உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    India and Pakistan Relation:کیا شہباز دور میں ہند-پاک کے رشتوں میں آئے گی نرمی؟ پاکستانی وفد کے دورے کے بعد اٹھے سوال

    کیا بہتر ہوپائیں گے ہند۔پاک تعلقات۔ (تصویر: moneycontrol)

    کیا بہتر ہوپائیں گے ہند۔پاک تعلقات۔ (تصویر: moneycontrol)

    India and Pakistan Relation: کشمیر میں پلوامہ دہشت گردانہ واقعہ اور دفعہ 370 کی منسوخی کے بعد دونوں ملکوں کے تعلقات بہت کشیدہ ہو گئے ہیں۔ پاکستان ہر فورم پر مسئلہ کشمیر کو بے ساختہ اٹھاتا رہا ہے جبکہ ہندوستان کا کہنا ہے کہ کشمیر اس کا اٹوٹ انگ ہے۔

    • Share this:
      India and Pakistan Relation: انڈس واٹر شیڈ کیس میں ہندوستان نے اپنے پڑوسی پاکستان کو بڑا اعتماد دیا ہے۔ ہندوستان نے پاکستان کو یقین دہانی کرائی ہے کہ پاکل دول سمیت ہندوستان کی جانب سے تعمیر کیے جانے والے ہائیڈرو الیکٹرک منصوبوں میں کوئی رکاوٹ نہیں آئے گی۔ ہندوستان نے یہ یقین دہانی نئی دہلی میں ہونے والے انڈس کمیشن کے اجلاس میں کرائی ہے۔ ایسے میں سوال یہ پیدا ہوتا ہے کہ کیا پاکستان اور ہندوستان کے تعلقات معمول پر آ رہے ہیں؟ کیا پاکستان میں نئی ​​حکومت ہندوستان کے بارے میں لبرل رویہ اپناتی ہے؟ یہ سوالات بھی اٹھائے جا رہے ہیں کہ کیا پاکستان میں شہباز شریف حکومت کے ہندوستان کے ساتھ تعلقات معمول پر ہوں گے؟ آئیے جانتے ہیں اس بارے میں ماہرین کی کیا رائے ہے۔

      خارجہ امور کے ماہر پروفیسر ہرش وی پنت کا کہنا ہے کہ یہ بحث چل رہی ہے کہ آبنائے سندھ کے ذریعے دونوں ملکوں کے تعلقات میں گرماہٹ آرہی ہے۔ کہا جا رہا ہے کہ دریائے سندھ کے ذریعے دونوں ملک ایک دوسرے کے قریب آ رہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ ہندوستان اور پاکستان کے درمیان اختلافات صرف پانی کی تقسیم پر نہیں ہیں بلکہ سرحد پار دہشت گردی سمیت اس طرح کے کئی مسائل ہیں جس کی وجہ سے دونوں ممالک کے درمیان گہرے اختلافات ہیں۔ ہندوستان اس معاملے کو کئی بار بین الاقوامی فورمز پر اٹھا چکا ہے۔ تاہم اس کے باوجود پاکستان اس سے باز نہیں آرہا ہے۔

      پروفیسر پنت نے کہا کہ دہشت گردی ہندوستان اور پاکستان کے درمیان ایک سلگتا ہوا مسئلہ ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ اس کے علاوہ پاکستان اور چین کی قربت نے دونوں ممالک کے تعلقات کو کشیدہ کر دیا ہے۔ ہندوستان نے کئی بار واضح کیا ہے کہ جب تک سرحد پار سے دہشت گردی نہیں روکی جاتی دونوں ممالک کے تعلقات معمول پر نہیں آسکتے ہیں۔ پروفیسر پنت نے کہا کہ اس معاملے میں مودی حکومت کا موقف بالکل واضح ہے۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان میں جس کی بھی حکومت ہے وہ ہندوستان کے خلاف دہشت گردی روکنے میں ناکام ہو رہی ہے۔ انہوں نے کہا کہ حکومت پاکستان اگر روکنا بھی چاہے تو فوج کے سامنے وہ بے بس ہے۔ پروفیسر پنت نے کہا کہ دہشت گرد تنظیموں اور فوج کا مضبوط گٹھ جوڑ ہے۔ وہ کسی بھی حکومت پر بھاری رہتا ہے۔

      یہ بھی پڑھیں:
      Pakistan Economic Crisis:گرتی معیشت سے نبردآزما پاکستان کو اب چین سے امیدیں

      یہ بھی پڑھیں:
      تحریک عدم اعتماد سے پہلے آصف زرداری سے ملنا چاہتے تھے عمران خان، لیک آڈیو سے بڑا انکشاف

      پروفیسر پنت نے کہا کہ کشمیر میں پلوامہ دہشت گردانہ واقعہ اور دفعہ 370 کی منسوخی کے بعد دونوں ملکوں کے تعلقات بہت کشیدہ ہو گئے ہیں۔ پاکستان ہر فورم پر مسئلہ کشمیر کو بے ساختہ اٹھاتا رہا ہے جبکہ ہندوستان کا کہنا ہے کہ کشمیر اس کا اٹوٹ انگ ہے۔ یہ اس کا اندرونی معاملہ ہے۔ اس کے باوجود وہ بین الاقوامی فورمز پر اپنی کرتوت چھپانے کے لیے کشمیر کے راگ الاپ رہا ہے۔
      Published by:Shaik Khaleel Farhaad
      First published: