உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    ادب، زبان اور ثقافت تینوں کا تصوف سے ہے خاص رشتہ : ارتضی کریم

    اورنگ آباد۔  اورنگ آباد میں  صوفی سنت روایات، زبان ادب اور ثقافت پر سہ روزہ سمینار کا شایان شان  افتتاحی اجلاس ہوا۔

    اورنگ آباد۔ اورنگ آباد میں صوفی سنت روایات، زبان ادب اور ثقافت پر سہ روزہ سمینار کا شایان شان افتتاحی اجلاس ہوا۔

    اورنگ آباد۔ اورنگ آباد میں صوفی سنت روایات، زبان ادب اور ثقافت پر سہ روزہ سمینار کا شایان شان افتتاحی اجلاس ہوا۔

    • ETV
    • Last Updated :
    • Share this:

      اورنگ آباد۔  اورنگ آباد میں  صوفی سنت روایات، زبان ادب اور ثقافت پر سہ روزہ سمینار کا شایان شان  افتتاحی اجلاس ہوا۔ اس افتتاحی اجلاس میں صوفی سنتوں کے پیغام کو ملک کی ضرورت قرار دیا گیا۔  این سی پی یو ایل کے اشتراک سے آزاد کالج میں چل رہے اس سہ روزہ سمینار میں این سی پی یو ایل کے ڈائریکٹرڈاکٹر ارتضی کریم نے خصوصی شرکت کی اور کئی اہم اعلانا ت  کیے ۔ ساتھ  ہی سمینار کو وقت کی ضرورت قرار دیا۔  این سی پی یو ایل  اور ڈاکٹر رفیق زکریا سینٹر فار ہائیر لرننگ اورمولانا آزاد کالج اورنگ آباد کے آئی ایچ ایم آڈیٹوریم میں سہ روزہ قومی سیمینار کا آغاز ہوا۔ اس پروقار تقریب  میں سیمینار کا افتتاح پدم شری فاطمہ رفیق زکریا کے ہاتھوں عمل میں آیا۔ ہمہ لسانی سیمینار میں قومی کونسل برائے فروغ اردو زبان کے ڈائریکٹر، پروفیسرڈاکٹر ارتضیٰ کریم بطور مہمانِ خصوصی موجود تھے۔  افتتاحی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے پدم شری میڈم فاطمہ زکریا نے کہا کہ ان کے خاوند مرحوم ڈاکٹررفیق زکریا نے ان اداروں کی بنیاد جمہوری اقدار پر قائم کی ہے ۔ ان اداروں کا بنیادی مقصد تعلیم و تربیت کے وسائل فراہم کرنا ہے۔ فاطمہ زکریا نے صوفی روایات کو آگے بڑھانے کا عزم کیا اور باہمی تعاون پر زور دیا۔ اس موقع پر ڈاکٹر رفیق زکریا سینٹر فار ہائیر لرننگ کے ڈائریکٹر ڈاکٹر ارتکاز افضل نے  کہا کہ  صوفی پیغام وقت کی ضرورت ہے ۔

      اس پر وقار تقریب میں  این سی پی یو ایل کے ڈائریکٹر ڈاکٹر ارتضی کریم نے  کہا کہ یہ سیمینار موجودہ دور کے مادہ پرستی اور روحانی بحران سے نجات دلانے کی سمت میں کارگرثابت ہوگا۔ اسی میں انسانیت کی بھلائی اور قومی ترقی کا راز مضمر ہے، ارتضی کریم نے ادب زبان اور ثقافت تینوں  کا رشتہ تصوف سے جوڑا اور واضح کیا کہ  کہیں نہ کہیں   اپنی قدروں سے انحراف کی وجہ سے حالات ابتر ہورہے ہیں ۔ انہوں نے سمینار کی اہمیت وافادیت پر کچھ روشنی ڈالی، ای ٹی وی سے بات چیت میں مولانا آزاد کالج کے پرنسپل  ڈاکٹر مخدوم فاروقی نے  کہا کہ سمینار میں پڑھے جانے والے مقالوں کو کتابی شکل دی جائے گی۔


      سہ روزہ سمینار کے کنوینر  ڈاکٹر قاضی نوید احمد صدیقی نے  سمینار کے مختلف سیشن پرروشنی ڈالی اور بتایا کہ  یہ سمینارصوفی روایات کی پاسداری میں اہم رول ادا کرے گا۔ اس سمینار میں  میڈم فاظمہ زکریا نے  این سی پی یو ایل کے ڈائریکٹر ارتضیٰ کریم سے یہ درخواست کی کہ وہ دکن میں تصوف پر ایک طویل مدتی پروجکٹ تفویض کریں تاکہ ایک مضبوط اور قابل قدر دستاویز کی شکل میں یہ عظیم ورثہ محفوظ کیاجا سکے۔  ڈاکٹر ارتضیٰ کریم نے سمینار میں ہی اس پروجیکٹ پر اپنی  منظوری کی مہر ثبت کردی ۔

      First published: