உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    Wife Swapping: جہیز کا مطالبہ پورا نہیں ہوا تو شوہر نے بیوی کو کیا دوستوں کے حوالے، اجتماعی آبروریزی

    Gang Rape in Churu: راجستھان کے چورو ضلع میں سویپنگ (Wife Swapping) کا معاملہ سامنے آیا ہے۔ جہیز (Dowry) کا مطالبہ پورا نہ ہونے پر شوہر نے اپنی ہی بیوی کو دوستوں کے حوالے کردیا۔ الزام ہے کہ شوہر کے دوستوں نے خاتون کے ساتھ اجتماعی آبروریزی (Gang Rape) کی۔

    Gang Rape in Churu: راجستھان کے چورو ضلع میں سویپنگ (Wife Swapping) کا معاملہ سامنے آیا ہے۔ جہیز (Dowry) کا مطالبہ پورا نہ ہونے پر شوہر نے اپنی ہی بیوی کو دوستوں کے حوالے کردیا۔ الزام ہے کہ شوہر کے دوستوں نے خاتون کے ساتھ اجتماعی آبروریزی (Gang Rape) کی۔

    Gang Rape in Churu: راجستھان کے چورو ضلع میں سویپنگ (Wife Swapping) کا معاملہ سامنے آیا ہے۔ جہیز (Dowry) کا مطالبہ پورا نہ ہونے پر شوہر نے اپنی ہی بیوی کو دوستوں کے حوالے کردیا۔ الزام ہے کہ شوہر کے دوستوں نے خاتون کے ساتھ اجتماعی آبروریزی (Gang Rape) کی۔

    • Share this:
      چورو: راجستھان کے چورو ضلع میں رشتوں کو شرمسار کردینے والا وائف سویپنگ (Wife Swapping) کا معاملہ سامنے آیا ہے۔ جہیز (Dowry) کا مطالبہ پورا نہ ہونے پر شوہر نے اپنی ہی بیوی کو دوستوں کے حوالے کر دیا۔ الزام ہے کہ شوہر کے دوستوں نے خاتون کے ساتھ اجتماعی آبروریزی (Gang Rape) کی۔ شہر میں کرائے پر رہ رہی متاثرہ نے شوہر پر کئی سنگین الزام لگاتے ہوئے خاتون تھانے میں 7 نامزد ملزمین کے خلاف جہیز اور آبروریزی کا معاملہ درج کروایا ہے۔ متاثرہ نے بتایا کہ نشے کی لت اور جہیز کے لالچ میں حیوان بنا شوہر ان کی فحش اور قابل اعتراض تصاویر اپنے دوستوں کے ساتھ شیئر کرتا تھا اور شوہر کے دوست ان کی آبروریزی کرتے تھے۔

      خاتون تھانہ انچارج ستپال بشنوئی کے مطابق، متاثرہ ناگور ضلع کے لاڈنو علاقے کی رہنے والی ہے اور وہ فی الحال چورو شہر میں رہتی ہیں۔ 29 سالہ متاثرہ نے اپنی ماں کے ساتھ خاتون تھانے پہنچ کر رپورٹ درج کرائی ہے۔ تھانے میں درج ایف آئی آر کے مطابق، ان کی شادی اپریل 2014 میں پنجاب کے لدھیانہ کے رہنے والے نوجوان کے ساتھ ہوئی تھی۔ شادی کے بعد 5 لاکھ روپئے اور کار کا مطالبہ لے کر انہیں تنگ کیا جانے لگا۔ مطالبہ پورا نہ ہونے پر ان کو ذہنی اور جسمانی اذیتیں دی جانے لگیں۔

      شملا کے ہوٹل سے شروع کیا گندہ کھیل

      متاثرہ کا الزام ہے کہ اسے کمرے میں بند کرکے بھوکا-پیاسا رکھا جانے لگا۔ سسرال والے ان سے مارپیٹ بھی کرتے۔ اس سے بھی جب شوہر کا من نہیں بھرا تو جنوری 2016 میں انہیں گھمانے کے بہانے شملا لے گئے تھے۔ ہوٹل میں انہیں زبردستی شراب پلاکر نشے کی حالت میں دوستوں کے حوالے کردیا۔ شوہر کے دوستوں نے ان کے ساتھ آبروریزی کی۔ سال 2016 سے شروع ہوا یہ سلسلہ مسلسل جاری رہا، کیونکہ شوہر نے اس واردات کا ویڈیو بنالیا تھا۔

      وائف سوئپنگ کا کھیل

      متاثرہ نے بتایا کہ فحش ویڈیو اور تصاویر کی بدولت شوہر نے ان کا بلیک میل کرنا شروع کردیا۔ اس دوران ملزم شخص نے اپنے کئی دوستوں کے ساتھ تعلقات بنانے کے لئے مجبور کیا۔ متاثرہ نے الزام لگایا کہ ان کا شوہر اب وائف سوئپنگ کا کھیل بھی کھیلنے لگا تھا۔ شوہر کے دوست متاثرہ کے ساتھ آبروریزی کرتے اور شوہر اپنے دوست کی بیوی کے ساتھ ہم بستر ہوتے تھے۔

      نندوئی بھی ناجائز تعلقات کے لئے کرتا تھا مجبور

      شوہر کے ذریعہ لئےگئے قابل اعتراض فوٹو فراف اس کے نندوئی کے ہاتھ لگ گئے۔ الزام ہے کہ اس کے بعد وہ بھی انہیں ناجائز تعلقات بنانے کے لئے مجبور کرنے لگا۔ متاثرہ سے جب شوہر کا من بھر گیا تو انہیں مارچ 2021 میں دو بچیوں کے ساتھ گھر سے نکال دیا۔ اس صدمے کو متاثرہ کے والد برداشت نہیں کرسکے اور مئی 2021 میں ان کا انتقال ہوگیا۔ پولیس نے متاثرہ کی درخواست پر آئی پی سی کی دفعہ-498 اے، 406, 323, 376 ڈی اور 354 میں معاملہ درج کرکے لاڈنو تھانہ پولیس کو سونپ دیا ہے۔
      Published by:Nisar Ahmad
      First published: