ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

ملک کے پہلے چیف آف ڈیفنس اسٹاف کے عہدے کا بپن راوت لیں گے جائزہ

ہندوستانی آرمی چیف جنرل بپن راوت آج سے اپنے عہدے سے سبکدوش ہوگئے ہیں۔ آرمی چیف کی حیثیت سے آج آخری دن ، انہوں نے شہدا کو خراج تحسین پیش کرنے کے لئے انڈیا گیٹ کے وار میموریل کا دورہ کیا۔

  • Share this:
ملک کے پہلے چیف آف ڈیفنس اسٹاف کے عہدے کا بپن راوت لیں گے جائزہ
ملک کے پہلے چیف آف ڈیفنس اسٹاف کے عہدے کا بپن راوت لیں گے جائزہ

ہندوستانی آرمی چیف جنرل بپن راوت آج سے اپنے عہدے سے سبکدوش ہوگئے ہیں۔ آرمی چیف کی حیثیت سے آج آخری دن ، انہوں نے شہدا کو خراج تحسین پیش کرنے کے لئے انڈیا گیٹ کے وار میموریل کا دورہ کیا۔ جنرل راوت کو ساؤتھ بلاک میں 'گارڈ آف آنر' دیا گیا۔یادرہے کہ جنرل راوت کو ہندوستان کا پہلا چیف آف ڈیفنس اسٹاف (سی ڈی ایس) مقررکرنے کا فیصلہ کیاگیاہے۔ انہوں نے سی ڈی ایس کا عہدہ سنبھالنے سے قبل میڈیا سے گفتگو کی۔


جنرل راوت نے کہا ، 'مجھے نہیں معلوم تھا کہ میں چیف آف ڈیفنس بنوں گا۔ اب تک میں صرف آرمی چیف کی حیثیت سے کام کررہا تھا۔ میرے دور میں ، فوج کو جدید بنانا میرے لئے ایک بہت بڑا قدم تھا۔ مجھے پوری امید ہے کہ لیفٹیننٹ جنرل منوج مکند نروانے ملک کی فوج کو مزید آگے لے جائیں گے۔




بپن راوت نے کہا ، 'چیف آف آرمی اسٹاف صرف ایک عہدہ ہے۔ اس عہدے میں تب ہی اضافہ ہوتا ہے جب وہ چیف آف آرمی اسٹاف بن جاتاہے، کامیابی صرف تمام فوجیوں کے اتحاد سے ہی ممکن ہے۔ جنرل راوت آج ملک کے پہلے چیف آف ڈیفنس اسٹاف (سی ڈی ایس) کا عہدہ سنبھالیں گے۔ سی ڈی ایس کی حیثیت سے ، جنرل بپن راوت آرمی ، ایئرفورس اور نیوی کے ساتھ ساتھ وزارت دفاع اور وزیراعظم کی سربراہی میں نیوکلیئر کمانڈ اتھارٹی کے مشیر کے طورپرکام کریں گے۔ لیفٹیننٹ جنرل منوج مکند نروانے نئے آرمی چیف ہوں گے



لیفٹیننٹ جنرل منوج مکند نروانے نئے آرمی چیف، آج سنبھالیں گے عہدہ

لیفٹیننٹ جنرل منوج مکند نروانے، ہندوستانی فوج کے نئے آرمی چیف ہونگے۔وہ آج چیف آف آرمی اسٹاف بننے جارہے بپن راوت سے سے عہدہ سنبھالیں گے۔ جنرل راوت کو ہندوستان کا پہلا چیف آف ڈیفنس اسٹاف (سی ڈی ایس) مقرر کیا گیا ہے۔لیفٹیننٹ جنرل منوج مکند نروانے اس وقت ڈپٹی چیف آف آرمی اسٹاف کی حیثیت سے خدمات انجام دے رہےتھے۔

لیفٹیننٹ جنرل منوج مکند نروانے کے کیریئرایک نظر

ستمبر میں ڈپٹی چیف آف آرمی اسٹاف کا عہدہ سنبھالنے سے پہلے ، لیفٹیننٹ جنرل منوج مکند نروانے چین۔ ہندوستان سرحد پرخدمات انجام دے چکے ہیں۔ اسکے علاوہ منوج مکند نروانے 4000 کلومیٹر لمبی ہندوستانی سرحد کے مشرقی کمانڈ آف آرمی کے سربراہ رہے چکے ہیں۔اپنے 37 سالہ دورکیریئرمیں، لیفٹیننٹ جنرل منوج مکند نروانے جموں وکشمیراورشمال مشرق میں ریاستوں میں امن کی برقراری اورانسداد شورش کے انتہائی متحرک اندازمیں اپنی خدمت انجام دے چکے ہیں۔جموں و کشمیرمیں راشٹریہ رائفلز کی بٹالین اور مشرقی محاذ پر انفینٹری بریگیڈ کی کمان بھی جنرل منوج مکند نروانے سنبھال چکے ہیں

لیفٹیننٹ جنرل منوج مکند نروانے نئے آرمی چیف، آج سنبھالیں گے عہدہ۔(تصویر:اے این آئی،ٹویٹر)۔
لیفٹیننٹ جنرل منوج مکند نروانے نئے آرمی چیف، آج سنبھالیں گے عہدہ۔(تصویر:اے این آئی،ٹویٹر)۔


لیفٹیننٹ جنرل منوج مکند نروانے سری لنکا میں انڈین پیس کیپنگ فورس کا حصہ تھے اور تین سال تک میانمار میں ہندوستانی سفارتخانے میں دفاعی اتاشی کے حیثیت سے بھی خدمات انجام دے چکے ہیں۔ لیفٹیننٹ جنرل منوج مکند نروانے نیشنل ڈیفنس اکیڈمی اور انڈین ملٹری اکیڈمی کے طالب علم رہ چکے ہیں۔انہوں نے جون 1980 میں سکھ لائٹ انفنٹری رجمنٹ کی ساتویں بٹالین میں کمیشن کے ساتھ ہی اپنے کیریئرکا آغازکیاتھا۔لیفٹیننٹ جنرل منوج مکند نروانے کونمایاں خدمات کے لیے سینامیڈل سے نوازاگیاہے۔

ہم آپ کو بتادیں کہ وزیراعظم نریندرمودی نے اس سال 15 اگست کو لال قلعہ کو دیئے گئے ایک تقریر میں سی ڈی ایس کا اعلان کیا تھا۔ وزیر اعظم نے کہا کہ چیف آف ڈیفنس اسٹاف ہونے کے بعد تینوں افواج کے مابین رابطہ اور ہم آہنگی آسان ہوگی۔
First published: Dec 31, 2019 10:19 AM IST