ہوم » نیوز » مغربی ہندوستان

شیوسینا کا بڑا بیان- ملک کی کئی ریاستیں جلد ہی ہوجائیں گی بی جے پی مکت

شیوسینا نےکہا ہےکہ بی جے پی نے مرکزی حکومت کی باگ ڈور سنبھالنے سےقبل 'کانگریس بھارت مکت' کا نعرہ دیا تھا، لیکن اب یہ نعرہ ناکام ہوتا دکھلائی پڑ رہا ہے۔

  • UNI
  • Last Updated: Dec 24, 2019 10:19 PM IST
  • Share this:
  • author image
    NEWS18-Urdu
شیوسینا کا بڑا بیان- ملک کی کئی ریاستیں جلد ہی ہوجائیں گی بی جے پی مکت
شیو سینا نے بی جے پی پرکیا بڑا حملہ۔ فائل فوٹو

ممبئی: شیوسینا نےآج پیشن گوئی کی ہےکہ جھارکھنڈ کےاسمبلی نتائج کے بعد اب اس بات کےامکانات پیدا ہوگئے ہیں کہ جلد ہی ملک کی وہ ریاستیں جہاں بی جے پی برسراقتدارہے وہ ’’بی جے پی مکت‘‘(بی جے پی سے پاک) ہوجائیں گی۔ اپنے ترجمان اخبار'سامنا' میں لکھے گئےاداریے میں شیوسینا نےکہا ہےکہ بی جے پی نے مرکزی حکومت کی باگ ڈور سنبھالنے سے قبل 'کانگریس بھارت مکت' کا نعرہ دیا تھا، لیکن اب یہ نعرہ ناکام ہوتا دکھلائی پڑرہا ہے اورخود یہ بی جے پی پرصادق آرہا ہےاورآہستہ آہستہ بی جے پی کی ہاتھوں سے وہ ریاستیں جا رہی ہیں، جہاں کسی زمانے میں مودی اورامت شاہ کی جئےجئےکارہوا کرتی تھی، وہ بی جے پی سےپاک ہوتی جا رہی ہیں۔

سامنا کےمطابق مدھیہ پردیش ،چھتیس گڑھ اورراجستھان جیسی بڑی ریاستوں میں بی جے پی کوشکست کا منہ دیکھنا پڑا ہے۔ 'اس میں مزید کہا گیا ہے، 2018 میں 75 فیصد ریاستوں میں بی جےپی کی حکومت تھی۔ اس کےعلاوہ کئی ریاستوں میں بی جے پی بیک فٹ پرچلی گئی ہے۔ 2018 میں بی جے پی نےتریپورہ اورمیزورم سمیت 22 ریاستوں پرزعفرانی جھنڈے لہرا رہےتھے، لیکن آج صورتحال یہ ہےکہ اگر تریپورہ میں انتخابات ہوگئےتوعوام بی جے پی حکومت کاتختہ پلٹ دیں گے۔

سامنا کےمطابق 'اگرجھارکھنڈ میں وزیراعظم نریندرمودی اوروزیرداخلہ امت شاہ کی انتخابی میٹنگوں کا جائزہ لیں تویہ بات واضح ہوجائےگی کہ بی جے پی نے ہندوؤں اور مسلمانوں میں براہ راست تفرقہ پیدا کرکےاقتدارحاصل کرنےکی کوشش کی تھی، لیکن عوام نےانہیں ناکام کردیا۔ اخبارکے مطابق بی جے پی نے جھارکھنڈ میں اقتدارحاصل کرنےکےلئےاپنی پوری طاقت جھونک دی تھی وزیراعظم سےلےکروزیرداخلہ سمیت مرکزی وزراء سمیت مختلف ریاستوں کے وزرائےاعلی اوربی جے پی کےقدآورلیڈران انتخابی مہم چلانے کےلئےمیدان میں اترے تھے، لیکن ان کی ایک نہیں چلی اورجھارکھنڈ کی عوام نے بی جے پی کوالوداع کہہ دیا۔

First published: Dec 24, 2019 10:18 PM IST