ہوم » نیوز » مغربی ہندوستان

آرایس ایس سربراہ نے پوچھا- کوئی جنگ نہیں پھربھی سرحد پرکیوں شہید ہورہے ہیں جوان؟

موہن بھاگوت نے کہا کہ اگرکوئی جنگ نہیں ہے توکوئی وجہ نہیں ہے کہ کوئی فوجی سرحد پرجان گنوائے، لیکن ایسا ہورہا ہے۔ اسے روکنے اورملک کوعظیم بنانے کے لئےاقدامات کیا جانا چاہئے۔

  • Share this:
آرایس ایس سربراہ نے پوچھا- کوئی جنگ نہیں پھربھی سرحد پرکیوں شہید ہورہے ہیں جوان؟
آر ایس ایس سربراہ موہن بھاگوت: فائل فوٹو۔

آرایس ایس سربراہ موہن بھاگوت نے کہا کہ کوئی جنگ نہیں ہورہا ہے پھربھی ملک کی سرحدوں پرفوجی شہید ہورہے ہیں۔ آرایس ایس سربراہ نے'پرہارسماج جاگرتی سنستھا کے رجت جینتی پروگرام کےموقع پرناگپورمیں کہا کہ ایسا اس لئے ہورہا ہے کیونکہ ہم اپنا کام ٹھیک سےنہیں کررہے ہیں۔


موہن بھاگوت نےکہا کہ "ہندوستان کوآزادی ملنے سے پہلے ملک کے لئے جان قربان کرنے کا وقت تھا۔ آزادی کے بعد جنگ کے دوران کسی کوسرحدپرجان قربان کرنی ہوتی ہے، لیکن ہمارے ملک میں اس وقت کوئی جنگ نہیں ہے، پھربھی فوجی شہید ہورہے ہیں۔ کیونکہ ہم اپنا کام ٹھیک طریقے سے نہیں کررہے ہیں"۔


انہوں نے کہا کہ "اگرکوئی جنگ نہیں ہے توکوئی وجہ نہیں ہے کہ کوئی فوجی سرحد پرجان گنوائے، لیکن ایسا ہورہا ہے۔ اسے روکنے اورملک کو عظیم بنانے کے لئے اقدامات اٹھائے جانے چاہئے"۔


آرایس ایس سربراہ نےکہا کہ لڑائی ہوئی توتمام سماج کو لڑنا پڑتا ہے۔ سرحد پرفوجی جاتے ہیں، سب سے زیادہ خطرہ وہ مول لیتے ہیں۔ خطرہ مول لینے کے بعد بھی ان کی ہمت قائم رہے، سازوسامان کم نہ پڑے۔ اگرکسی کی شہادت ہوگئی تواس کے اہل خانہ کوکمی نہ ہو، یہ فکرسماج کو کرنی پڑتی ہے۔  



First published: Jan 18, 2019 12:06 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading