سے سیاسی گھمسان جاری ہے ۔ 72 گھنٹوں کی کوششوں کے بعد آخر کار وزیر اعلی اشوک گہلوت  (Ashok Gehlot)  کانگریس اعلی کمان کا اعتماد جیتنے میں کامیاب ہوگئے ہیں ۔ پارٹی نے گہلوت کی جادوگری پر بھروسہ ظاہر کرتے ہوئے باغی تیور دکھا رہے سچن پائلٹ (Sachin Pilot) کو نائب وزیر اعلی اور ریاستی کانگریس صدر کے عہدہ سے ہٹانے پر اتفاق کرلیا ہے ۔ پائلٹ کے قریبی دو وزرا کو بھی برخاست کردیا گیا ہے ۔ اب پائلٹ کے اگلے قدم پر سب کی نظریں مرکوز ہیں ، کیونکہ میدان میں اب بی جے پی نے بھی راہ راست طور پر انٹری کرلی ہے ۔ سابق وزیر اعلی وسندھرا راجے آج بی جے پی ممبران اسمبلی سے ملاقات کرنے والی ہیں ۔


اشوک گہلوت کے انتہائی قریبی اور تین مرتبہ ممبر اسمبلی رہ چکے پردیومن سنگھ کا ان سب کے پیچھے اہم رول ہے ۔ سچن پائلٹ خیمہ میں گئے چار باغی ممبران اسمبلیوں کو سمجھا بجھا کر واپس لانے کیلئے وہ جمعہ سے ہی دہلی میں تھے ۔ ان چار ممبران اسمبلی میں پردیومن سنگھ کے بیٹے روہت بوہرا ، کانگریس لیڈر دانش ابرار ، پرشانت بیروا ، چیتن ڈوڈی شامل ہیں ، جو سچن پائلٹ کے انتہائی قریبی مانے جاتے تھے ۔ اشوک گہلوت ہفتہ کو کسی طرح روہت بوہرا سے فون پر رابطہ کرنے میں کامیاب ہوگئے ۔ بوہرا کے ذریعہ ہی وہ باقی تینوں ممبران اسمبلی سے بات کرپائے ۔


راجستھان میں ایک کانگریس لیڈر نے نام نہ شائع کرنے کی شرط پر بتایا کہ گہلوت نے چاروں ممبران اسمبلی کو یہ سمجھایا کہ سچن پائلٹ کے ساتھ جاکر ان کا سیاسی مستقبل اچھا نہیں رہے گا ۔ تب پائلٹ کے بی جے پی میں شامل ہونے کی قیاس آرائی تیز تھی ۔ گہلوت نے چاروں ممبران اسمبلی کے مطالبات سنے اور انہیں حکومت میں اہم ذمہ داریاں دینے کا بھی یقین دلایا ۔


کانگریس سے وابستہ ذرائع کے مطابق گہلوت سے فون پر بات چیت کے بعد چاروں باغی لیڈران دہلی چھوڑ کر اتوار کی صبح چار بجے جے پور پہنچ گئے ۔ پھر ان کی گہلوت کے ساتھ الگ میٹنگ ہوئی ۔ ذرائع کے مطابق ممبران اسمبلی میں سے ایک نے اس دوران معافی بھی مانگی ۔ ان کی واپسی کے ساتھ ہی اشوک گہلوت سچن پائلٹ کے خیمہ کو توڑ پائے ۔ چاروں ممبران اسمبلی نے اتوار کو پریس کانفرنس کی اور اعلان کیا کہ وہ اشوک گہلوت کے ساتھ ہیں ۔ ان چاروں ممبران اسمبلی میں شامل ابرار نے کہا تھا کہ ہم نسلوں سے کانگریس کے سپاہی ہیں اور پارٹی میں ہی رہیں گے ۔

اس پریس کانفرنس کے بعد ہی اشوک گہلوت نے پیر کو کانگریس لیجسلیٹیو پارٹی کی میٹنگ بلا لی ۔ حکومت کو حمایت دے رہے آزاد ممبران اسمبلی اور بی ایس پی اراکین کو بھی میٹنگ میں بلایا گیا ۔ اس میٹنگ میں سچن پائلٹ کو بھی آنے کیلئے کئی مرتبہ کال اور میسیج کیا گیا تھا ۔ کئی لیڈران ان سے دہلی میں بھی رابطہ کرنے کی کوشش کررہے تھے ، لیکن پائلٹ نے کسی بھی کال اور میسیج کا جواب نہیں دیا ۔
Published by: Imtiyaz Saqibe
First published: Jul 15, 2020 09:26 AM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading