ہوم » نیوز » مغربی ہندوستان

کنہیا کی حمایت میں ادے پور کالج میں پرچہ تقسیم کرنے والے نوجوانوں کی جم کر پٹائی

جے پور : ادے پور کے سائنس کالج میں جمعرات کو اس وقت ہنگامہ ہو گیا ، جب کالج کے کیمپس میں کچھ نوجوان جے این یو کے صدر کنہیا کی حمایت میں پرچے تقسیم کرنے کیلئے پہنچے۔

  • ETV
  • Last Updated: Feb 18, 2016 05:44 PM IST
  • Share this:
  • author image
    NEWS18-Urdu
کنہیا کی حمایت میں ادے پور کالج میں پرچہ تقسیم کرنے والے نوجوانوں کی جم کر پٹائی
جے پور : ادے پور کے سائنس کالج میں جمعرات کو اس وقت ہنگامہ ہو گیا ، جب کالج کے کیمپس میں کچھ نوجوان جے این یو کے صدر کنہیا کی حمایت میں پرچے تقسیم کرنے کیلئے پہنچے۔

جے پور : ادے پور کے سائنس کالج میں جمعرات کو اس وقت ہنگامہ ہو گیا ، جب کالج کے کیمپس میں کچھ نوجوان جے این یو کے صدر کنہیا کی حمایت میں پرچے تقسیم کرنے کیلئے پہنچے۔


اس دوران وہاں موجود طلبہ نے پرچہ تقسیم کررہے نوجوانوں کی جم کر پٹائی کردی۔ کالج میں ہنگامہ کی اطلاع پر بھوپال پورہ تھانہ پولیس فورا ہی جائے واقعہ پر پہنچ گئی ، لیکن اس وقت تک پرچہ تقسیم کرنے والے نوجوان اور دیگر طلبہ فرار ہوچکے تھے ۔تاہم یہ پورا ہنگامہ کالج کیمپس میں نصب سی سی ٹی وی کیمرے میں قید ہوگیا اور اب پولیس اسی کی بنیاد پر کیس کی جانچ کر رہی ہے۔


پرچوں میں جے این یو طلبہ یونین کے صدر کنہیا کی حمایت کی گئی ہے اور ساتھ ہی ساتھ افضل گورو کے معاملہ پر مودی حکومت پر سنگین الزامات عائد کئے گئے ہیں۔ یہی نہیں جے این یو اور روہت ویمولا کے معاملہ پر ہنگامہ کے پیچھے مرکزی حکومت اور اکھل بھارتیہ ودیارتھی پریشد اے بی وی پی کو ذمہ دار ٹھہرایا گیا ہے۔


پولیس اب سی سی ٹی وی کیمرے کی بنیاد پر پرچہ تقسیم کرنے والے نوجوانوں کی تلاش کر رہی ہے۔ بتایا جارہا ہے کہ پرچہ تقسیم کرنے کیلئے آئے نوجوان کالج کے طلبہ نہیں تھے ۔ تاہم اس کی سچائی سی سی ٹی وی فوٹیج کی جانچ کے بعد ہی سامنے آئے گی۔

First published: Feb 18, 2016 05:44 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading