உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    کورونا وبا کا Hajj 2022 پر بھی اثر، سعودی عرب کے فیصلہ پر ہی حکومت ہند کا انحصار: نقوی

    نقوی نے کہا کہ 2022 کے مکمل عمل آن لائن کیا گیا ہے اور صد فیصد حج نظام میں ڈیجیٹلایشن کو ترجیح دی گئی ہے اور اس میں شفافیت کا بھی خاص خیار رکھا گیا ہے۔

    نقوی نے کہا کہ 2022 کے مکمل عمل آن لائن کیا گیا ہے اور صد فیصد حج نظام میں ڈیجیٹلایشن کو ترجیح دی گئی ہے اور اس میں شفافیت کا بھی خاص خیار رکھا گیا ہے۔

    نقوی نے کہا کہ 2022 کے مکمل عمل آن لائن کیا گیا ہے اور صد فیصد حج نظام میں ڈیجیٹلایشن کو ترجیح دی گئی ہے اور اس میں شفافیت کا بھی خاص خیار رکھا گیا ہے۔

    • Share this:
    ممبئی: اومیکرون اور کورونا وبا کی تیسری لہر کے خطرات کے سبب حج 2022 بھی مشکوک نظر آرہا ہے۔ ابھی تک سعودی عرب Saudi Arabia اور ہندوستانی حکومتوں کے درمیان حج سے متعلق دوطرفہ معاہدہ بھی طے نہیں ہو پایا ہے۔ معائدہ کب تک ہوگا اس متلعق سے بھی سے وضاحت نہیں ہوپارہی ہے۔ اس غیر واضح صورتحال کے درمیان حج کمیٹی آف انڈیا نے حج آپریشن حج مکمل کر نے کا دعوی کرتے ہوئے حج آپریشن کی تیاری شروع کردی ہے۔ تیاریوں کے سلسلے کو آگے بڑھاتے ہوئے مرکزی حج کمیٹی نے دو روزہ حج تربیتی کیمپ کا آج ممبئی کے حج ہاؤس میں انعقاد کیا جس میں مختلف صوبوں سے ٹرینروں اور خادم الحجاج نے شرکت کر کے تربیتی کیمپ میں حصہ لیا۔ کورونا وبا اور اومیکرون کے خطرہ کے باوجود امسال حج کے قوی امکان ہے لیکن یہ کہنا مشکل ہوگا کہ سعودی عربیہ حج کی کیا پالیسی تیار کر تی ہے۔ سعودی عرب کے فیصلہ پر ہی حکومت ہند کا انحصار ہے اس قسم کا اظہار خیالات آج یہاں تربیتی کیمپ کے آغاز کا افتتاح کرتے ہوئے مرکزی وزیر اقلیتی امور مختاس عباس نقوی نے کیا انہوں نے کہا کہ آفت کے خاتمہ اور حجاج کرام کی صحت و سلامتی کی دعا اور احتیاط کے عمل کے ساتھ سفر حج ممکن ہوگا۔

    حج کمیٹی آف انڈیا و سرکار حجاج کرام کی صحت و سلامتی حفاظت کو ترجیح دیتے ہوئے تمام انتظامات کر رہی ہے اور انشا اللہ حج 2022 ضرور ہوگا ہمیں امید ہے کہ یہ جو قدرتی آفت اور وبا کا اسی سال خاتمہ بھی ہوگا۔ نقوی نے کہا کہ 2022 کے مکمل عمل آن لائن کیا گیا ہے اور صد فیصد حج نظام میں ڈیجیٹلایشن کو ترجیح دی گئی ہے اور اس میں شفافیت کا بھی خاص خیار رکھا گیا ہے۔ حج 2022 کیلئے 50ہزار سے زائد عازمین حج نے درخواستیں دی ہیں جس میں 1000 سے زائد بغیر محرم خواتین بھی شامل ہیں جبکہ امسال خادم الحجاج میں 36 حجن خادمہ بھی شامل کی گئی ہیں۔ انہوں نے بتایا کہ حج موبائل ایپ کے معرفت 70 سے 75 فیصد عازمین نے درخواستیں دی ہیں جبکہ متعدد حاجیوں نے آن لائن درخواستیں کی ہیں۔



    مختار عباس نقوی نے کہا کہ سفر حج کیلئے کورونا کی حفاظتی ٹیکہ ضروری ہے اور دونوں ویکسین لگوانے والوں کو ہی حج کی اجازت ہوگی۔ انہوں نے کہا کہ کورونا اصول وضوابط کے ساتھ ہی امسال حج کا سفر ممکن ہوگا اور سعودی گائڈ لائن اور سلامتی اصولوں کے ساتھ ہی ہندوستانی اصولوں کے ساتھ حج سفر کو مکمل کیا جائے گا۔ انہوں نے کہا کہ حج کیلئے کل 21 امبارکیشن پوائنٹ تھے لیکن اب صرف 10 مقامات اور امبارکیشن پوائنٹ سے ہی حجاج کرام کی سفر حج پر روانگی ممکن ہوگی انہوں نے مزید کہا کہ حج کا ہیلتھ کارڈ ای مسیحا صحت کی سہولیات مکہ مدینہ میں قیام کی عمارتوں ٹرانسپورٹیشن کی معلومات ہندوستان ہی ہی فراہم کی جائے گی ساتھ ہی ای علاج ٹیگنگ کی سہولیات بھی میسر ہوگی۔

    ہندوستان اور سعودی عرب میں حج 2022 کیلئے حجاج کیلئے کورونا اور حفظان صحت کے اصولوں پر عمل آوری لازمی ہے۔ نقوی نے کہا کہ بغیر محرم کے تقریبا تین ہزار سے زائد خواتین نے گزشتہ دو برسوں سے درخواست دی تھیں اور امسال ایک ہزار درخواست موصول ہوئی ہیں انہیں بلا قرعہ اندازی کے ہی حج پر روانگی کی اجازت ہوگی۔

    اس موقع پر مرکزی وزارت اقلیتی امور کی جوائنٹ سکریٹری نگار نامہ, سی جی آئی جدہ شاہد عالم اور حج کمیٹی آف انڈیا کے سی ای او یعقوب شیخ اور ریلوے کے پولیس کمشنر قیصر خالد بھی موجود تھے۔ اس تربیتی تقریب میں دو دنوں میں کل 5050 تربیت کیلئے خواستگان جو ذاتی اور ورچوئل طور پر حفظان صحت کے ساتھ حج آپریشن کی تربیت بھی حاصل کر رہے ہیں اس میں سفر حج میں تمام تیاریوں سے لے کر حج کے دوران کیا کریں کیا نہ کریں کی تربیت بھی انہیں دی جارہی ہے۔ یہ خادم الحجاج اپنی ریاستوں میں حجاج کرام کو تربیت فراہم کریں گے۔
    Published by:Sana Naeem
    First published: