உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    دہلی کی زیادہ تر لڑکیاں کس عمر میں کرتی ہیں شادی؟ کیرلا کے اعدادوشمار نے چونکایا

    دہلی کی زیادہ تر لڑکیاں کس عمر میں کرتی ہیں شادی؟ کیرل کے اعدادوشمار نے چونکایا

    دہلی کی زیادہ تر لڑکیاں کس عمر میں کرتی ہیں شادی؟ کیرل کے اعدادوشمار نے چونکایا

    حکومت نے سال 2020 کا ڈیٹا جاری کیا ہے۔ مختلف عمر کے گروپ کی خواتین کی شادی کے بارے میں نئے اور دلچسپ حقائق سامنے آئے ہیں۔

    • News18 Urdu
    • Last Updated :
    • Delhi | Bihar | Kerala
    • Share this:
      نئی دہلی: ملک میں خواتین کی شادی کو لے کر حکومت کی جانب سے اعدادوشمار جاری کیے گئے ہیں۔ اس میں کئی دلچسپ حقائق سامنے آئے ہیں۔ مغربی بنگال اور جھارکھنڈ میں زیادہ تر لڑکیوں کی 21 سال یا اس سے پہلے شادی ہوجاتی ہے۔ وہیں، جموں کشمیر اور دہلی میں یہ نمبر بالترتیب 10 اور 17 فیصد ہے۔ وہیں، ایک معاملے میں، بہار، نے سب سے زیادہ ترقی یافتہ اور تعلیم یافتہ ریاست کیرل کی برابری کی ہے۔ اعداد و شمار کے تجزیہ سے یہ بات سامنے آئی ہے کہ 21 سال سے زیادہ عمر کے گروپ میں بہار اور کیرالہ کی پوزیشن یکساں ہے۔ ملک کے دیہی علاقوں میں تقریباً ایک تہائی خواتین کی شادی 18 سے 20 سال کی عمر کے درمیان ہوجاتی ہے۔

      حکومت نے سال 2020 کا ڈیٹا جاری کیا ہے۔ مختلف عمر کے گروپ کی خواتین کی شادی کے بارے میں نئے اور دلچسپ حقائق سامنے آئے ہیں۔ بہار اور کیرل میں 21 سے زائد عمر کے گروپ میں اوسطاً 72.6 فیصد خواتین کی شادی کرنے کی بات سامنے آئی ہے۔ وہیں سبس ے زیادہ عمر میں شادی کرنے کے معاملے میں جموں و کشمیر سرفہرست ہے۔ مرکز کے زیر انتظام جموں کشمیر میں 90.7 فیصد خواتین کی شادی 21 سال سے زیادہ کی عمر میں ہوتی ہے۔ اس معاملے میں گجرات 85.2 فیصد کے ساتھ دوسرے، اتراکھنڈ 84 فیصد کے ساتھ تیسرے، پنجاب 83 فیصد کے چوتھے، اور مہاراشٹر 82.7 فیصد کے ساتھ پانچویں مقام پر ہے۔

      یہ بھی پڑھیں:
      سپریم کورٹ کا بڑا فیصلہ: شادی شدہ خواتین کی طرح غیر شادی شدہ کو بھی اسقاط حمل کا حق ہے

      یہ بھی پڑھیں:
      چائلڈ پورنوگرافی اور ریپ کے ویڈیو پوسٹ کرنے پر 23 ٹوئٹر اکاونٹ کردئیے گئے بلاک

      دیہی ہندوستان کا حال
      دیہی ہندوستان میں تقریباً ایک تہائی لڑکیوں کی شادی 18 سے 20 سال کے درمیان ہوجاتی ہے۔ بتادیں کہ ملک کے دیہی حصوں میں مختلف وجوہات سے شادی کی اوسط عمر کم ہوتی ہے۔ حالانکہ، پچھلے کچھ سالوں میں اس معاملے میں واضح بہتری درج کی گئی یہے۔ پہلے بڑی تعداد میں لڑکیوں کی شادی کافی کم عمر میں کردی جاتی تھی، لیکن اب اس سے جڑے اعدادو شمار میں کمی درج کی گئی ہے۔
      Published by:Shaik Khaleel Farhaad
      First published: