ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

Explained:دفاترمیں ویکسی نیشن کاعمل،کون ہیں اہل؟کیسے کریں اس سہولت سے استفادہ؟جانئے یہاں

حکومت کے مطابق 45 تا 59 برس (اور کچھ کیسوں میں 65 برس تک) کی آبادی کا ایک ’کافی تناسب‘ منظم شعبے سے وابستہ ہے۔ یہ طقبہ سرکاری اور نجی دفاتر اور خدماتی شعبہ میں غلبہ حاصل کیا ہوا ہے۔ اس لیے ان لوگوں کو ویکسین کا فائدہ ہوگا۔

  • Share this:
Explained:دفاترمیں ویکسی نیشن کاعمل،کون ہیں اہل؟کیسے کریں اس سہولت سے استفادہ؟جانئے یہاں
ویکسی نیشن پروگرام کی فائل فوٹو

ہندوستان میں عالمی وبا کورونا وائرس (Covid-19) کے خلاف بڑے پیمانے پر ٹیکہ لگانے کی مہم اب مسلسل آگے کی طرف بڑھتی جارہی ہے۔ اس ضمن میں عام شہریوں کو یہ معلوم کرنا ضروری ہے کہ کورونا وائرس کے خلاف ویکسین کو کیسے حاصل کیا جائے اور اس کا طریقہ کار کیا ہے۔ملک بھر میں مختلف ویکسینیشن مراکز کے تحت کورونا ویکسین فراہم کی جارہی ہے۔ جو کہ سرکاری اور نجی دونوں اسپتالوں میں دستیاب ہے۔اس کے علاوہ حکومت نے 11 اپریل سے دفاتر میں  ملازمین کے لیے کورونا ویکسی نیشن مراکز قائم کرنے کی اجازت دیدی ہے۔ ہم یہاں آپ کے لیے تمام سوالوں کے جوابات پیش کررہے ہیں:


کیا میں اپنے آفس میں کووڈ۔19 ویکسین حاصل کرنے کا اہل ہوں؟

ہاں! لیکن صرف اس صورت میں جب آپ کی عمر 45 برس سے زیادہ ہو۔ مرکزی حکومت نے یکم اپریل 2021 سے اسیے افراد کو ویکسین دینا شروع کردیا ہے۔ جن کی پیدائش یکم جنوری 1977 یا اس سے قبل ہوئی ہو۔


مرکزی وزارت صحت کے ذریعہ 6 اپریل 2021 کو نیا نوٹیفکیشن جاری کیا گیا۔ اس میں یہ کہا گیا کہ ایسے شہری جن کی عمر 45 یا اس سے زائد ہو اور وہ مہلک بیماری میں مبتلا ہو وہ بھی ویکسین حاصل کرنے کے اہل ہوں گے۔

جن ملازمین نے ویکسین لے لی کیا ان کے رشتہ دار بھی ویکسین لے سکتے ہیں؟

نہیں! نوٹیفکیشن میں کہا گیا ہے کہ ’سی وی سی (کوویڈ ویکسی نیشن سینٹر) میں افراد خاندان سمیت کسی بھی بیرونی فرد کو ویکسین کی اجازت نہیں ہوگی‘۔

حکومت کیوں اس طرح کا اٹھارہی ہے اقدام:
حکومت کے مطابق 45 تا 59 برس (اور کچھ کیسوں میں 65 برس تک) کی آبادی کا ایک ’کافی تناسب‘ منظم شعبے سے وابستہ ہے۔ یہ طقبہ سرکاری اور نجی دفاتر اور خدماتی شعبہ میں غلبہ حاصل کیا ہوا ہے۔ اس لیے ان لوگوں کو ویکسین کا فائدہ ہوگا۔

آفس ویکیسیشن ڈرائیو کب شروع ہوئی؟
اس طرح کے مراکز 11 اپریل سے ریاستوں / مرکزی زیر انتظام علاقوں میں شروع ہوگئے ہیں۔ حکومت کا کہنا ہے کہ اس نے ریاستی حکام سے سرکاری اور نجی شعبے کے آجروں اور انتظامیہ کے ساتھ کورونا کیسوں پر تبادلہ خیال کیا ہے اور اس مہم کو چلانے کے لئے تیار رہنے کو کہا ہے۔

کیا تمام دفاتر ویکسین مراکز ہوں گے؟
نہیں! ویکسینیشن سیشن ایسے کام کی جگہوں پر ہی ہوں گے جن میں 100 یا زیادہ خواہش مند اور اہل مستفید ہوں گے۔ جو ویکسینیشن ضائع ہونے سے بچنے کے لئے ایک معیار مقرر کیا گیا ہے۔

کیا دفاتر میں حفاظتی ٹیکوں کے مراکز محفوظ رہیں گے؟
سرکاری دفاتر میں ایسے ہر مرکز کو کسی سرکاری اسپتال میں قریبی قطرے پلانے کی سہولت سے مربوط کیا جائے گا۔ اسی طرح نجی دفاتر میں ہر مرکز کو ایک نجی اسپتال میں قریبی ویکسینیشن کی سہولت سےجوڑا جائے گا۔جو نامزد سرکاری اور نجی اسپتال مراکز ویکسی نیشن ٹیموں کی تعیناتی کے ذمہ دار ہوں گے اور ان کے تحت کام کے مقامات پر ویکسینیشن سیشنوں کی منصوبہ بندی کریں گے۔

کام کی جگہوں کی شناخت کیسے ہورہی ہیں؟
ضلعی مجسٹریٹ کی زیرصدارت ضلعی ٹاسک فورس اور میونسپل کمشنر کی زیرصدارت ایک شہری ٹاسک فورس کال کرے گی۔ کام کی جگہ کی انتظامیہ ایک سینئر عملہ کو عہدیداروں کے ساتھ ہم آہنگی کے لئے نوڈل آفیسر کی حیثیت سے انتخاب کرے گی۔
Published by: Mohammad Rahman Pasha
First published: Apr 17, 2021 03:26 PM IST