ہوم » نیوز » مغربی ہندوستان

یکطرفہ محبت کیلئے  نوجوان نے پولیس سے مانگی مدد تو پھر ہوا کچھ ایسا، دیکھ کر سبھی رہ گئے حیران

ایک نوجوان نے ٹویٹر کے ذریعہ یکطرفہ محبت میں پونے پولیس کمشنر امیتابھ گپتا سے مدد مانگی تھی۔ اس پر گپتا کے جواب کی سوشل میڈیا پر تعریف کی جارہی ہے۔ اسی دوران پولیس کی جانب سے متوقع جواب نہ ملنے کے بعد اس نوجوان نے اپنا ٹویٹ حذف کردیا ہے۔

  • Share this:
یکطرفہ محبت کیلئے  نوجوان  نے پولیس سے مانگی مدد تو پھر ہوا کچھ ایسا، دیکھ کر سبھی رہ گئے حیران
ایک نوجوان نے ٹویٹر کے ذریعہ یکطرفہ محبت میں پونے پولیس کمشنر امیتابھ گپتا سے مدد مانگی تھی۔

پونے پولیس کمشنر امیتابھ گپتا 'لیٹ از ٹاک پہل کے تحت ٹوئٹر پر شہریوں کے سوالوں کا جواب دے رہے ہیں۔ گپتا نے کہا کہ یہ شہریوں کے لئے پولیس کے بارے میں سوچ اور ان کی مشکلات کو سمجھنے کے لئے ہے۔ کچھ دن پہلے انہوں نے لوگوں سے اپیل کی کہ وہ ٹویٹر پر ان سے رابطہ قائم کریں۔ کمشنر کو امید ہے کہ اس سے عام لوگوں میں پولیس کی امیج بہتر ہوگی اور لوگ بغیر کسی خوف کے اپنی باتیں کر سکیں گے۔ اس کے تحت انہوں نے یکطرفہ دل لگانے والے نوجوان کے سوالوں کے جواب بھی دئے۔

ایک نوجوان نے ٹویٹر کے ذریعہ یکطرفہ محبت میں پونے پولیس کمشنر امیتابھ گپتا سے مدد مانگی تھی۔ اس پر گپتا کے جواب کی سوشل میڈیا پر تعریف کی جارہی ہے۔ اسی دوران پولیس کی جانب سے متوقع جواب نہ ملنے کے بعد اس نوجوان نے اپنا ٹویٹ حذف کردیا ہے۔

یکطرفہ محبت کے معاملے تو آپ نے سنا ہی ہوگا اور سنتے بھی رپتے ہوں گے لیکن پونے میں سامنے آنے والا معاملہ کچھ مختلف ہے۔ اسی تناظر میں نوجوان نے عشق کے نام پر بدتمیزی کے بجائے پولیس سے مشورہ لیا۔ تاہم یہ الگ بات ہے کہ پولیس اس کی مدد نہیں کرسکتی ہے لیکن اس نے اسے باور کرایا کہ اس لڑکی کا نہ تو کوئی مطلب ہے اور نہ ہی اس کا کوئی مطلب ہے۔ نوجوان کا تعلق پونے سے ہے اور پولیس کے جوابی ٹویٹ کے بعد اس نے اپنا ٹویٹ ڈیلیٹ کردیا ہے۔



پونے پولیس کمشنر امیتابھ گپتا کے ایک نوجوان نے ٹویٹر کے ذریعہ یکطرفہ محبت میں مدد طلب کی۔ اس طرح کے ٹویٹ دیکھ کر گپتا کو بھی کچھ عجیب سا لگا لیکن انہوں نے جواب دینا ضروری سمجھا۔ انہوں نے لکھا ، 'بدقسمتی سے ، ہم اس کی رضامندی کے بغیر آپ کی مدد نہیں کرسکتے ہیں۔ نہ ہی آپ اس کی مرضی کے خلاف کچھ بھی کریں۔ اگر کسی دن وہ راضی ہوجاتی ہے تو ہماری نیک خواہشات آپ کے ساتھ ہیں۔ نا کا مطلب ہے ناہی ہوتا ہے '۔

پولیس کمشنر کے انوکھے جواب پر سوشل میڈیا صارفین مختلف طریقوں سے اپنا رد عمل ظاہر کررہے ہیں۔ کچھ لوگوں نے اس کے لئے پولیس کی تعریف کی ہے۔ اسی کے ساتھ ہی ،کچھ کہتے ہیں کہ کمشنر کو ایسے سوالات پر وقت ضائع نہیں کرنا چاہئے۔ پولیس کے جواب کے بعد عاشق نوجوان نے اپنا ٹویٹ حذف کردیا ہے۔ وہ بھی سمجھ گیا ہوگا کہ اسے اس معاملے میں کوئی مدد نہیں مل سکتی ہے اور نہ ہی وہ لڑکی کی مرضی کے خلاف کوئی قدم اٹھا سکتا ہے۔

رپورٹ: وسیم انصاری
Published by: Sana Naeem
First published: Mar 09, 2021 07:48 PM IST