உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    EID SPECIAL: جسم پر نئے کپڑے، سر پر ٹوپی اور عطر لگاکر عیدگاہ جانے کو عید نہیں کہتے

    Youtube Video

    EID SPECIAL: عید کا مطلب بچوں کے جسم پر نئے کپڑوں اور ہونٹوں پر نئی مٹھاس کا دن ہے۔ عید کی خوشیاں ماہ رمضان میں کثرت سے کی گئی عبادت، ریاضت، اللہ تبارک و تعالیٰ سے معذرت اور اللہ کے بندوں سے صدق دل سے کی گئی محبت کا صلہ ہے۔ جو لا محدود ہے۔ عظیم ہے۔ جس کا اجر اللہ خود اپنے بندوں کو دیتا ہے۔

    • Share this:
      Eid Ul Fitr 2022:عید کا مطلب خوشی کا دن، عید کا مطلب ہے اللہ کی طرف سے انعام حاصل کرنے کا خاص دن، عید پوری دنیا میں جشن منانے کا خاص دن، عید کا مطلب غریبوں اور مساکین کے چہروں پر خوشیوں کو چمکانے کا دن، عید کا مطلب ہے مفلس اور محتاجوں کی مزاج پرسی کا دن۔ عید کا مطلب بچوں کے جسم پر نئے کپڑوں اور ہونٹوں پر نئی مٹھاس کا دن ہے۔ عید کی خوشیاں ماہ رمضان میں کثرت سے کی گئی عبادت، ریاضت، اللہ تبارک و تعالیٰ سے معذرت اور اللہ کے بندوں سے صدق دل سے کی گئی محبت کا صلہ ہے۔ جو لا محدود ہے۔ عظیم ہے۔ جس کا اجر اللہ خود اپنے بندوں کو دیتا ہے۔

      ایسی نوازشوں میں اللہ کے بندوں سے رضا اور محبت شامل ہوتی ہے۔ نمازوں کے ثواب کے لیے عید پر اللہ کی رحمت برستی ہے۔ یہ مومنوں کے لیے سب سے بڑا انعام ہے۔ عید کی خوشیوں کا انتظار تو سال بھر رہتا ہے لیکن اصل خوشی ایمان کی دولت سے ملتی ہے۔ جس کی تمام نعمتیں نماز پر ہیں۔ جو رمضان میں اللہ کی عبادت کرتے ہیں۔ یہ عید ان لوگوں کے لیے سب سے شاندار ہے جو اللہ کے بندوں کے لیے دل سے نفرت اور بغض نکال کر محبت کرتے ہیں۔ عید انسانیت کا پیغام دیتی ہے۔ چاند نظر آنے سے لے کر عیدگاہ کی زیارت تک غریبوں اور مسکینوں کا خیال رکھنا بار بار دہرایا گیا ہے۔ صدقہ فطر عید سے پہلے دینا بہت ضروری ہے۔ کیونکہ یہ مسکینوں کا حق ہے۔

      یہ بھی پڑھیں:
      Eid al-Fitr 2022: ملک بھر میں آج منائی جائے گی عید الفطر، وزیر اعظم مودی نے دی مبارکباد

      یہ بھی پڑھیں:
      Eid-Ul-Fitr 2022: یوپی میں 31 ہزار سے زیادہ مقامات پر ہوگی نماز ادا، مسجدیں سجی

      اللہ تعالیٰ فرماتا ہے جب تک بندہ صدقہ فطر ادا نہ کرے۔ اس کی نماز ادا نہیں ہوگی، یہ عظیم مقام ہے صدقہ فطر کا اور مسکینوں کا مقام تو یہ ہے کہ اللہ کے محبوب پیغمبر حضرت محمد ﷺ عید گاہ کو تشریف لے جارہے ہیں اور راستے میں ایک مسکین مل جاتا ہے تو اسے گھر لا کر تیار کرواکر اچھے کپڑے پہناکر عطر لگاکر شان سے اپنے کندھوں پر لے کر عیدگاہ پہنچتے ہیں۔ اس مسکین کو دیکھ کر عیدگاہ میں موجود تمام صحابی اس مسکین کے مقدر پر ناز کرتے ہیں۔ یہ ہے مسکین کی عظمت اور پیغام عید۔ تو اس عید پر ان لوگوں کا خیال رکھیں جو ضرورت مند ہیں۔
      Published by:Shaik Khaleel Farhaad
      First published: