ہوم » نیوز » وطن نامہ

گھر والوں سے چھپائی حاملہ ہونے کی بات، خاتون نے کیا 4 ماہ کے بچے کا اغوا

مہاراشٹر کے پونے سے منسلک پمپری چنچواڑ میں دلجھنجھوڑنے والا واقعہ سامنے آیا ہے، جہاں ایک عورت نے اسقاط حمل چھپانے کے لئے چار ماہ کے معصوم بچے کو اغوا کرلیا۔ صرف یہی نہیں، اس خاتون نے اپنے شوہرکو یہ بھی بتایا کہ بچہ ان کا ہے۔ تاہم متاثرہ کے اہل خانہ نے اس معاملے کی شکایت مقامی تھانہ صدر کو کی تھی اور معاملے کی تحقیقات جاری تھی۔

  • Share this:
گھر والوں سے چھپائی حاملہ ہونے کی بات، خاتون نے کیا 4 ماہ کے بچے کا اغوا
گھر والوں سے چھپائی حاملہ ہونے کی بات، خاتون نے کیا 4 ماہ کے بچے کا اغوا

وسیم انصاری

مہاراشٹر کے پونے سے منسلک پمپری چنچواڑ میں دل دہلانے والا واقعہ سامنے آیا ہے، جہاں ایک عورت نے اسقاط حمل چھپانے کے لئے 4 ماہ کے معصوم بچے کو اغوا کرلیا۔ صرف یہی نہیں، اس خاتون نے اپنے شوہرکو یہ بھی بتایا کہ بچہ ان کا ہے۔ تاہم متاثرہ کے اہل خانہ نے اس معاملے کی شکایت مقامی تھانہ صدر کو دی تھی اور معاملے کی تحقیقات جاری تھی۔

کام نہ چھوٹے اس لئے بچہ چرایا

کمشنر پولیس، پمپری چنچواڈ کرشنا پرکاش کے مطابق، گرفتار خاتون مہاراشٹرکے بیڈ ضلع کی رہنے والی ہے، جس کا نام رانی شیواجی یادو ہے۔ پولیس کے مطابق، رانی حاملہ تھی، لیکن ساتویں مہینے میں اس نے اچانک اسقاط حمل کردیا۔ وہ اس کو سسرال میں نہیں بتانا چاہتی تھی۔ کیونکہ اسے کام کرنے کی اجازت نہیں ملتی ہے۔ چنانچہ اس نے یہ منصوبہ بنایا اور لڑکی کو اغوا کرلیا۔ بچی کے اغوا کی شکایت راجندر پربھاکر ناگ پورے نامی شخص نے مقامی پولیس اسٹیشن میں کی تھی۔ جو اس وقت بچے کی پرورش کر رہے تھے۔ رانی کام کے سلسلے میں پونے شہر میں تنہا رہتی تھی۔



100 سے زیادہ سی سی ٹی وی دیکھے گئے
بچی کی تلاش میں، پولیس 100 سے زیادہ سی سی ٹی وی فوٹیج کو دیکھا، تب جاکر پولیس کو رانیب کا سراغ ملا۔ شکایت کنندہ راجندر ناگپورے نے پولیس کو بتایا کہ کچھ دن قبل ایک عورت کام کی تلاش میں اس کے گھر آئی تھی اور اس کے بعد اس کی 4 ماہ کی بیٹی دھنشری غائب تھی۔راجندر نے اس خاتون کی پولیس کو بھی اطلاع دی، جس کے بعد پولیس نے حلیہ کی بنیاد پر سی سی ٹی وی فوٹیج میں خاتون کی تلاش شروع کر دی۔ خاتون پولیس سے بچنے کے لئے کسی اور جگہ چلی گئی تھی۔


بیڈ سے کیا گیا گرفتار
پولیس نے خاتون کو بیڈ کے علاقے امبے جوگائی سے گرفتار کیا۔ فی الحال، پولیس تفتیش کر رہی ہے کہ آیا اس سے پہلے بھی عورت اس طرح کی مجرمانہ حرکتیں کرچکی ہے۔ واضح رہے کہ دھنشری کے حقیقی والدین نے اسے پیدائش کے بعد راجندر ناگپورے اور ان کی اہلیہ کے حوالے کیا تھا۔
Published by: Nisar Ahmad
First published: Mar 01, 2021 01:08 AM IST