உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    تبریزانصاری کے قتل کے خلاف حیدرآباد میں احتجاجی جلسہ عام ۔ اویسی کا خطاب: دیکھیں ویڈیو

    حیدرآباد کے تیگل کنٹہ میں منعقدہ اس جلسہ عام سے خطاب کرتے ہوئے اسدالدین اویسی۔(تصویر:سوشل میڈیا)۔

    حیدرآباد کے تیگل کنٹہ میں منعقدہ اس جلسہ عام سے خطاب کرتے ہوئے اسدالدین اویسی۔(تصویر:سوشل میڈیا)۔

    تین طلاق پرقانون بنانے والے وزیراعظم مودی ماب لنچنگ پرقانون کیوں نہیں بناتے؟۔ اسدالدین اویسی نے کیا سوال

    • Share this:
      مجلس اتحادالمسلمین کے صدرو رکن پارلیمنٹ حیدرآباد اسدالدین اویسی نے ہجومی تشدد یعنی ماب لنچنگ کے ذریعہ معصوموں کا قتل کرنے والوں کو ملک کے غداراور دہشت گرد قراردیا۔ اسدالدین اویسی حیدرآباد میں مجلس اتحادالسلمین کی جانب سے تبریزانصاری کے قتل کے خلاف منعقدہ احتجاجی جلسہ سے خطاب کررہے تھے ۔ اسدالدین اویسی نے کہا کہ ماب لنچنگ کرنے والے افراد مخنث اور گوڈسے کی ناجائز اولاد ہے۔ اویسی نے جلسہ عام میں اس بات کا اعادہ بھی کیاکہ ملک کے 17 کروڑ مسلمانوں کو ترقی سے محروم کرکے وزیراعظم مودی ہندوستان کو 5 ٹریلین ڈالرکی معشیت نہیں بناسکتے۔اسدالدین اویسی نے افسوس کا اظہارکرتے ہوئے کہا کہ ہجومی تشدد کے واقعات کا معاملہ اقوام متحدہ میں اٹھایاجارہاہے۔

      حیدرآباد کے تیگل کنٹہ میں منعقدہ اس جلسہ ہزاروں کی تعداد میں سامعین شریےک تھے ۔ اسدالدین اویسی نے کہا کہ اقلیتوں کی جان مال اور ان کی عبادت گاہوں کا تحفظ ہوگا تب ہی ملک حقیقی طورپر ترقی کرے گا۔ اسدالدین اویسی نے سوال کیاہے تین طلاق پر قانون بنانے والی مودی حکومت ہجومی تشدد یعنی ماب لنچنگ سے نمٹنے کے لیے قانون کیوں نہیں بناتی؟۔ اویسی نے کہاکہ 17 جولائی 2018کو ہی سپریم کورٹ نے ہجومی تشدد کے خلاف قانون بنانے کی ہدایت دی تھی۔ تاہم مرکزی حکومت نے سپریم کورٹ کی ہدایت کو نظراندازکردیاہے۔

      اسدالدین اویس نے کہا کہ ملک کے موجودہ حالات کے باوجود مسلمانوں کو بزدلی کو قریب نہیں آنے دینا چاہیے۔ انہوں نے فرقہ پرست طاقتیں ملک میں اقلیتوں کو نشانہ بناتے ہوئے وہ یہ ثابت کرنا چاہتے کہ ملک میں مسلمان دوسرے درجہ کے شہری ہے جبکہ دستورہند یہ کہتاہے کہ اس ملک کے تمام شہریوں کو مساویانہ حقوق دیئے گئے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ ہندوتوا کی فرقہ پرست طاقتیں مسلمانوں کو بزدل بنانے کے لیے ماب لنچنگ کا استعمال کررہی ہے۔

      First published: