உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    شیوسینا کا اعظم خان پر نشانہ ، وزیر اعظم بننے کے لئے خون میں حب الوطنی ضروری

    شیوسینا نے اپنے ترجمان اخبار 'سامنا کے ذریعہ ایک مرتبہ پھر اعظم خان پر نشانہ سادھا ہے۔ شیوسینا کو جی کیوں گھیرتے ہو؟ اعظم خان کی زبان کھینچو کے عنوان سے سامنا میں ایک مضمون شائع کیا گیا ہے۔

    شیوسینا نے اپنے ترجمان اخبار 'سامنا کے ذریعہ ایک مرتبہ پھر اعظم خان پر نشانہ سادھا ہے۔ شیوسینا کو جی کیوں گھیرتے ہو؟ اعظم خان کی زبان کھینچو کے عنوان سے سامنا میں ایک مضمون شائع کیا گیا ہے۔

    شیوسینا نے اپنے ترجمان اخبار 'سامنا کے ذریعہ ایک مرتبہ پھر اعظم خان پر نشانہ سادھا ہے۔ شیوسینا کو جی کیوں گھیرتے ہو؟ اعظم خان کی زبان کھینچو کے عنوان سے سامنا میں ایک مضمون شائع کیا گیا ہے۔

    • Pradesh18
    • Last Updated :
    • Share this:
      ممبئی  : شیوسینا نے اپنے ترجمان اخبار 'سامنا کے ذریعہ ایک مرتبہ پھر اعظم خان پر نشانہ سادھا ہے۔ شیوسینا کو جی کیوں گھیرتے ہو؟ اعظم خان کی زبان کھینچو کے عنوان سے سامنا میں ایک مضمون شائع کیا گیا ہے۔ اس مضمون میں شیوسینا نے کہا ہے کہ ممبئی کے کچھ لوگ کبھی بھی اٹھ کر شیوسینا پر طنز کردیتے ہیں۔ اے سی چیمبر میں بیٹھ کر تنقید کے لئے عقل کی ضرورت نہیں ہوتی، لیکن ان لوگوں کو اعظم خان جیسے لوگوں کو آڑے ہاتھوں لینے کی ہمت دکھانی ہوگی۔
      شیوسینا نے کہا کہ اعظم خان نے وزیر اعظم پر پھر طنز کیا ہے، مجھے چائے بنانا آتا ہے، اچھے کپڑے پہننا آتا ہے، ڈھول بجانا آتا ہے، تو میں وزیر اعظم بن سکتا ہوں۔ شیوسینا کے مطابق وزیر اعظم کا اس طرح مذاق اڑانا مناسب نہیں ہے، لیکن اعظم خان کے سر پر مخملی ٹوپی ضرور ہو، لیکن کھوپڑی میں دماغ بالکل بھی نہیں ہے۔
      شیوسینا نے آگے کہا کہ اعظم خان وزیر اعظم بننے کا پہاڑا پڑھ رہے ہیں، لیکن اس کے لئے حب الوطنی کا خون میں ہونا ضروری ہوتا ہے، جو مودی کے خون میں ہے۔ اعظم خان کے خون میں کیا ہے؟ کچھ کہا نہیں جا سکتا۔ اعظم خان کی طرف سے مسلمانوں کی سیاست کرنے میں انہیں کوئی اعتراض نہیں ہے کیوںوہی ان کی روزی روٹی ہے، لیکن اٹھتے بیٹھتے مسلمانوں کو بھڑكاكر آگ لگانا اور اس پر سیاسی کباب پکانا انتہا پسندی ہے۔
      First published: