உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    Explained: مردوں میں چھاتی کا کینسر (breast cancer) کیوں ہوتا ہے؟ نشانیاں اور علامات کیا ہیں؟ جانیے تفصیلات

    کینسر کا علاج اور دوا ٹیومر کے سائز پر منحصر ہے۔ اسی لیے ڈاکٹر ممکنہ طور پر اس کے ٹسٹ کے بعد ہی علاج تجویز کرے گا۔

    کینسر کا علاج اور دوا ٹیومر کے سائز پر منحصر ہے۔ اسی لیے ڈاکٹر ممکنہ طور پر اس کے ٹسٹ کے بعد ہی علاج تجویز کرے گا۔

    اگر کسی کو چھاتی کے کینسر ہوجائے تو اس سے شفا یاب ہونے کے امکانات ہیں۔ اسی لیے اس کے ابتدا کے وقت ہی اپنے خاندانی یا ماہر ڈاکٹر سے مشورہ ضروری ہے۔ اسی ضمن میں اپنے آپ کو مردانہ چھاتی کے کینسر (male breast cancer) کی علامات اور خطرات سے آگاہ کرنا چاہیے۔ یہاں مکمل تفصیلات پیش ہیں:

    • Share this:
      اگرچہ ہم سب خواتین میں چھاتی کے کینسر (breast cancer) کے خطرات سے واقف ہیں، لیکن ہم اکثر مردوں میں چھاتی کے کینسر کے امکانات کو نظر انداز کر دیتے ہیں۔ اگرچہ شاذ و نادر ہی مرد بھی کینسر زدہ چھاتی میں مبتلا ہو سکتے ہیں۔ کلینیکل شواہد بتاتے ہیں کہ چھاتی کے تمام کینسر میں سے 1 فیصد سے بھی کم مردوں میں پائے جاتے ہیں۔

      ایک اندازہ کے مطابق ہر سال دنیا بھر میں تقریباً 2,650 مردوں میں چھاتی کے کینسر کی تشخیص ہونے کا خدشہ ہے اور 530 مردوں کے اس سے مرنے کا خدشہ بھی ہے۔ لہٰذا اگر یہ ہوجائے تو اس سے مکمل طورپر شفا یاب ہونے کے امکانات کم ہیں۔ اسی لیے اس کے ابتدا کے وقت ہی اپنے خاندانی یا ماہر ڈاکٹر سے مشورہ ضروری ہے۔ اسی ضمن میں اپنے آپ کو مردانہ چھاتی کے کینسر (male breast cancer) کی علامات اور خطرات سے آگاہ کرنا چاہیے۔

      اگرچہ مردوں میں چھاتی کا کینسر موروثی عنصر نہیں ہے، لیکن خاندان میں چھاتی کے کینسر کی تاریخ کا مطلب ہے کہ کینسر ہونے کے زیادہ امکانات ہیں۔
      اگرچہ مردوں میں چھاتی کا کینسر موروثی عنصر نہیں ہے، لیکن خاندان میں چھاتی کے کینسر کی تاریخ کا مطلب ہے کہ کینسر ہونے کے زیادہ امکانات ہیں۔


      امریکی مرکز برائے بیماریوں کے کنٹرول اور روک تھام (Centre for Disease Control and Prevention) کے مطابق ’’چھاتی کے کینسر کا خطرہ عمر کے ساتھ بڑھتا ہے‘‘۔ مذکورہ صحت کی ایجنسی کا مشورہ ہے کہ زیادہ تر چھاتی کے کینسر 50 سال کی عمر کے بعد پائے جاتے ہیں۔ اس نے کہا ہے کہ باقاعدگی سے چھاتی کی اسکریننگ (breast screenings) مردوں میں چھاتی کے کینسر کے خطرات کی کسی بھی علامت کا پتہ لگانے کا ایک موثر طریقہ ہو سکتا ہے۔

      مردوں میں چھاتی کے کینسر کی بہت سی علامات ہیں۔ امریکن کینسر سوسائٹی (ACS) کے مطابق مردوں میں چھاتی کے کینسر کی کچھ عام علامات ذیل میں ہیں۔

      - چھاتی میں بنا درد کے گانٹھ

      - پستان کا پیچھے ہٹنا، السر ہونا اور خارج ہونا

      - چھاتی کا ڈمپلنگ

      - چھاتی یا پستان کی جلد کی رنگت

      اگرچہ اوپر بتائی گئی علامات چھاتی کے کینسر کی ابتدائی انتباہی علامات ہیں، لیکن کچھ علامات ایسی ہیں جو بتا سکتی ہیں کہ کینسر پھیل رہا ہے۔ لمف نوڈس lymph nodes میں سوجن، چھاتی میں درد اور ہڈیوں میں درد کا مطلب کچھ زیادہ سنگین ہو سکتا ہے۔

      سی ڈی سی تین قسم کے چھاتی کے کینسر کی تجویز کرتا ہے جن کا پتہ چلایا جاسکتا ہے اور مردوں میں تشخیص کیا جا سکتا ہے۔

      - آنوائس ڈکٹل کارسنوما (Invasive ductal carcinoma): اس قسم کا چھاتی کا کینسر نالیوں میں شروع ہوتا ہے اور پھر نالیوں کے باہر چھاتی کے ٹشوز کے دوسرے حصوں میں بڑھتا ہے۔

      مجموعی طور پر مردوں میں کینسر کم ہوتا ہے، اس لیے ہوشیار رہنا چاہیے، لیکن گھبرانا نہیں چاہیے۔
      مجموعی طور پر مردوں میں کینسر کم ہوتا ہے، اس لیے ہوشیار رہنا چاہیے، لیکن گھبرانا نہیں چاہیے۔


      - آنوائس لوبولر کارسنوما (Invasive lobular carcinoma): کینسر کے خلیے lobules میں شروع ہوتے ہیں اور پھر قریب سے بنے ہوئے چھاتی کے ٹشوز میں پھیل جاتے ہیں۔

      - ڈکٹل کارسنوما ان سیٹو (DCIS): یہ ناگوار چھاتی کے کینسر کا باعث بن سکتے ہیں، کیونکہ یہ صرف نالیوں کے استر میں ہوتے ہیں اور چھاتی کے دیگر بافتوں میں نہیں پھیلتے ہیں۔

      مردوں اور عورتوں میں چھاتی کے کینسر کی تشخیص میموگرام، الٹراساؤنڈ، نپل ڈسچارج ٹیسٹ یا بائیوپسی کی مدد سے کی جا سکتی ہے۔ چھاتی کا باقاعدگی سے خود معائنہ کرنے سے بھی تشخیص میں مدد مل سکتی ہے۔

      چھاتی کا کینسر جینیاتی تغیرات کا نتیجہ بھی ہو سکتا ہے۔ چھاتی کے کینسر کی مضبوط خاندانی تاریخ مرد کے اسی حالت میں ہونے کے خطرے کو بڑھا سکتی ہے۔ جن مردوں کو وراثت میں غیر معمولی BRCA1 یا BRCA2 جین ملتے ہیں ان میں مردانہ چھاتی کے کینسر کا خطرہ بڑھ جاتا ہے۔ تاہم جینیاتی تغیرات ہی واحد عنصر نہیں ہیں جو مردوں میں چھاتی کے کینسر کا باعث بن سکتے ہیں۔اس کا علاج اور دوا ٹیومر کے سائز پر منحصر ہے۔ ڈاکٹر ممکنہ طور پر علاج تجویز کرے گا۔ سرجری، کیموتھراپی، تابکاری تھراپی، ہارمون تھراپی اور ٹارگٹڈ تھراپی چھاتی کے کینسر کے کچھ دستیاب علاج ہیں۔

      مردوں میں چھاتی کے کینسر سے متعلق کچھ اہم سوالات اور ان کے جوابات پیش ہیں:

      کیا مردوں میں چھاتی کا کینسر موروثی ہوتا ہے؟

      اگرچہ موروثی عنصر نہیں ہے، لیکن خاندان میں چھاتی کے کینسر کی تاریخ کا مطلب ہے کہ کینسر ہونے کے زیادہ امکانات ہیں۔ اگر کسی مرد کی ماں کو چھاتی کا کینسر ہوتا ہے تو اس کے کینسر ہونے کے امکانات دوسروں سے زیادہ ہوتے ہیں۔ لیکن مجموعی طور پر مردوں میں ایسا کم ہوتا ہے، اس لیے ہوشیار رہنا چاہیے، لیکن گھبرانا نہیں۔

      خاندانی تاریخ کے علاوہ مردوں کو عام طور پر چھاتی کے کینسر سے بچنے کے لیے کس چیز پر دھیان دینا چاہیے؟

      اگر کسی کو بھی بی آر سی اے میوٹیشن (BRCA mutation) مثبت ہو تو اسے ہوشیار رہنا چاہیے کیونکہ ان میں چھاتی کے کینسر ہونے کے امکانات زیادہ ہوتے ہیں۔ یہ تبدیلی صرف خون کے ٹیسٹ کے ذریعے پائی جاتی ہے اور یہ بہت کم ہے۔

      چھاتی کا کینسر کس عمر میں زیادہ خطرے کا باعث ہوتا ہے؟

      ۔40 سے 60 سال کی عمر کے درمیانی عمر کے مرد وہ ہیں جو چھاتی کے کینسر میں مبتلا ہوسکتے ہیں۔ Gynecomastia نامی غدود، مردوں میں چھاتی کے غدود کے ٹشوز کی مقدار میں اضافہ کرتا ہے۔ اس کے علاوہ خاندان میں چھاتی کے کینسر کی تاریخ، موٹاپا، خراب طرز زندگی کو بھی کینسر کے خلیات کو ختم کرنے کی وجوہات بتائی جاتی ہیں۔

      مرد چھاتی کے کینسر کے علاج کیا ہیں؟

      کیموتھراپی کے بعد ٹشو سکڑنا، کینسر کے ٹشو کو جراحی سے ہٹانا اور ہارمون تھراپی کے ساتھ ریڈی ایشن تھراپی علاج کی حکمت عملی ہے۔ باقاعدہ وقفوں پر فالو اپ ہوگا اور اس کا علاج ہے۔
      Published by:Mohammad Rahman Pasha
      First published: