உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    اردو گھر کی تعمیر سے قبل ہی دعویداری شروع ، کانگریس اور ایم آئی ایم کے بعد اب ممبئی یونیورسٹی شعبہ اردو بھی میدان میں

    ممبئی میں اردو گھر کی تعمیر سے قبل ہی اس کی دعویداری شروع ہوگئی ہے۔اردو گھر کی تعمیر کے معاملہ میں ایم آئی ایم اور کانگریس کے درمیان جاری کھینچ تان کے درمیان اب ممبئی یونیورسٹی کا شعبہ اردو بھی کود پڑا ہے۔

    ممبئی میں اردو گھر کی تعمیر سے قبل ہی اس کی دعویداری شروع ہوگئی ہے۔اردو گھر کی تعمیر کے معاملہ میں ایم آئی ایم اور کانگریس کے درمیان جاری کھینچ تان کے درمیان اب ممبئی یونیورسٹی کا شعبہ اردو بھی کود پڑا ہے۔

    ممبئی میں اردو گھر کی تعمیر سے قبل ہی اس کی دعویداری شروع ہوگئی ہے۔اردو گھر کی تعمیر کے معاملہ میں ایم آئی ایم اور کانگریس کے درمیان جاری کھینچ تان کے درمیان اب ممبئی یونیورسٹی کا شعبہ اردو بھی کود پڑا ہے۔

    • Share this:
      ممبئی میں اردو گھر کی تعمیر سے قبل ہی اس کی دعویداری شروع ہوگئی ہے۔اردو گھر کی تعمیر کے معاملہ میں ایم آئی ایم اور کانگریس کے درمیان جاری کھینچ تان کے درمیان اب ممبئی یونیورسٹی کا شعبہ اردو بھی کود پڑا ہے۔شعبہ اردو کا کہنا ہے کہ ممبئی یونیورسٹی کے کا لینہ کیمپس میں اردو بھون کی تعمیر ضروری ہے ۔ جبکہ ایم آئی ایم بائیکہ میں اردو گھرکی تعمیر پر بضد ہے۔
      ممبئی کے بائیکلہ سے ایم آئی ایم کے رکن اسمبلی وارث پٹھان ان کے حلقہ انتخاب میں اردو گھر کی تعمیر کروانے کے خواہش مند ہیں۔ اس کیلئے انہوں نے جگہ کا بھی انتخاب کرلیا ہے۔ اردو زبان کے نام پر 50 کروڑ کی لاگت سے تیار ہونے والی عمارت پر ممبئی یونیورسٹی کے شعبہ اردو نے بھی دعوی کیا ہے۔
      ممبئی یونیورسٹی کے صدر شعبہ اردو صاحب علی کا کہنا ہے کہ اگر کالینہ کیمپس میں اردو بھون تعمیر ہوتا ہے ، تو اس کا فائدہ یونیورسٹی کے اردو زبان و ادب کے طلبہ و طالبات کو بھی ہوگا ۔ واضح رہے کہ اس قبل کی کانگریس -این سی پی حکومت میں ممبئی یونیورسٹی کے کالینہ کیمپس میں اردو بھون کی تعمیر کیلئے بھومی پوجن بھی ہوئی تھی ، لیکن سرکار بدلتے ہی حکومت کے ارادے بدل گئے ۔
      اردو بھون یا اردو گھر کی تعمیر کا فیصلہ اب ریاست کی بی جے پی سرکار کے ہاتھ میں ہے ۔ وزیر اعلی مہاراشٹر دیویندرفرنویس نے ایم آئی ایم رکن اسمبلی وارث پٹھان کے حلقہ انتخاب بائیکہ میں اردو گھر کی تعمیر کا شگوفہ بھی چھوڑا ہے۔ اب یہ دیکھنا اہم ہوگا کہ یہ وعدہ ریاست کے اسمبلی انتخابات سے قبل پورا ہوتا ہے یا صرف سیاسی نعرہ ہی بن کے رہے جاتا ہے۔
      محی الدین کی رپورٹ
      First published: