ہوم » نیوز » مغربی ہندوستان

راجستھان سیاسی بحران: گورنر کے سوالوں پر گہلوت کابینہ کی دیر رات تک چلی میٹنگ میں قرارداد تیار

اسمبلی اسپیکر کی جانب سے وہپ کی خلاف ورزی کرنے پر 19 ایم ایل اے کو دیئے گئے نوٹس پر روک کے بعد اس مسئلہ پر 27 جولائی کو سپریم کورٹ میں سماعت ہوگی۔

  • UNI
  • Last Updated: Jul 25, 2020 11:33 AM IST
  • Share this:
راجستھان سیاسی بحران: گورنر کے سوالوں پر گہلوت کابینہ کی دیر رات تک چلی میٹنگ میں قرارداد تیار
راجستھان میں اسمبلی اجلاس بلانے کے معاملے پر سیاسی گہما گہمی تیز

جئے پور۔ راجستھان میں اسمبلی اجلاس بلانے کے معاملے پر سیاسی گہما گہمی تیز ہوگئی ہے۔ جمعہ کے روز وزیر اعلی اشوک گہلوت کی قیادت میں راج بھون میں دھرنے کے سبب گورنر نے کابینہ کے اجلاس میں کچھ نکات پر وضاحت ملنے کے بعد اسمبلی اجلاس بلانے کی یقین دہانی کرائی تھی۔ اس کے بعد دیر رات گئے تک کابینہ کی میٹنگ ہوئی جس میں چھ نکات پر تبادلہ خیال کے بعد قرارداد تیار کیا گیا ہے۔ یہ قرارداد آج گورنر کو ارسال کیا جائے گا۔ ادھر کانگریس نے آج ضلعی ہیڈکوارٹر میں ایک مظاہرے کا پروگرام رکھا ہے۔


اسمبلی اسپیکر کی جانب سے وہپ کی خلاف ورزی کرنے پر 19 ایم ایل اے کو دیئے گئے نوٹس پر روک کے بعد اس مسئلہ پر 27 جولائی کو سپریم کورٹ میں سماعت ہوگی۔ بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) نے اب کانگریس کو کھل کر جواب دینے کا فیصلہ کیا ہے۔ بی جے پی کا ماننا ہے کہ کانگریس میں داخلی لڑائی کا الزام بی جے پی پر عائد کیا جارہا ہے جبکہ کانگریس نے ایم ایل اے کی خرید وفروخت میں شامل مرکزی وزیر گجیندر سنگھ شیخاوت کا نام لیا ہے۔ کانگریس نے اپنے ممبران اسمبلی کو فائیو اسٹار ہوٹل میں رکھا ہوا ہے جس پر بی جے پی نے اعتراض کیا ہے۔


ادھر کانگریس کے برطرف کئے جانے والے 19 ایم ایل اے نے بھی خود کو یرغمال بنائے جانے سے انکار کردیا ہے۔ کانگریس اکثریت حاصل کرنے کا دعوی کر رہی ہے جس پر گورنر کا کہنا ہے اگر کانگریس کے پاس اکثریت ہے تو پھر سیشن طلب کرنے کی ضرورت کیا ہے۔ گورنر نے جن چھ نکات پر کابینہ کی رائے جاننے کی بات کہی تھی اس میں سیشن بلانے کی تاریخ ، مختصر نوٹس پر اجلاس طلب کرنے کا جواز ، ممبران اسمبلی کی آزادانہ نقل و حرکت کو یقینی بنانا اور کورونا وائرس کے پیش نظر اجلاس طلب کرنے جیسے ضروری انتظامات کے نکات شامل ہیں۔

Published by: Nadeem Ahmad
First published: Jul 25, 2020 11:33 AM IST