ہوم » نیوز » جنوبی ہندوستان

اسد الدین اویسی نے کہا : میں نے کشمیر جانے کا نام لیا تو حیدرآباد ائیر پورٹ پر ہی گرفتار کرلیا جاوں گا

جموں و کشمیر سے آرٹیکل 370 ہٹانے کے مرکزی حکومت کے فیصلہ کی تنقید کرتے ہوئے اسد الدین اویسی نے کہا کہ اس وقت سے ہی ( 5 اگست ) کشمیر میں انٹرنیٹ خدمات دستیاب نہیں ہیں ۔

  • Share this:
اسد الدین اویسی نے کہا : میں نے کشمیر جانے کا نام لیا تو حیدرآباد ائیر پورٹ پر ہی گرفتار کرلیا جاوں گا
اسد الدین اویسی ۔ فائل فوٹو ۔

غیر ملکی سفارت کاروں کے حالیہ جموں و کشمیر کے دورہ کو لے کر نریندر مودی حکومت کی تنقید کرتے ہوئے آل انڈیا مجلس اتحاد المسلمین کے صدر اور ممبر پارلیمنٹ اسد الدین اویسی نے کہا کہ اگر انہوں نے کشمیر جانے کا نام بھی لیا ، تو انہیں حیدرآباد ائیر پورٹ پر ہی گرفتار کرلیا جائے گا ۔ جموں و کشمیر سے آرٹیکل 370 ہٹانے کے مرکزی حکومت کے فیصلہ کی تنقید کرتے ہوئے اویسی نے کہا کہ اس وقت سے ہی ( 5 اگست ) کشمیر میں انٹرنیٹ خدمات دستیاب نہیں ہیں ۔


تلنگانہ میں ہونے والے شہری علاقوں میں بلدیاتی انتخابات کے پیش نظر نارائن پیٹ ضلع میں ہفتہ کو ایک ریلی میں اویسی نے کہا کہ آرٹیکل 370 کے زیادہ تر التزامات کو ختم کرنا مرکزی حکومت کی دوسری سب سے بڑی غلطی ہے ، اس کی پہلی غلطی جموں و کشمیر کے سابق وزیر اعلی شیخ عبد اللہ کی گرفتاری تھی ۔


اسد الدین اویسی نےکہا- ہندو اورمسلمانوں میں پھوٹ ڈالنا چاہتی ہے مودی حکومت۔ فائل فوٹو
اسد الدین اویسی ۔ فائل فوٹو ۔


انہوں نے کہا کہ آرٹیکل 370 ہٹائے ہوئے 5-6 ماہ ہوگئے ہیں ، لیکن ابھی بھی انٹرنیٹ خدمات وہاں شروع نہیں کی گئی ہیں ۔ وزیر اعظم ( نریندر مودی ) نے بڑی بڑی باتیں کہی ہیں اور کہا ہے کہ وہ وہاں ترقی ہوگی ، جیسے کہ پہلے کشمیر میں کچھ نہیں ہورہا تھا ۔

اسد الدین اویسی نے کہا کہ مودی حکومت غیر ملکی سفارت کاروں کو کشمیر کے کر گئی اور انہیں کشمیر کا امن دکھایا ، لیکن اگر میں کہہ دوں کہ مجھے کشمیر جانا ہے تو سی آئی ایس ایف والے مجھے حیدرآباد ائیر پورٹ پر ہی گرفتار کرلیں گے ۔ میں نے ہندوستانی آئین کا حلف لیا ہے ، لیکن میں وہاں نہیں جاسکتا ، مگر امریکہ اور دیگر ممالک کے غیر ملکی سفارت کار وہاں جاسکتے ہیں ۔
First published: Jan 13, 2020 09:42 AM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading