ہوم » نیوز » مغربی ہندوستان

ممبئی کا یہ مدرسہ دے گا مسلم نوجوانوں کو پولیس بھرتی امتحان کی ٹریننگ 

مدرسہ قادریہ نے 200 نوجوانوں کو غیر سرکاری سطح پر ٹریننگ دینے کا فیصلہ کیا ہے تاکہ پولیس فورس میں اقلیتی طبقے کی نمائندگی کو موثر بنایا جائے۔ ممبا دیوی حلقہ ء انتخاب سے کانگریس کے رکن اسمبلی امین پٹیل بھی مدرسہ قادریہ کی اس پہل میں شامل ہیں۔

  • Share this:
ممبئی کا یہ مدرسہ دے گا مسلم نوجوانوں کو پولیس بھرتی امتحان کی ٹریننگ 
ممبئی کا یہ مدرسہ دے گا مسلم نوجوانوں کو پولیس بھرتی امتحان کی ٹریننگ 

ممبئی کا مدرسہ جامعہ اشرفیہ قادریہ واقع گرانٹ روڑ ممبئی اسلامی تعلیم کی فراہمی کے علاوہ ایک بڑا کام انجام دینے جارہا ہے۔ جامعہ اشرفیہ قادریہ نے اس سال ریاست کے 200 مسلم نوجوانوں کو مفت میں پولیس کانسٹیبل بھرتی کی ٹریننگ فراہم کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔ مدرسے کی جانب سے پولیس ٹریننگ کی کوچنگ کیلئے پروسیس شروع ہوچکا ہے اور ابھی تک تقریباََ 1300 بچوں کے عریضے موصول ہوچکے ہیں۔ ان میں سے 200 نوجوانوں کا سلیکشن عمل میں آئیگا۔ جامعہ اشرفیہ قادریہ کے روح رواں مولانا معین الدین اشرف نے کہا کہ 200 پری امتحان کوچنگ میں منتخب ہونے والے نوجوانوں کے لئے جامعہ مدرسہ قادریہ میں مع طعام و قیام کا انتظام کیا جائیگا۔


واضح رہے کہ حکومت مہاراشٹر کی جانب سے ریاست کے 36 اضلاع میں اقلیتی طلبہ و طالبات کیلئے پری ریکروٹمنٹ ٹریننگ کے نام پر ترتبیتی کیمپ کا انعقاد کیا جاتا ہے۔ مدرسہ قادریہ نے 200 نوجوانوں کو غیر سرکاری سطح پر ٹریننگ دینے کا فیصلہ کیا ہے تاکہ پولیس فورس میں اقلیتی طبقے کی نمائندگی کو موثر بنایا جائے۔ ممبا دیوی حلقہ ء انتخاب سے کانگریس کے رکن اسمبلی امین پٹیل بھی مدرسہ قادریہ کی اس پہل میں شامل ہیں۔


امین پٹیل نے نیوز18 اردو کو بتایا کہ مدرسہ قادریہ پرائیویٹ کوچنگ انسٹی ٹیوٹ کی مدد لےگا اور نوجوانوں کو پولیس بھرتی کیلئے تیار کریگا۔ ممبئی کے معروف سماجی کارکن اور ملی تنظیموں سے وابستہ ایم اے خالد نے بتایا کہ مدرسہ جامعہ اشرفیہ قادریہ کی کوشش یقیناً قابل ستائش ہے۔ مدرسے کی کوشش رنگ لائے گی اور دیگر ادارے بھی اس طرح کے کام انجام دینگے۔ خالد نے کہا کہ ریاست مہاراشٹر میں پولیس میں بھرتی ہونے والے مسلم نوجوانوں کے سامنے مراٹھی زبان ایک بڑا چیلنج بن کر سامنے آتی ہے ۔ ریاست کے مسلم نوجوانوں کی اکثریت اردو میڈیم اسکولوں سے تعلیم حاصل کرتی ہے اور انہیں پولیس کانسٹیبل امتحان میں دقتوں کا سامنا کرنا پڑتا ہے۔ جامعہ قادریہ ان کے اس لسانی مسئلے کو حل کرنے کی مکمل کوشیش کریگا۔


مہاراشٹر پولیس میں آئی جی قیصر خالد نے جامعہ قادریہ کی کوشش کی ستائش کرتے ہوئے کہا کہ پولیس میں اقلیتی طبقے کی موثر نمائندگی کی ضرورت بہت پہلے ہی محسوس کی جارہی تھی۔ پولیس میں اقلیتی طبقے کی نمائندگی سماجی غلط فہمیوں کا ازالہ کرے گی اور کمیونٹیوں کے درمیان یقین اور اعتماد کی فضا ہموار کرنے میں مددگار ثابت ہوگی۔
Published by: Nadeem Ahmad
First published: Sep 15, 2020 01:31 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading