உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    فرضی اکاؤنٹ بنا کر فحش باتیں کرکے بلیک میل کرتا تھا یہ گروپ، کھلا راز تو پولیس کے بھی اڑے ہوش

     ان دنوں سوشل میڈیا ایپس پر فحش چیٹ کرکے بلیک میل کیا جارہا ہے۔ بہت سے لوگ اب تک اس کا شکار ہوچکے ہیں۔

    ان دنوں سوشل میڈیا ایپس پر فحش چیٹ کرکے بلیک میل کیا جارہا ہے۔ بہت سے لوگ اب تک اس کا شکار ہوچکے ہیں۔

    ان دنوں سوشل میڈیا ایپس پر فحش چیٹ کرکے بلیک میل کیا جارہا ہے۔ بہت سے لوگ اب تک اس کا شکار ہوچکے ہیں۔

    • Share this:
    سوشل میڈیا کی سائڈ پر کوئی انجان شخص دوست بننا چاہے یا آپ کو دوست بننے کی درخواست بھیجے تو غلطی سے بھی قبول نہ کریں ورنہ آپ پریشانی میں پڑسکتے ہیں اور آپ سے پیسے بھی اینٹھےجا سکتے ہیں۔ کیونکہ ان دنوں سوشل میڈیا ایپس پر فحش چیٹ کرکے بلیک میل کیا جارہا ہے۔ بہت سے لوگ اب تک اس کا شکار ہوچکے ہیں۔ اس بلیک میلنگ کے ذریعے لوگ بلیک میلر فرضی پروفائل بنا کر بہت پیسہ کما رہے ہیں۔مہاراشٹر کے ضلع جلگاؤں سے تعلق رکھنے والے ایک پروفیسر جن کے ساتھ کچھ ایسی ہی جعلسازی کرنے کی کوشش کی گئی تھی۔

    دراصل پروفیسر کے فیس بک اکاؤنٹ پر ایک لڑکی نے ایک جعلی اکاؤنٹ کے ذریعے پروفیسر کو دوست کی درخواست بھیج دی تھی۔جس کو پروفیسر نے قبول کرلیا اور اس جعلی اکاؤنٹ پر ظاہر ہونے والی لڑکی نے پروفیسر کو کچھ فحش تصاویر اور ویڈیوز بھیجی تھیں۔ اس دوران گفتگو ہوئی جب اس لڑکی نے سوشل میڈیا کے اس جعلی اکاؤنٹ پر بات کی تھی تو پروفیسر نے ان تمام فحش تصاویر اور ویڈیوز کے ساتھ جو کچھ کہا تھا وہ سب ریکارڈ کر لیا۔ فحش تصاویر اور ویڈیوز جس میں خود پروفیسر بھی نظر آرہے ہیں۔ اسی بنا پر پروفیسر کو لڑکی کے جعلی اکاؤنٹ سے بلیک میل کرنا شروع کردیا . بلیک میلر نے پروفیسر کو ڈرایا دھمکایا کہ اگرمانگی ہو ئی رقم نہیں دی گئی تو وہ ساری فحش ویڈیوز اور تصاویر دوستوں میں وائرل کردے گی۔ لیکن وقت کے ساتھ پروفیسر وقت سے پہلے سائبر کرائم سے رجوع کیا اور اس معاملے کی شکایت درج کروائی۔

    مہاراشٹر کے جلگاؤں اور نندور ضلع میں تین الگ الگ شکایتوں کے بعد یہاں کے سائبر یونٹ کو الرٹ کردیا گیا ہے اور پولیس بھی ایسے معاملات سے چوکس رہنے کا مشورہ دے رہی ہے. اسی طرح کے درج مقدمات میں بھی مزید تفتیش کی جارہی ہے۔کسی بھی سوشل سائڈ پر آنے والے انجان درخواست سے گریز نہیں کریں گےتو آپ بھی اس کا شکار ہو سکتے ہیں۔ اگر کوئی آپ سے فحش باتیں کرتا ہے تو پھر ان سے پرہیز نہیں کریں گے تو آپ کسی بڑی پریشانی میں پڑ سکتے ہیں۔
    Published by:Sana Naeem
    First published: