உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    مہاراشٹر میں مسلم ریزرویشن کی فراہمی کے متعلق مہاوکاس اگھاڑی کا یوٹرن

    واضح رہے کہ گذشتہ دنوں مہاراشٹر میں مسلم ریزرویشن کے مطالبے کولیکر ایم آئی ایم رکن اسمبلی امتیازجلیل کی قیادت میں اورنگ آباد سے ممبئی کیلئے ترنگا ریلی نکالی گئی تھی اور اس مطالباتی ریلی میں ہزاروں افراد نے شرکت کرتے ہوئے مسلم ریزویشن کا مطالبہ کیا تھا۔

    واضح رہے کہ گذشتہ دنوں مہاراشٹر میں مسلم ریزرویشن کے مطالبے کولیکر ایم آئی ایم رکن اسمبلی امتیازجلیل کی قیادت میں اورنگ آباد سے ممبئی کیلئے ترنگا ریلی نکالی گئی تھی اور اس مطالباتی ریلی میں ہزاروں افراد نے شرکت کرتے ہوئے مسلم ریزویشن کا مطالبہ کیا تھا۔

    واضح رہے کہ گذشتہ دنوں مہاراشٹر میں مسلم ریزرویشن کے مطالبے کولیکر ایم آئی ایم رکن اسمبلی امتیازجلیل کی قیادت میں اورنگ آباد سے ممبئی کیلئے ترنگا ریلی نکالی گئی تھی اور اس مطالباتی ریلی میں ہزاروں افراد نے شرکت کرتے ہوئے مسلم ریزویشن کا مطالبہ کیا تھا۔

    • Share this:
    ممبئی: مہاراشٹر میں مسلمانوں کو پسماندگی کی بنیاد پر پانچ فیصد ریزرویشن فراہم کرنے کے معاملے میں کانگریس این سی پی اور شیوسینا کی مشترکہ مہاوکاس آگھاڑی حکومت نے یوٹرن لیتے ہوئے ریزرویشن کی گیند مرکزی حکومت کے پالے میں ڈال دی ہے۔ مہاراشٹر اسمبلی کے سرمائی اجلاس کے دوسرے روز حکومت مہاراشٹر میں اقلیتی امور کے کابینی وزیر نواب ملک نے مسلم ریزوریشن  muslim reservation  کے متعلق ایوان میں جواب دیتے ہوئے کہاکہ پچاس فیصد ریزرویشن کی بندش کے سبب موجودہ حالات میں مہاراشٹرمیں مسلمانوں کو پانچ فیصد ریزرویشن نہیں دیا جاسکتاہے۔ سماج وادی پارٹی کے رکن اسمبلی ابوعاصم اعظمی اور کانگریس رکن اسمبلی امین پٹیل کے مسلم ریزرویشن کے متعلق سوال کا جواب دیتے ہوئے اقلیتی امور کے کابینی وزیر نواب ملک نے ایوان کو بتایا کہ پیشرکانگریس این سی پی کی حکومت نے مراٹھا سماج کو 16 فیصد اور مسلم سماج کو پانچ فیصد ریزرویشن فراہم کیا تھا لیکن قانون سازی کے بعد بھی سپریم کورٹ نے مراٹھا سماج کے ریزویشن کو کالعدم قراردیا اور گذشتہ دنوں ضلع پریشداور میونسپلٹی انتخابات میں بھی سپریم کورٹ نے اوبی سی ریزرویشن کو ختم کردیا۔ نواب ملک نے اندراجئے سنگھ سپریم کورٹ کے آرڈرحوالہ دیتے ہوئے کہاکہ ریاست میں 50 فیصد سے زیادہ ریزرویشن نہیں دیا جاسکتا۔ ہم نے باربار مرکزی حکومت سے مطالبہ کیا ہیکہ دستور میں ترمیم کرکے ریزرویشن کی حد میں اضافہ کیا جائے۔ اگر دستوری لحاظ سے ریزرویشن کی حد میں پچاس فیصد سے زیادہ اضافہ کیا جاتا ہے تومراٹھا اور مسلم سماج کو ریزرویشن فراہم کرنے کی راہ ہموار ہوسکتی ہے لیکن یہ مطالبہ ابھی تک مرکزی حکومت کے پاس زیرالتواہے۔

    مہاراشٹر اسمبلی کے سرمائی اجلاس کے دوسرے روز ابوعاصم اعظمی نے ایوان میں مسلم ریزرویشن کا معاملہ اٹھاتے ہوئے مہاوکاس آگھاڑی سرکار سے پانچ  فیصد مسلم ریزرویشن فراہم کرنے کا مطالبہ کیا۔ابوعاصم اعظمی ایوان میں خطاب کرتے ہوئے کہاکہ گذشتہ فڑنویس حکومت میں کانگریس اور این سی پی نے مسلم ریزرویشن کا پرزور مطالبہ کیا تھا جبکہ بامبے ہائی کورٹ نے مسلمانوں کو پانچ فیصد ریزرویشن دینے کی بات کہی تھی اس کے باوجود کانگریس این سی پی کی مہاوکاس آگھاڑی حکومت آنے کے باوجود مسلمانوں کو پانچ فیصد ریزرویشن نہیں دیا جارہا ہے اور ناہی مسلم ریزرویشن کے معاملے پر بات کی جارہی ہے۔ ابوعاصم اعظمی کے سوال کے جواب میں نواب ملک نے ریزرویشن کی پچاس فیصد حد کا حوالہ دیتے ہوئے موجودہ صورت حال میں مسلم ریزرویشن کو فراہم کرنا ناممکن ہےمہاراشٹر اسمبلی میں مسلم ریزویشن کے متعلق جاری بحث میں مجلس اتحادالمسلمین کے رکن اسمبلی کی خاموشی پر ایم آئی ایم کو نشانہ بنایا جارہا ہے۔

    واضح رہے کہ گذشتہ دنوں مہاراشٹر میں مسلم ریزرویشن کے مطالبے کولیکر ایم آئی ایم رکن اسمبلی امتیازجلیل کی قیادت میں اورنگ آباد سے ممبئی کیلئے ترنگا ریلی نکالی گئی تھی اور اس مطالباتی ریلی میں ہزاروں افراد نے شرکت کرتے ہوئے مسلم ریزویشن کا مطالبہ کیا تھا۔ لیکن جس وقت اسمبلی میں مسلم ریزرویشن پر بحث جاری تھی اس وقت مالیگاؤں سے مجلس اتحادالمسلمین کے رکن اسمبلی مفتی محمد اسماعیل خاموش تھے۔ جب اس تعلق سے وضاحت کیلئے مفتی محمد اسماعیل سے رابطہ کیا گیا تو انہوں نے کہاکہ وہ اس وقت اسمبلی میں موجود تھے اور مسلم ریزوریشن پر بولنے کیلئے بولنا چاہتے تھے۔

    انہوں نے اجازت بھی طلب کی تھی لیکن انہیں اسمبلی میں بولنے کا موقع نہیں دیا گیا۔ انہوں نے کہاکہ آئندہ بحث میں مسلم ریزرویشن معاملے پر آواز بلند کی جائیگی۔کانگریس لیڈر اور سابق کابینی وزیربرائے اقلیتی امور محمد عارف نسیم خان نے بھی مسلمانوں کو پسماندگی کی بنیادپر پانچ فیصد ریزرویشن فراہم کرنے کا مطالبہ اپنی حکومت سے کیا ہے۔ عارف نسیم خان نے کہاکہ پیشتر کانگریس این سی پی حکومت نے مراٹھا سماج کے ساتھ مسلم سماج کو بھی پانچ فیصد ریزرویشن فراہم کیا تھا نسیم خان نے اسے بحال کرنے کا مطالبہ دوہرایا۔ دوسری جانب کانگریس کے رکن اسمبلی امین پٹیل نے بھی ایوان اسمبلی میں مسلم ریزرویشن کے متعلق بحث میں حصہ لیتے ہوئے پسماندگی کی بنیادپرمسلمانوں کو پانچ فیصد ریزرویشن کرنے کا مطالبہ کیا۔

    قومی، بین الاقوامی اور جموں وکشمیر کی تازہ ترین خبروں کےعلاوہ تعلیم و روزگار اور بزنس کی خبروں کے لیے نیوز18 اردو کو ٹویٹر اور فیس بک پر فالو کریں ۔

     
    Published by:Sana Naeem
    First published: