ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

کیا کل سے فیس بک، ٹوئٹر،واٹس ایپ اورانسٹاگرام پرلگ سکتی ہے پابندی؟ کیا ہے حقیقت؟

فیس بک نے کہا ، 'آئی ٹی قوانین کے مطابق ، ہم آپریشنل طریقہ کار کو نافذ کرنے اور کارکردگی کو بہتر بنانے کے لئے کام کر رہے ہیں۔ فیس بک لوگوں کی صلاحیتوں کے لئے پرعزم ہے جو ہمارے پلیٹ فارم پر آزادانہ اور محفوظ طریقے سے اپنے خیالات اور ردعمل کا اظہار کرسکتے ہیں ۔

  • Share this:
کیا کل سے فیس بک، ٹوئٹر،واٹس ایپ اورانسٹاگرام پرلگ سکتی ہے پابندی؟ کیا ہے حقیقت؟
سوشل میڈیا پلیٹ فارمز جو مرکز کی نئی انٹرمیڈیٹری رہنما خطوط( Intermediary Guidelines) پر عمل درآمد نہیں کرتے ہیں ان پر پابندی ہوگی

نئی دہلی : ہندوستان میں کل یعنی 26 مئی 2021 سے فیس بک ، ٹویٹر ، واٹس ایپ اور انسٹاگرام جیسے سوشل میڈیا پلیٹ فارم پر پابندی عائد کی جاسکتی ہے۔ ہاں ، اگرسوشل میڈیا پلیٹ فارمز جو مرکز کی نئی انٹرمیڈیٹری رہنما خطوط( Intermediary Guidelines) پر عمل درآمد نہیں کرتے ہیں ان پر پابندی ہوگی۔ مرکزی حکومت کے نئے رہنما خطوط پر عمل آوری کی آخری تاریخ آج یعنی 25 مئی کو ختم ہوگی۔ ایسی صورتحال میں ، سوشل میڈیا پلیٹ فارمز فیس بک ، ٹویٹر اور انسٹاگرام پر پابندیاں کل سے یعنی 26 مئی 2021 ء سے نافذ ہو سکتی ہے؟


حکومت ہندکی جانب سے بنائے گئے چند قواعدپر عمل کرنے کے ہندوستان میں خدمات انجام دینے والی تمام سوشل میڈیا کمپنیوں کے لیے مقررہ آخری تاریخ آتے ہی اس معاملے پر فیس بک کی جانب سے ایک بڑا بیان سامنے آیا ہے۔ کمپنی نے کہا ہے کہ وہ 'ان اصولوں پر عمل آوری کرنے کا منصوبہ رکھتی ہے۔ کچھ معاملات پر بات چیت جاری ہے'۔ فیس بک کے ترجمان نے کہا ، "ہمارا مقصد آئی ٹی قوانین کی دفعات پر عمل کرنا ہے اور کچھ امور پر بات چیت جاری رکھنا ہے جس پر حکومت سے بات چیت کرنے کی ضرورت ہے۔"


حکومت کی طرف سے دیئے گئے حکم کے مطابق ، کمپنیوں کو ایک عمل آوری کے لیے نگران عہدیدار مقرر کرنا ہے
حکومت کی طرف سے دیئے گئے حکم کے مطابق ، کمپنیوں کو ایک عمل آوری کے لیے نگران عہدیدار مقرر کرنا ہے


فیس بک نے کہا ، 'آئی ٹی قوانین کے مطابق ، ہم آپریشنل طریقہ کار کو نافذ کرنے اور کارکردگی کو بہتر بنانے کے لئے کام کر رہے ہیں۔ فیس بک لوگوں کی صلاحیتوں کے لئے پرعزم ہے جو ہمارے پلیٹ فارم پر آزادانہ اور محفوظ طریقے سے اپنے خیالات اور ردعمل کا اظہار کرسکتے ہیں ۔

مرکزی حکومت نے 25 فروری 2021 ء کو ہندوستان کی وزارت الیکٹرانکس اور آئی ٹی کی جانب سے ڈیجیٹل پلاٹ فارمز کو ریگولیٹ کرنے کے لئے 3 ماہ کے اندر عمل آوری کے لیے نگران عہدیدار( Compliance Officers)، نوڈل آفیسر (Nodal Officer) کی تقرری کرنے کو کہا گیا تھا اور ان سب کا دائرہ اختیار ہندوستان میں ہونا چاہئے ۔حکومت کی طرف سے دیئے گئے حکم کے مطابق ، کمپنیوں کو ایک عمل آوری کے لیے نگران عہدیدار مقرر کرنا ہے اور ان کا نام اور رابطے کا پتہ ہندوستان کا ہی ہونا چاہئے ، جس میں شکایت کا حل ، قابل اعتراض مواد کی نگرانی ، عمل آوری کی رپورٹ اور قابل اعتراض مواد کو ہٹانا شامل ہیں۔

اس نئے اصول کے تحت ایک کمیٹی بھی تشکیل دی جائے گی جس میں دفاع ، امور خارجہ ، وزارت داخلہ ، وزارت انفارمیشن براڈکاسٹنگ ، قانون ، آئی ٹی اور خواتین اور بچوں کی ترقی کے لیے خدمات انجام دینے والے افراد شامل ہونگے۔ انہیں ضابطہ اخلاق کی خلاف ورزی پر شکایات سننے کا حق حاصل ہوگا۔ اگر ذرائع پر یقین کیا جائے تو ، سوشل میڈیا پلیٹ فارمز نے ان قوانین پر ابھی تک عمل درآمد نہیں کیا ہے۔
Published by: Mirzaghani Baig
First published: May 25, 2021 07:45 PM IST