உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    Jaisalmer Road Accident: چلتی بس میں آیا خطرناک کرنٹ، 3مسافروں کی موقع پر ہی موت، 5 کی حالت نازک، مچا ہنگامہ

    سی ایم اشوک گہلوت نے حادثے پر افسوس کا اظہار کیا ہے۔ حادثے کے بعد گاؤں والوں کی بڑی تعداد موقع پر جمع ہو گئی۔ حادثہ کا شکار ہونے والے سنت سدارام کے میلے میں شرکت کے بعد واپس آرہے تھے۔ اس دوران حادثہ پیش آیا۔

    سی ایم اشوک گہلوت نے حادثے پر افسوس کا اظہار کیا ہے۔ حادثے کے بعد گاؤں والوں کی بڑی تعداد موقع پر جمع ہو گئی۔ حادثہ کا شکار ہونے والے سنت سدارام کے میلے میں شرکت کے بعد واپس آرہے تھے۔ اس دوران حادثہ پیش آیا۔

    سی ایم اشوک گہلوت نے حادثے پر افسوس کا اظہار کیا ہے۔ حادثے کے بعد گاؤں والوں کی بڑی تعداد موقع پر جمع ہو گئی۔ حادثہ کا شکار ہونے والے سنت سدارام کے میلے میں شرکت کے بعد واپس آرہے تھے۔ اس دوران حادثہ پیش آیا۔

    • Share this:
      جیسلمیر۔ ہندوستان پاکستان سرحد پر واقع جیسلمیر   (Jaisalmer)  ضلع میں آج صبح ایک بڑا حادثہ پیش آیا۔ یہاں ایک بس کرنٹ کی زد میں آ گئی۔ جس کے باعث بس میں سوار 8 مسافر جھلس گئے۔ آٹھ میں سے تین لوگوں  کی موت ہو چکی ہے جبکہ پانچ دیگر زیر علاج ہیں۔ مسافروں میں سے ایک کی حالت تشویشناک ہے۔ سی ایم اشوک گہلوت نے حادثے پر افسوس کا اظہار کیا ہے۔ حادثے کے بعد گاؤں والوں کی بڑی تعداد موقع پر جمع ہو گئی۔ حادثہ کا شکار ہونے والے سنت سدارام کے میلے میں شرکت کے بعد واپس آرہے تھے۔ اس دوران حادثہ پیش آیا۔

      پولیس کے مطابق یہ حادثہ جیسلمیر سے 15 کلومیٹر دور صدر تھانہ علاقے میں صبح 10 بجے پولجی کی ڈیری کے قریب پیش آیا۔ علاقے کے کھنیا اور کھوئیالہ گاؤں کے دیہاتیوں نے ایک پرائیویٹ بس کرائے پر لے کر لوک دیوتا سنت سدارام کے میلے میں شرکت کی۔ یہ حادثہ وہاں سے واپس آتے ہوئے پیش آیا۔ حادثے کے بعد کہرام مچ گیا۔ اطلاع ملتے ہی پولیس اور گاؤں والوں نے موقع پر پہنچ کر صورتحال کو سنبھالا۔
      مہاراشٹر: مسجدوں پر لگے لاؤڈاسپیکر ہٹانے کا راج ٹھاکرے کا مطالبہ، مساجد کے سامنے ایم این ایس نے ہنومان چالیسا بجایا

      بس ڈرائیور نے ہوشیاری سے لیا کام 
      دراصل پولجی کی ڈیری کے قریب سڑک کی اونچائی بڑھانے کا کام جاری ہے۔ اس کے اوپر سے گزرنے والی تاریں تھوڑی نیچے ہو گئی تھیں۔ بس کے اندر کے علاوہ اس کی چھت پر بھی عقیدت مند بیٹھے ہوئے تھے۔ وہاں سے نکلتے وقت بس کی چھت پر بیٹھے مسافر اوپر سے گزرنے والے بجلی کے تاروں کے ساتھ رابطے میں آ گئے۔ جیسے ہی وہ کرنٹ کی لپیٹ میں آیا، کرنٹ پوری بس میں پھیل گیا۔ لیکن پھر بھی ڈرائیور نے بروقت بس کو آگے بڑھایا جس کی وجہ سے کرنٹ کچھ دیر ہی چل سکا۔ لیکن تب تک آٹھ افراد کرنٹ لگنے سے بری طرح جھلس چکے تھے۔

      بس میں بہت زیادہ مسافر تھے۔
      اطلاع ملتے ہی گاؤں والے اور پولیس موقع پر پہنچ گئے اور تمام زخمیوں کو جیسلمیر کے جواہر اسپتال لے گئے۔ وہاں پر ڈاکٹروں نے تین زخمیوں کو مردہ قرار دیا۔ پانچ شدید زخمی اسپتال میں زیر علاج ہیں۔ بعد میں کلکٹر پرتیبھا سنگھ، پولیس سپرنٹنڈنٹ بھنور سنگھ نتھاوت اور ایم ایل اے روپرام دھندیو بھی اسپتال پہنچے  متاثرئن کا حال دریافت کیا۔ ہلاک اور زخمی ہونے والے سبھی میگھوال سماج سے بتائے جا رہے ہیں۔ بتایا جا رہا ہے کہ بس میں بہت زیادہ مسافروں کو بٹھایا گیا تھا۔ بس کے اندر جگہ نہ ہونے پر لوگ اس کی چھت پر بیٹھ گئے۔

      Ramazan 2022: رمضان المبارک میں سحری و افطار کے کھانے میں رکھیں ان چیزوں کا خاص خیال  

       
      Published by:Sana Naeem
      First published: