ہوم » نیوز » مغربی ہندوستان

لاک ڈاؤن میں مائیگرینٹ مزدوروں کےلئے ناندیڑ سےلکھنؤ کے لئے چلی خصوصی ٹرین 

کورونا سے بچنے کیلئے پورے ملک میں لاک ڈاؤن کیا گیا ۔لاک ڈاؤن کے دوران کاروبار بند ہوئے اور لوگوں میں بے روزگاری پھیل رہی ہے۔ ایسے میں میگرنٹ مزدور اپنے اپنے گاؤں جانے کیلئے نکل پڑے ہیں ۔ہزاروں کی تعدادمیں مزدور پیدل ہی سفر کررہے ہی۔ ایسے میں میگر نٹ مزدوروں کی سہولت کیلئے خصوصی ٹرینیں بھی چلنی شروع ہوگئی ہے۔

  • Share this:
لاک ڈاؤن میں مائیگرینٹ مزدوروں کےلئے ناندیڑ سےلکھنؤ کے لئے چلی خصوصی ٹرین 
کورونا سے بچنے کیلئے پورے ملک میں لاک ڈاؤن کیا گیا ۔لاک ڈاؤن کے دوران کاروبار بند ہوئے اور لوگوں میں بے روزگاری پھیل رہی ہے۔ ایسے میں میگرنٹ مزدور اپنے اپنے گاؤں جانے کیلئے نکل پڑے ہیں ۔ہزاروں کی تعدادمیں مزدور پیدل ہی سفر کررہے ہی۔ ایسے میں میگر نٹ مزدوروں کی سہولت کیلئے خصوصی ٹرینیں بھی چلنی شروع ہوگئی ہے۔

ناندیڑ: کورونا سے بچنے کیلئے پورے ملک میں لاک ڈاؤن کیا گیا ۔لاک ڈاؤن کے دوران کاروبار بند ہوئے اور لوگوں میں بے روزگاری پھیل رہی ہے۔ ایسے میں میگرنٹ مزدور اپنے اپنے گاؤں جانے کیلئے نکل پڑے ہیں ۔ہزاروں کی تعدادمیں مزدور پیدل ہی سفر کررہے ہی۔ ایسے میں میگر نٹ مزدوروں کی سہولت کیلئے خصوصی ٹرینیں بھی چلنی شروع ہوگئی ہے۔ ابتدائی میں یہ خصوصی ٹرینیں ممبئی ،ناسک اور ناگپور جیسے بڑے شہروں سے چلائی گئی جس کی وجہ سے وہاں کے میگرنٹ مزدوروں کو روانہ ہونے میں مدد ملی جبکہ چھوٹے شہروں سے ٹرینیں نہیں چلائی جارہی تھیں جس کی وجہ سے ان علاقوں میں پھسے ہوئے مزدور اپنے گاؤں واپس نہیں جاپارہے تھے۔ اس کے لئے یہ لوگ پٹریوں کے سہارے پیدل ہی سفر کررہے تھے۔


اسی کوشش کے دوران اورنگ آباد کے قریب نہایت دردناک ٹرین حادثہ پیش آیا جس میں ایک درجن سے زائد میگرنٹ مزدور ہلا ک ہوئے ۔اورنگ آباد ٹرین حادثہ نے حکومت اور انتظامیہ کو ہلاکر رکھ دیا ۔اور یہ سوچنے پر مجبور کیا کہ چھوٹے شہروں کےمیگرنٹ ورکروں کے لئے بھی واپسی کے انتظامات کرنا ضروری ہے ۔چنانچہ اسی کوشش کے تحت ناندیڑ سے لکھنوؤں کے لئے ایک خصوصی ٹرین کا نظم کیا گیا ۔اس ٹرین میں دیڑ ہزار کے قریب مسافر سوار ہے انہیں ریاستی حکومت نے اپنے خرچ پر روانہ کیا ہے ۔ناندیڑ کے ریلوے اسٹیشن پر سوشیل ڈسٹنسنگ کے تحت ان کی روانگی کی کاروائی انجام دی گئی۔


تمام مزدوروں کی میڈیکل جانچ کی جارہی ہے ان کے جسم کا درجہ حرارت بھی معلوم کیا گیا۔ لمبی لمبی قطاروں میں یہ مزدور اپنے گھر لوٹنے کیلئے جاتے ہوئے نظر آئے۔ ان کے کھانے پینے کے انتظامات کیلئے بھی سماجی کارکنان کی جانب سے کئے گئے تھے۔ بھوکے اور پیاسے مزدوروں کے لئے کھانے پینے کی چیزوںکی فراہمی ایک بہت بڑی نعمت دکھائی دے رہی تھی۔ کئی مسافروں کے ساتھ چھوٹے چھوٹے بچے بھی نظر آرہے تھے ان کےلئے دودھ اوربسکٹ اور پھل بھی تقسیم کئے گئے۔


لاک ڈاؤن کے دورا پچھلے دیڑ مہینہ سے یہ لوگ نہایت کسم پرسی کے حالات میں زندگی جی رہے تھے اور بار بار حکومت سے یہ مانگ کررہے تھے ان کی واپسی کیلئے انتظاما ت کئے جائیں ۔کافی انتظار کے بعد باالآخر ان کی مانگ پوری ہوئی اور ان کیلئے ناندیڑ سے لکھنوؤ خصوصی ٹرین کا انتظام کیا گیاہے۔ لاک ڈاؤن کے بعد ناندیڑ سے روانہ ہونے والی یہ پہلی ٹرین ہے جو مسافروں کو لیکر جاری ہے۔ واپسی کا انتظام ہونے پر لوگوں میں خوشی اور اطمینان ہے ۔وہیں دوسری طرف ایسے بھی کئی لوگ ملے جنہیں اس خصوصی ٹرین کے انتظامات کے بارے میں پہلے سے کوئی اطلاع نہیں تھی۔ جن لوگوں نے اپنی روانگی کے سلسلے میں ضلع انتظامیہ کے پاس اپنے نام درج کئے تھے اور وہان سے پاس حاصل کیا تھا انہیں ہی ٹرین میں سوار ہونے کا موقع دیا گیا ۔جبکہ جو لوگ ٹرین کی اطلاع سن کر بروقت اسٹیشن پہنچے انہیں مایوسی کا سامنا کرنا پڑرہاہے ۔ان کہنا تھا کہ اگر پیشگی اطلاع مل جاتی تو وہ بھی ضرورری دستاویزات بنالیتے اور واپسی کیلئے تیار ہوجاتے ۔اب دوسری ٹرین کا کب انتظام ہوگا اس کی بھ کوئی اطلاع نہیں ہے۔
First published: May 14, 2020 06:57 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading