ہوم » نیوز » مغربی ہندوستان

شخص نے بچی کی ایف ڈی اور بیوی کے زیور گروی رکھ کر کر ڈالا ایسا مثالی کام: جانیں یہاں

بچوں کی فیس معافی کے ساتھ ساتھ جو ضروت مند خاندان ہیں انہیں اسکول کے ذریعے راشن فراہم کیا۔ طالب علم اور اساتذہ کی ضروریات کو پورا کرنے کے لئے نوجوان نے اپنی بیوی کے زیورات گروی رکھ دیا ساتھ اپنی بچی کے لئے جمع شدہ ایف ڈی رقم بھی لوگوں کی مدد کے لئے خرچ کردی۔

  • Share this:
شخص نے بچی کی ایف ڈی اور بیوی کے زیور گروی رکھ کر کر ڈالا ایسا مثالی کام: جانیں یہاں
بچوں کی فیس معافی کے ساتھ ساتھ جو ضروت مند خاندان ہیں انہیں اسکول کے ذریعے راشن فراہم کیا۔ طالب علم اور اساتذہ کی ضروریات کو پورا کرنے کے لئے نوجوان نے اپنی بیوی کے زیورات گروی رکھ دیا ساتھ اپنی بچی کے لئے جمع شدہ ایف ڈی رقم بھی لوگوں کی مدد کے لئے خرچ کردی۔

جہاں ایک طرف نجی اسکول کورونا قہر میں طالب علم کو ایک پیسہ کی چھوٹ دینے کے لئے تیار نہیں ہے تو وہیں ملاڈ مالونی کے ہولی اسٹار انگلش اسکول کا ایک ایسا نوجوان ہے جس نے اپنے اسکول کے 65 فیصد طلباء کے پورے سال کی فیس معاف کرکے ایک مثال قائم کی گئی ہے۔ بچوں کی فیس معافی کے ساتھ ساتھ جو ضروت مند خاندان ہیں انہیں اسکول کے ذریعے راشن فراہم کیا۔ طالب علم اور اساتذہ کی ضروریات کو پورا کرنے کے لئے نوجوان نے اپنی بیوی کے زیورات گروی رکھ دیا ساتھ اپنی بچی کے لئے جمع شدہ ایف ڈی رقم بھی لوگوں کی مدد کے لئے خرچ کردی۔ تمام اسکول مالکان کوناس نوجوان سے کچھ سیکھنا چاہئے .35 سالہ حسین شیخ جو مالاڈ مالوانی میں ہولی اسٹار انگلش میڈیم اسکول کے پرنسپل اور آنر ہیں۔


اس نوجوان نے کووڈ میں لوگوں کی حالت کو دیکھتےبوئے 1500 طلباء میں سے 1000 طلباء کی ایک سال کی اسکول کی فیس معاف کردی اور باقی 500 طلباء کی فیسوں میں کم سے کم 15٪ سے لے کر 50٪ تک کی فیس میں بھی رعایت دی۔ صرف یہی نہیں وہ ضرورت مند طلبا کے والدین کو اسکول بلا کر راشن کٹس بھی دے رہے ہیں تاکہ کوئی بھوکا نہ رہے.اتنا ہی نہیں بلکہ غریب طلباء اپنی تعلیم جاری رکھیں اس کےلئےاسکول کے باہر ڈونیشن باکس لگا کر اپنے ضرورت مند طلباء کی مالی مدد کے لئے لوگوں سے مدد مانگ رہے ہیں۔


طلباء سے فیس وصول نہ کرنے کی وجہ سے اسکول کی مالی حالت اس قدر خراب ہوگئی ہے کہ اس نوجوان پرنسپل نے اپنی اسکول کے اساتذہ کی تنخواہ ادا کرنے اور اپنا گھر چلانے کے لئے اپنی بیوی کے زیورات بینک میں گروی رکھ دیئے ہیں۔حسین نے اپنے اساتذہ کو بھی اس کام کے لئے راضی کیا کہ وہ نصف تنخواہ میں کام کریں تاکہ وہ اپنے علاقے کے غریب طلباء کی مدد کرسکیں۔ حسین ایک این جی او کی مدد سے گزشتہ ایک سال سے دنیا بھر کے ضرورتمند طلباء اور غریب لوگوں کے گھروں تک راشن کٹ پہنچا رہے ہیں۔


ان کی کاوشوں سے اسکول میں زیر تعلیم والدین کو بڑی راحت ملی ہے۔فیس کی عدم ادائیگی کی وجہ سے بہت سارے بچے اسکول کی تعلیم حاصل نہیں کرسکتے ہیں ، ایسی صورتحال میں وہ تمام طلبہ کو فون کر کے ان کو اسکول بلا رہے ہیں۔ حسین شیخ ، جنہوں نے بیوی کے زیورات اور بچی بچے کے لئے جمع کی گئی ایف ڈی کی رقم تک لوگوں کی مدد کی ہے ، نے لوگوں سے اپیل کی ہے کہ وہ مدد کے لئے اپنا ہاتھ آ گے بڑھا ئیں تاکہ بچے تعلیم حاصل کرسکیں۔
Published by: Sana Naeem
First published: Jul 08, 2021 08:00 PM IST